Voice of Asia News

انسانی حقوق کی پامالیوں بارے اقوام متحدہ کی حالیہ رپورٹ خوش آئندہے، لبریشن فرنٹ

سرینگر ( وائس آف ایشیا)مقبوضہ کشمیر میں جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ نے کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کے بارے میں اقوام متحدہ کی جاری کردہ حالیہ رپورٹ کو خوش آئندقرار دیتے ہوئے تحقیقاتی کمیشن قائم کرنے کی عالمی ادارے کی سفارش پر فوری عملدرآمد کا مطالبہ کیا ہے۔کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق لبریشن فرنٹ کے قائمقام چیئرمین عبدالحمید بٹ نے سرینگر میں جاری ایک بیا ن میں کہا کہ جموں وکشمیر میں بڑے پیمانے پر جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کی روک تھام کے لئے ادارے کی سفارشات پر فوری عملدرآمد ناگزیر ہے۔ انہوں نے کہا کہ محمد یاسین ملک اور دیگر حریت رہنماؤں سمیت ہزاروں کشمیریوں کو پابند سلاسل کیا گیا ہے اور بھارتی حکومت نے سیاسی سرگرمیوں پر پابندی عائد کرکے کشمیر کومیدان جنگ میں تبدیل کردیاہے جہاں لاقانونیت اور آمریت رائج ہے۔فرنٹ رہنما نے کہاکہ ایک جمہوری ملک کیسے جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ اور جماعت اسلامی جیسی سیاسی اور مذہبی تنظیموں پر پابندی لگاکر ان کے رہنماؤں اورکارکنوں کو جیلوں میں ڈال سکتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ بھارت ایک جائز اور مبنی برحق تحریک حق خود ارادیت کو دہشت گردی کا نام دیکر دنیا کی آنکھوں میں د ھول جھونکنے کی کوشش کررہاہے۔عبدالحمید بٹ نے کہا کہ اگر بھارت واقعی جمہوریت پر یقین رکھتا ہے تو اسے لبریشن فرنٹ اور جماعت اسلامی پر پابندی ہٹاکر ان کے تمام رہنماؤں اورکارکنوں کو رہاکردینا چاہیے اور انہیں سیاسی سرگرمیوں کی اجازت دینی چاہئے۔انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر عالمی سطح پر تسلیم شدہ ایک متنازعہ علاقہ ہے جہاں کے لوگوں کوا پنے مستقبل کا فیصلہ کرنا ابھی باقی ہے۔ انہوں نے قابض بھارتی حکمرانوں کی طرف سے انٹرنیٹ اور ذرائع ابلاغ پرآئے روز پابندیاں عائد کرنے اور میڈیا ہاوسز اور ان کے مالکان کودھمکیاں دینے کی شدید مذمت کی ہے۔دریں اثناء جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ نے گزشتہ 24 سال سے دہلی کی تہاڑ جیل میں نظربند جاوید احمد خان کے والد محمد شفیع خان کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کا ایک وفد سرینگر میں ان کے گھر گیا اورلواحقین سے اظہار تعزیت اور مرحوم کے لیے دعائے مغفرت کی۔
وائس آف ایشیا10جولائی 2019 خبر نمبر81

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •