Voice of Asia News

پی سی بی کی مختلف پلاننگ انضمام الحق کے معاہدے میں توسیع سے گریزاں

کراچی(وائس آف ایشیا)پاکستان کرکٹ بورڈ آنے والے عرصے میں مختلف پلاننگ کے تحت کام کرنے کے سبب انضمام الحق کے معاہدے میں توسیع سے گریزاں ہے ،چیف سلیکٹر کنٹریکٹ کی مدت میں ایک سالہ اضافے کے خواہاں ہیں لیکن باوثوق ذرائع کا دعویٰ ہے کہ بورڈ حکام نے نئی سلیکشن کمیٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستانی ٹیم کی ورلڈ کپ سیمی فائنل میں رسائی سے محرومی کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے چیف سلیکٹر انضمام الحق کے معاہدے میں توسیع نہ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے جس کا مقصد یہی ہے کہ عوامی سطح پر ٹیم کی ناکامی کے غم کو ہلکا کرنے کی کوشش کی جائے کیونکہ عالمی کپ کے دوران چیف سلیکٹر کی انگلینڈ میں موجودگی اور اہم معاملات میں مداخلت کی خبریں میڈیا کی زینت بنتی رہیں۔چیف سلیکٹر کے قریبی ذرائع کا دعویٰ ہے کہ انہوں نے اپنے معاہدے کی مدت میں ایک سالہ توسیع میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے لیکن پی سی بی حکام نے ورلڈ کپ میں قومی ٹیم کی کارکردگی کے تناظر میں نئی سلیکشن کمیٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کرلیا ہے اور عالمی کپ کے ساتھ انضمام الحق کا معاہدہ بھی ختم ہو گیا جنہوں نے 2016ء میں یہ ذمہ داری سنبھالی تھی۔واضح رہے کہ سابق اوپننگ بیٹسمین محسن خان کا نام بطور چیف سلیکٹر سامنے آرہا ہے جو گزشتہ دنوں کرکٹ کمیٹی کی سربراہی سے مستعفی ہو چکے ہیں اور انہیں ماضی میں بہترین نتائج کے ساتھ اسی منصب پر کام کرنے کا موقع مل چکا ہے۔قومی کرکٹ ٹیم کے عبوری کوچ کی حیثیت سے بھی فرائض نبھانے والے محسن خان کھیل پر گہری نگاہ رکھتے ہیں اور چیئرمین پی سی بی نے ان کی خدمات کا حال ہی میں اعتراف بھی کیا تھا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ قومی ٹیم کی ورلڈ کپ سیمی فائنل سے محرومی انضمام الحق کو ان کی پوسٹ سے ریلیز کرنے کا باعث بنی ہے جو میگا ایونٹ کیلئے بہترین ٹیم کی تشکیل کے حوالے سے مطمئن نہیں کر سکے۔
وائس آف ایشیا11جولائی 2019 خبر نمبر25

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •