Voice of Asia News

فلسطینیوں نے مسجد اقصیٰ میں نماز عید پراسرائیلی پابندی مسترد کردی

مقبوضہ بیت المقدس (وائس آف ایشیا)فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس کی سپریم اسلامی کمیٹی نے اسرائیلی ریاست کی طرف سے عیدالاضحی کے موقع پرفلسطینیوں کا مسجد اقصیٰ میں داخلہ روکنے کا فیصلہ مسترد کرتے ہوئے تمام فلسطینیوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اسرائیلی ریاست کی کھڑی کی گئی رکاوٹیں توڑ کو مسجد اقصیٰ پہنچیں اور عید کی نماز ادا کریں۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق فلسطینی سپریم کمیٹی، اسلامی اوقاف اور دارالافتا کی طرف سے جاری بیانات میں مسجد اقصیٰ میں نماز عید کی ادائیگی پرپابندی کو صہیونی ریاست کی کھلی مذہبی اشتعال انگیزی قرار دیا ۔ بیانات میں کیا گیا ہے کہ اس پابندی کا مقصد فلسطینی نمازیوں کوروک کر یہودی آباد کاروں کو قبلہ اول میں تلمودی تعلیمات کے مطابق مذہبی رسومات کی ادائیگی کی اجازت دینا ہے۔ فلسطینی قوم اس پابندی کو کسی صورت میں قبول نہیں کریں گے۔فلسطینی محکمہ اوقاف نے کہا کہ مسجد اقصیٰ میں داخلے پرپابندی قبلہ اول کی بے حرمتی کی مجرمانہ سازشوں کا حصہ ہے۔خیال رہے کہ اسرائیلی حکومت نے یہودی آباد کاروں کی نمائندہ تنظیموں کی اپیل پر اتوار کے روز مسجد اقصی میں فلسطینیوں کو عیدالاضحی کی ادائی سے روکنے کا فیصلہ کیا ہے۔ صہیونی حکومت کی طرف سے پولیس کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ صورت حال کو کنٹرول کرنے کے لیے اپنی ذمہ داریاں سنبھالے۔فلسطینی محکمہ اوقاف کی طرف سے فلسطینی مساجد کے آئمہ سے کہا گیا ہے کہ وہ اسرائیلی ریاست کی طرف سے عاید کردہ پابندی کے بارے میں عوام کو مطلع کریں اور قبلہ اول میں نماز کی ادائی روکنے کی سازش ناکام بنائیں۔
وائس آف ایشیا10اگست 2019 خبر نمبر16

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •