Voice of Asia News

پنڈت برادری خودساختہ تنظیموں کے بہکاوے میں آئے بغیر اپنے گھروں کو لوٹ آئے میرواعظ

سری نگر( وائس آف ایشیا) کل جماعتی حریت کانفرنس ع کے چیرمین میرواعظ عمر فاروق نے کشمیری پنڈتوں کو کشمیری سماج کا ایک ناقابل تنسیخ حصہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارا یہ واضح موقف رہا ہے کہ کشمیری سماج اور تہذیب کا ایک حصہ ہونے کے ناطے ہم ان کی پر امن گھر واپسی کا ہمیشہ خیر مقدم کریں گے اور اس سلسلے میں ہم نے بارہا پنڈت برادری سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے گھروں کو لوٹ آئیں اور ماضی کی طرح کشمیری تہذیب و تمدن کا ایک حصہ بن کریہاں زندگی گزاریں۔تلہ مولہ میلہ کھیر بھوانی میں شرکت کیلئے آئے پنڈتوں کے ایک وفد جس کی قیادت شری ستیش کمار اور نتھل رازدان کررہے تھے ،سے اپنی رہائش گاہ پر ملاقات کے دوران میرواعظ نے انہیں اور جملہ پنڈت برادری کومیلہ کھیر بھوانی کے موقعہ پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ کشمیری پنڈتوں کی گھر واپسی پر کوئی سیاست کرنے کے بجائے ان کی واپسی کو انسانی نقطہ نظر سے دیکھا جانا چاہئے اور ہمارا یہ ماننا ہے کہ کشمیری پنڈت اپنے اپنے گھروں میں لوٹ آئیں اور ماضی کی طرح اپنے مسلمان بھائیوں کے ساتھ شیر و شکر کی طرح زندگی گزاریں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری پنڈت گزشتہ تین دہائیوں سے اپنے گھروں سے دور ہیں اس کا ہمیں احساس ہے اور ہم ان کی مشکلات سے بھی آگاہ ہیں اور یہ کشمیری پنڈتوں کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ خودساختہ تنظیموں کے بہکاوے میں آئے بغیر یہاں کے اکثریتی طبقے پر بھروسہ کرکے اپنے گھروں کو لوٹ آئیں۔انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر کی فرقہ وارانہ ہم آہنگی، تہذیب و تمدن ، بھائی چارہ کی پوری دنیا میں مثالیں دی جاتی ہیں اور یہی فرقہ وارانہ ہم آہنگی جموں وکشمیر کی شناخت اور ہمارا امتیاز ہے۔اس موقعہ پر پنڈت برادری کے وفد نے میرواعظ کو بتایا کہ انکی گھر واپسی کا معاملہ دلی اور سرینگر کے بیچ سیاست کی نذر ہوکر رہ گیا ہے اور وہ چاہتے ہیں کہ ان کے لئے الگ کالونیوں کی تعمیر کا شوشہ کھڑا کرنے کے بجائے انہیں مختلف اضلاع اور مقامات میں اپنے مسلمان بھائیوں کے ساتھ مل جل کر رہنے کی ماضی کی طرح سہولت فراہم کی جائے۔وفد نے میرواعظ کے خیالات اور تجاویز پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ان کی گھر واپسی کے حوالے سے ان کے نقطہ نظر کی سراہنا کی اور اس امید کا اظہار کیا کہ کشمیری پنڈت واپس وطن لوٹنے کے بعد اطمینان و سکون کے ساتھ اپنی زندگیاں بسر کرسکیں گے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •