Voice of Asia News

بھارت کشمیرمیں انسانی حقوق کی پامالیاں بند کرانے میں اپنی ناکامی کاسامنا کرنے کیلئے تیار نہیں، ہیومن رائٹس واچ

نیویارک( وائس آف ایشیا)نیویارک میں قائم انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے کہا ہے کہ بھارت کی طرف سے مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی پامالیوں کے بارے میں اقوام متحدہ کی رپورٹ مسترد کئے جانے سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ انسانی حقوق کی پامالیاں رکوانے کے بارے میں اپنی ناکامیوں کا سامنا کرنے کیلئے تیار نہیں ہے ۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق ہیومن رائٹس واچ کی جنوبی ایشیاء کی ڈائریکٹر مینا کشی گنگولی نے تنظیم کی ویب سائٹ پر جاری ایک بیان میں کہاہے کہ بھارت اور پاکستان دونوں رپورٹ کی سفارشات پر عمل درآمد کریں اور کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں رکوانے میں مدد کیلئے غیر جانبدارانہ تحقیقات کرائیں۔ انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم نے بھارت پر زوردیا کہ وہ کشمیرمیں بنیادی حقوق کے تحفظ کیلئے اقوا م متحدہ کے ہائی کمشنر کے دفتر کی سفارشات پر عمل کرے ۔ 8جولائی کو جاری ہونیوالی عالمی ادارے کی رپورٹ میں مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوجیوں کی طرف سے جاری انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں کے بارے میں شدید تحفظات ظاہر کئے گئے ہیں۔ مینا کشی گنگولی نے کہاکہ بھارتی قابض انتظامیہ اقوام متحدہ کی چشم کشا رپورٹ کی روشنی میں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں میں ملوث اہلکاروں کے خلاف کارروائی کرے ۔ انسانی حقو ق کے بارے میں اقوا م متحدہ کے ہائی کمشنرنے اپنی رپورٹ میں مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فورسز کی طرف سے قتل عام، جبری گمشدگیوں اور بے حرمتیوں سمیت انسانی حقو ق کی پامالیوں کے متاثرین کو انصاف کی عدم فراہمی کی مذمت کی ہے۔ رپورٹ میں بھارتی فورسز کی طرف سے تلاشی اور محاصرے کی کارروائیوں کے دوران نہتے کشمیریوں پر طاقت کے وحشیانہ استعمال ، شہریوں کے قتل ، ظلم و تشدد اور دوران حراست قتل کے واقعات پر بھی تشویش ظاہر کی گئی ہے ۔
وائس آف ایشیا12جولائی 2019 خبر نمبر111

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •