Voice of Asia News

ریسٹورانٹس میں شیشہ پینے پر عائد پابندی ختم ہونے کا امکان

اسلام آباد (وائس آف ایشیا ) سینیٹ کمیٹی برائے قومی صحت نے شیشہ سنٹر پر پابندی ختم کرنے کا عندیہ دے دیا ہے۔قومی اخبار کی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے قومی صحت کا اجلاس گذشتہ روز سینیٹر عتیق شیخ کی سربراہی میں پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا۔ وفاقی حکومت کی جانب سے سگریٹ پر ٹیکس کے بعد قائمہ کمیٹی نے سگریٹ کی تشہیر پر پابندیاں نرم کرنے کی بھی سفارش کر دی۔ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی پاکستان کے سابق سی ای او کی جعلی ڈگری اور ان کو تعینات کرنے والوں کی تفصیلات طلب کر لیں۔قائمہ کمیٹی پولی کلینک میں غیر معیاری ادویات کی سپلائی اور ٹینڈرز کی تفصیلات بھی طلب کر لیں۔جب کہ سینیٹ کمیٹی نے شیشہ سنٹر پر پابندی ختم کرنے کا عندیہ بھی دیا۔چئیر مین قائمہ کمیٹی عتیق شیخ نے کہا کہ میں اپنے کیے گئے فیصلے پرشرمندہ ہوں جس پر ہم نے شیشہ سنٹرز پر پابندی کا حکم دیا تھا۔انہوں نے کہا کہ میں شرمندہ ہوں کہ ہم نے یہ کام کیوں کیا۔شیشہ سنٹر بند ہونے کے بعد شیشہ گھروں میں منتقل ہو گیا ہے۔پہلے ایک شخص ریسٹورانٹس جا کر شیشہ پیتا تھا اب گھر کے سارے افراد پی رہے ہوتے ہیں، پہلے نوجوان اس لعنت کا نشانہ بنتے تھے اب پورا خاندان پیتا ہے۔ عتیق شیخ نے کہا کہ لندن میں ہمارے کرکٹرز شیشہ پیتے رہ گئے اور ہم میچ ہار گئے۔افسوس ہے کہ شیشے پر پابندی لگوانے کے لیے میں نے سب سے زیادہ شور ڈالا لیکن ریسٹورنٹس میں شیشے پر پابندی لگی تو شیشہ گھروں میں آ گیا۔انہوں نے کہا کہ ترقی یافتہ ممالک میں شیشے پر پابندی نہیں لہذا ریسٹورانٹس میں شیشہ پر عائد پابندی اٹھا لی جائے،وزارت صحت حکام نے کہا ہے کہ شیشہ سنٹروں پر پابندی سپریم کورٹ نے لگائی تھی انا کی ہدایت پر ان کو بند کیا تھا۔سینیٹ قائمہ کمیٹی نے ریسٹورنٹس میں شیشہ پینے پر پابندی اٹھانے کی سفارش کی۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •