Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر ،عبدالصمد انقلابی کو ایک بار پھر عدالت میں پیش نہیں کیا گیا

سرینگر (وائس آف ایشیا )مقبوضہ کشمیر میں جموں خطے کی کوٹ بھلوال جیل کی انتظامیہ نے جیل میں غیر قانونی طور پر نظر بند اسلامی تنظیم آزادی کے چیئرمین عبدالصمد انقلابی کو انکے خلاف قائم ایک جھوٹے مقدمے کی سماعت کے سلسلے میں ایک بار پھر عدالت میں پیش نہیں کیا۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق اسلامی تنظیم آزادی کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ عبدالصمد انقلابی کو ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کپواڑہ کی عدالت میں پیش کیا جانا تھالیکن جیل انتظامیہ نے انہیں عدالت میں پیش نہیں کیا گیا جس کے بعد عدالت نے ان پر قائم جعلی مقدمے کی آئندہ تاریخ سماعت5اگست کو مقرر کر دی ۔ ترجمان نے پارٹی چیئرمین کو عدالت میں پیش نہ کرنے پر کوٹ بھلوال جیل انتظامیہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہ اسے بدترین سیاسی انتقام قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ صمد انقلابی کوایک دوسرے جھوٹے مقدمے میں سترہ جولائی کو بھی ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سرینگرکی عدالت میں پیش کیا جانا تھا مگر اُ س دن بھی انہیں وہاں پیش نہیں کیا گیا۔ ترجمان نے کہا کہ عبدالصمد انقلابی کو اس لیے عدالت میں پیش نہیں کیا جا رہا تاکہ انکی غیر قانونی نظر بند ی کو زیادہ سے زیادہ طول دیا جاسکے۔ انہوں نے ایمنسٹی انٹرنیشنل، عالمی ریڈ کراس اور انسانی حقوق کی دیگر عالمی تنظیموں سے اپیل کی ہے کہ وہ عبدالصمد انقلابی کی مسلسل غیر قانونی نظر بندی کا نوٹس لیکر ان سمیت تمام کشمیری نظر بندوں کی رہائی کیلئے اپنا کردار ادا کریں۔
وائس آف ایشیا20جولائی 2019 خبر نمبر107

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •