Kate Moore (L) and Morgan Dynda of the U.S. compete in the LG Mobile Worldcup Texting Championship in New York in this January 14, 2010 file photo. A third of U.S. teenagers with cell phones send more than 100 texts a day as texting has exploded to become the most popular means of communication for young people, new research released on Tuesday shows. REUTERS/Mike Segar/Files (UNITED STATES - Tags: SCI TECH BUSINESS SOCIETY) - RTR2D16X
Voice of Asia News

سوشل میڈیا کازیادہ استعمال نوجوانوں کونفسیاتی مریض بنانے لگا

لاہور(وائس آف ایشیا)سوشل میڈیا کے زیادہ استعمال سے ذہنی دباؤ نوجوانوں کو نفسیاتی مریض بنانے لگا، نیند کی کمی سے نوجوانوں کی ذہنی صلاحیتیں بھی ماند پڑنے لگیں۔رائل کالج فار پبلک ہیلتھ کی تازہ تحقیق کے مطابق ہر وقت موبائل ، ٹیبلٹ یا کمپیوٹر کی اسکرین پر جمی نظریں اور اس دوران مختلف ایپس کا استعمال نوجوانوں کے ذہنی دباؤ میں اضافے کا سبب بن رہا ہے اور اس کی وجہ سے نوجوان نسل نفسیاتی مسائل کا شکار ہورہی ہے۔رائل کالج فار پبلک ہیلتھ کے مطابق سوشل میڈیا کے بڑھتے ہوئے استعمال کے باعث نوجوانوں میں نیند کی کمی بڑھتی جارہی ہے جس سے ان کی ذہنی صلاحیتیں ماند پڑرہی ہیں ۔ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا کی اہمیت اور اس کے مثبت اثرات سے اجتناب نہیں لیکن کسی بھی چیز کی زیادتی انسان کے دل و دماغ کو متاثر کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے اسی وجہ سے خاص طور پر نوجوان بچے اور بچیوں میں ذہنی انتشار اور بعض معاملات میں احساسی محرومی جیسے عوامل بھی سامنے آتے ہیں۔رائل کالج فار پبلک ہیلتھ کی اس تازہ تحقیق میں 14 سے 24 برس کے 1500 سے زائد نوجوانوں کو شامل کیا گیا تھا ۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •