Voice of Asia News

بینکنگ چینلزسےزیادہ ترسیلات بجھوانےپرکارکنان کا مشکورہوں،عمران خان

لاہور( وائس آف ایشیا) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بینکنگ چینلزسے زیادہ ترسیلات بجھوانے پرکارکنان کا مشکورہوں، گزشتہ سال ترسیلات میں9.7 فیصد کا سالانہ اضافہ ہوا اور رواں برس مجموعی حجم 21.8 ارب ڈالر تک پہنچا، جو پچھلے سال کے مقابلے میں کہیں زیادہ ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ٹویٹ میں کہا کہ بینکنگ چینلز کے ذریعے زیادہ ترسیلات بجھوانے پر میں بیرون ملک مقیم اپنے کارکنان کا مشکور ہوں۔انہوں نے کہا کہ نتیجتاً گزشتہ برس ترسیلات میں 9.7 فیصد کا سالانہ اضافہ ہوا اور رواں برس ترسیلات کا مجموعی حجم 21.8 ارب ڈالر تک پہنچا۔ پچھلے برس کے مقابلے میں جبکہ یہ مقدار 2.9 فیصد تھی، یہ اضافہ کہیں زیادہ تھا۔دوسی جانب گورنراسٹیٹ بینک باقر رضا نے آج یہاں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں اس وقت بیرونی ادائیگیوں کے خسارے کا سامنا ہے۔اس کے ساتھ اس وقت ہمیں دوارب ڈالرماہانہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کا بھی سامنا ہے۔ گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ ہمارا ایکسچینج برآمدی شعبے کونقصان پہنچا رہا ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ ملک کو درپیش ان مسائل کے لیے ہم نے کیا کیا۔ گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کوکم کررہے ہیں،ایکسچینج ریٹ اب مناسب سطح پرآ گیا۔ گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ بجٹ خسارے جیسے مسائل کا بھی سامنا تھا۔انہوں نے کہا کہ نئے بجٹ میں کفایت شعاری کے اقدامات اٹھا رہے ہیں۔ ایکسپورٹرز ہی کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کوکم کرنے میں مدد کرتے ہیں۔ گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ برآمدات بڑھانے کے لیے صرف ایکسچینج ریٹ کافی نہیں۔ ٹیکس دہندگان یا ٹیکس دینے کے اہل لوگ بھی ہماری معیشت کے اسٹیک ہولڈرز ہیں۔ عالمی برادری بھی ہماری معیشت کی ایک اہم اسٹیک ہولڈر ہے۔ گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ ہم نے فیئرٹیکس سسٹم متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف قرضے کے بعد ہمیں دیگرذرائع سے سستے قرضے ملیں گے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •