Breaking News
Voice of Asia News

ایران کا خلیج میں عراق کے تیل بردار جہاز کو تحویل میں لینے کا دعویٰ

تہران /بغداد(وائس آف ایشیا)عراق نے ایرانی حکومت کے اس دعوے کو مسترد کردیا ہے جس میں ایران نے کہاہے کہ خلیج میں اس کے ایک تیل بردار جہاز کو تحویل میں لیا گیا ہے۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایک بیان میں عراقی وزارت پٹرولیم کے ترجمان عاصم جہاد نے کہاکہ ایرانی تحویل میں جانے والا تیل بردار بحری جہاز عراق کا نہیں۔عراقی وزارت پٹرولیم کے ترجمان عاصم جہاد نے کہا کہ عراق گیس آئل عالمی منڈی کو سپلائی نہیں کرتا۔ ہم صرف خام تیل اور اعلان کردہ پٹرولیم مصنوعات کی عالمی منڈی کو سپلائی کرتے ہیں۔ عالمی منڈی کو تیل کی سپلائی میں تمام بین الاقوامی ضابطوں کا خیال رکھا جاتا ہے۔ایک سوال کے جواب میں عاصم جہاد نے کہ عراقی حکومت ایرانی تحویل میں جانے والے بحری جہاز کے بارے میں معلومات جمع کررہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایرانی حکام کی جانب سے تحویل میں لیا گیا ایک چھوٹا جہاز ہے جس کا عراق کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔قبل ازیں ایران کے خبر رساں اداروں کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ خلیج میں پاسداران انقلاب نے ایک تیل بردار بحری جہاز تحویل میں لیا ہے جو عراق سے ایندھن اسمگل کرنے کی کوشش کررہا تھا۔ایرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق پاسداران انقلاب کی طرف سے تحویل میں لیے گئے بحری جہاز پر عملے کے سات افراد سوار ہیں جب کہ اس پر سات ہزار لیٹر تیل لادا گیا ہے۔ایران کے ٹی وی کے مطابق عراقی تیل بردار جہاز کے ذریعے بعض عرب ممالک کو تیل اسمگل کرنے کی کوشش کی جا رہی تھی۔
وائس آف ایشیا05اگست 2019 خبر نمبر68

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •