Voice of Asia News

’ این آئی اے‘ نے سرینگر میں آسیہ اندرابی کا گھر ضبط کر لیا

سرینگر ( وائس آف ایشیا)بدنام زمانہ بھارتی تحقیقاتی ادارے ’’ نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی ( این آئی اے ) نے دختران ملت کی غیر قانونی طور پر نظر بند چیئرپر سن آسیہ اندرابی کے گھر کو سرینگرمیں ضبط کر لیاہے۔کشمیر میڈیاسروس کے مطابق ’این آئی اے‘‘ نے سرینگر کے علاقے صورہ میں واقع آسیہ اندرابی کے گھر کے باہر چسپاں کیے جانے والے حکمنامے میں تمام متعلقین سے کہا کہ وہ پیشگی اجازت کے بغیر مذکورہ گھرکی خرید و فروخت نہ کریں۔ این آئی اے کے تحقیقاتی افسر اعلیٰ Vikas Katheriaنے کہا کہ آسیہ اندرابی کے گھر کو مقبوضہ کشمیر کے ڈائر یکٹرجنرل پولیس کی منظور ی کے بعد ضبط کیا گیا۔یا د رہے کہ تحریک آزادی کو طاقت کے وحشیانہ استعمال سے دبانے میں ناکامی کے بعد بھارت اپنے تحقیقاتی ادارو ں ’ این آئی اے‘اور ’ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ‘ کو کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو کمزور کرنے کیلئے استعمال کر رہا ہے۔ ’ این آئی اے‘ اور’ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ‘نے محمد یاسین ملک ، شبیر احمد شاہ ، مسرت عالم بٹ، آسیہ انداربی ، الطاف احمد شاہ ، ایاز اکبر ، پیر سیف اﷲ ، راجہ معراج الدین کلوال ، نعیم احمد خان، شاہد الاسلام ، فاروق احمد ڈار، ظہور احمد وٹالی، فہمیدہ صوفی، ناہیدہ نسرین ، سید شاہد یوسف اور سید شکیل احمد کو غیر قانونی طور پر نظر بند کر رکھا ہے ۔ یہ تحقیقاتی ادارے شبیر احمد شاہ اور غلام محمد خان سوپوری کے گھروں اور جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ اور جماعت اسلامی مقبوضہ کشمیر سمیت دیگر آزادی پسند تنظیموں اور لوگوں کی جائیدادیں اور دفاتر پہلے ہی ضبط کر چکے ہیں۔
وائس آف ایشیا10جولائی 2019 خبر نمبر78

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •