Voice of Asia News

لبریشن فرنٹ عالمی سطح پر’یاسین ملک کو رہا کرو‘ اور لبریشن فرنٹ پر سے پابندی ہٹاؤ مہم ‘ کا آغاز کریگی

سرینگر( وائس آف ایشیا) مقبوضہ کشمیر میں جموں و کشمیر لبریشن فرنٹ کے قائم مقام چیئرمین عبدالحمید بٹ نے پارٹی کے غیر قانونی طورپر نظربند چیئرمین محمد یاسین ملک کی مسلسل غیر قانونی نظربندی اور لبریشن فرنٹ کی سیاسی سرگرمیوں پر قدغن کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے غیر قانونی قراردیا ہے ۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق عبدالحمید بٹ نے لبریشن فرنٹ کی سپریم کونسل کے اراکین کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ عالمی برادری کو اس سلسلے میں فوری مداخلت کرتے ہوئے بھارت پر محمد یاسین ملک کی رہا ئی اور پارٹی کی سیاسی سرگرمیوں پر عائد قدغن ہٹانے کیلئے دباؤ بڑھانا چاہیے ۔ انہوں نے کہاکہ لبریشن فرنٹ اس حوالے سے ہفتہ کے روز سے عالمی سطح پر’یاسین ملک کو رہا کرو‘ اور لبریشن فرنٹ پر سے پابندی ہٹاؤ‘ مہم کا آغاز کررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت عرصہ دراز سے کشمیریوں کو اپنے حق خودارادیت کا مطالبہ کرنے پر بدترین ظلم و تشدد کا نشانہ بناتا آرہا ہے تاہم حالیہ کچھ ماہ سے اس سلسلے تیزی سے اضافہ ہو اہے ۔انہوں نے کہاکہ دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کا دعویدار بھارت کشمیریوں کی حق پر مبنی جدوجہد آزادی کو دبانے کیلئے غیر جمہوری اور انسانیت سوز ہتھکنڈے استعمال کررہا ہے ۔انہوں نے نہتے کشمیریوں کو بدترین ظلم و تشدد اورانسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کا نشانہ بنانے پر عالمی برداری خاص طور پر امریکہ،برطانیہ اور یورپی یونین کی خاموشی کو افسوسناک قراردیا ۔ عبدالحمیدبٹ نے کہا کہ پارٹی کی تمام زونل کمیٹیوں کو عالمی سطح پر ’’ـیاسین ملک کو رہا کرو‘‘ اور’’ لبریشن فرنٹ پر سے پابندی ہٹاؤ‘‘مہم کو منظم اورمربوط طور پر آگے بڑھانے کیلئے فوری اقدامات کی ہدایت کی ۔ انہوں نے کہاکہ زونل کمیٹیوں کے علیحدہ علیحدہ اجلاس منعقد کئے گئے ہیں جن میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ اس حوالے سے دنیا بھر میں موجود بھارتی سفارت خانوں، سفارتی مراکز، اہم مقامات ،اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی تنظیموں کے دفاتر پر احتجاجی مظاہرے کئے جائیں گے اوردنیا بھر میں سفارتی مشن سے رابطہ قائم کرکے انہیں یاسین ملک کی گرفتاری اور لبریشن فرنٹ پر پابندی کے حوالے سے آگاہ کیاجائیگا ۔عبدالحمید بٹ نے کہاکہ 13 جولائی بروز ہفتہ سے مہم کا باقاعدہ آغاز کیاجائے گا اور اس دن دنیا بھر میں جلسے جلوس اور دھرنے منعقد کرکے یاسین ملک کو رہا کرو اور لبریشن فرنٹ سے پابندی ہٹاؤ کے نعرے بلند کئے جائیں گے۔ لبریشن فرنٹ کے قائم مقام چیئرمین نے شوپیان میں غیر قانونی طورپر نظربند حریت رہنما سرجان برکاتی کے گھر پر مشتبہ نقاب پوش افراد کے حملے اور کی بیوی کو جان سے ماردینے کی کوشش کی شدید مذمت کی اور اسے بزدلانہ کارروائی قراردیا۔ انہوں نے کل جماعتی حریت کانفرنس کے غیر قانونی طورپر نظربند ترجمان ایاز اکبر کی اہلیہ کی شدید علالت پر بھی شدید تشویش کا اظہار کیا ۔
وائس آف ایشیا11جولائی 2019 خبر نمبر138

 

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •