Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر،بھارتی فوج نے ایک اور کشمیری نوجوان شہید کر دیا

 
سرینگر/جموں (وائس آف ایشیا ) مقبوضہ کشمیر میں کنٹرول لائن کے قریب سامبا سیکٹر میں بھارتی فوج نے کشمیری نوجوان کو شہید کر کے پاکستانی درانداز قرار دیا ہے جبکہ سرینگر سے ایک نوجوان کو حراست میں لے کر دعویٰ کیا گیا ہے کہ بصیر احمد کا تعلق جیش محمد سے تھا اور اس کے سر کی قیمت دو لاکھ روپے رکھی گئی تھی۔تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج نے ایک اور کشمیری نوجوان کو شہید کر دیا اور اس پاکستانی درانداز قرار دیا ہے ۔یہ واقعہ کنٹرول لائن کے سمبا سیکٹر کے علاقے رام باغ میں پیش آیا ہے جہاں گزشتہ روات بی ایس ایف کے اہلکاروں نے ایک نوجوان کو فائرنگ کر کے شہید کیا۔فورسز کے مطابق بی ایس ایف کے اہلکاروں نے کنٹرول لائن پر مشکوک نقل و حرکت دیکھی۔بی ایس ایف اہلکاروں کے مطابق اس موقع پر نوجوان کو للکارا گیا تو اس نے بھاگنا شروع کر دیاجس اہلکاروں نے فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں مشتبہ نوجوان شہید ہو گیا۔بھارتی فوج کے مطابق نوجوان کی لاش پولیس کے حوالے کر دی گئی ہے جس کی شناخت نہیں ہو سکی۔مقامی لوگوں کے مطابق مارا گیا نوجوان مقامی ہے جس کو دراندازی کے نام پر نشانہ بنایا گیا ہے ۔اس موقع پر سرحدی علاقوں کے لوگوں نے شدید احتجاج کیا ۔دریں اثناء دلی پولیس کی سپیشل سیل نے منگل کوسرینگرمیں کارروائی عمل میں لاتے ہوئے جیش محمد نامی تنظیم سے وابستہ ایک مشتبہ جنگجو کو گرفتار کرلیا۔جموں کشمیرپولیس ذرائع نے گرفتار شدہ کی شناخت بصیر احمد کے طور کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس کے سر پر دو لاکھ روپے کا انعام تھا۔دریں اثناء بھارتی وزیر اعظم دفتر میں وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا ہے کہ سال رواں کشمیر میں ملی ٹنسی کا آخری سال ہوگا۔سنگھ نے کہاکشمیر میں ملی ٹنسی کا یہ آخری سال ہے ، وہ دن دور نہیں جب وادی میں مکمل طور پر امن قائم ہوگا کیونکہ لوگ تین دہائیوں سے جاری بندوق کلچر سے اب تنگ آگئے ہیں۔ ریاسی میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران سنگھ نے علیحدگی پسندوں کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہاعام لوگ اب علیحدگی پسندوں کے ساتھ تعاون نہیں کررہے ہیں کیونکہ وہ اب یہ جان گئے ہیں کہ یہ لوگ انہیں اور ان کے بچوں کا استحصال کررہے ہیں، اپنے بچوں کو بیرون ملک حصول تعلیم کے لئے بھیجتے ہیں جبکہ ان کے بچوں کو ملک دشمن سرگرمیوں کی ترغیب دیتے ہیں۔ان کا کہنا تھاکشمیر میں لوگ اب یہ بات سمجھ چکے ہیں کہ علیحدگی پسند اور مین اسٹریم جماعتیں انہیں بلی کا بکرا بناکر تشدد سے اپنے مفادات کی آبیاری کررہے ہیں، عام کشمیری کی قیمت پر یہ جماعتیں اپنے مفادات کی تکمیل کررہے ہیں جس کو وہ (کشمیری لوگ) اب برداشت نہیں کریں گے ۔
وائس آف ایشیا16جولائی 2019 خبر نمبر10

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •