Voice of Asia News

زیادہ مٹھاس کا استعمال دل کی بیماریوں کا سبب ہوسکتا ہے،تحقیق

 لاہور(وائس آف ایشیا)ایسے صحت مند لوگ جو اپنے کھانوں میں مٹھاس کا زیادہ استعمال کرتے ہیں، ان کے دل کے عارضے میں مبتلا ہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔برطانیہ کی سرے یونیورسٹی کے ماہرین کی جانب سے کی جانے والی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ ایسے صحت مند افراد جو میٹھا زیادہ کھانا پسند کرتے ہیں ان کے خون میں بڑھنے والی چکناہٹ اور جگر پر جمع ہونے والی چربی کارڈیو ویسکیولر مسائل میں اضافہ کر دیتی ہے۔کلینکل سائنسز میگزین میں شائع ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ سرے یونیورسٹی کے ماہرین نے صحت مند افراد کے دو گروپس تشکیل دیئے جن میں سے ایک کو روزانہ کی بنیاد پر 140کیلوریز کی میٹھی اشیا کھانے کو دی گئیں جبکہ دوسرے گروپ کو 650کیلوریز کی میٹھی اشیا دی گئیں۔بارہ ہفتوں تک یہ معمول برقرار رکھنے کے بعد حاصل ہونے والے اعداد و شمار بہت ہی چونکا دینے والے تھے۔ ایسے افراد جنہیں زیادہ میٹھا کھلایا گیا ان کے جگر پر نان الکحل فیٹی لیور ڈیزیز (این اے ایف ایل ڈی)نامی چربی جمع ہوئی جس کی وجہ سے جگر کے خلیوں کی توڑ پھوڑ(میٹابولزم)پر منفی اثرات مرتب ہوئے اور اس صورتحال کا تعلق امراض قلب، دل کی بے ترتیب دھڑکن اور دل کے دورے سے بھی ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •