پارلیمانی کمیٹی برائے قومی سلامتی کا پہلا اجلاس 19 اگست کو ہو گا

 
اسلام آباد (وائس آف ایشیا) پارلیمانی کمیٹی برائے قومی سلامتی کا پہلا اجلاس 19 اگست کو ہو گا،25 رکنی پارلیمانی کمیٹی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف ، بلاول بھٹو زرداری ، سینیٹر سراج الحق سمیت دونوں ایوانوں میں حکومت اپوزیشن کے پارلیمانی رہنما شامل ہیں ۔ اجلاس سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی صدارت میں ہو گا ۔ دفاع ، خارجہ امور ، داخلہ اور امور کشمیر گلگت بلتستان کے وزراء بھی شریک ہوں گے ۔ کشمیر پالیسی ، دفاع قومی سلامتی اور خارجہ امور کے معاملات پر پارلیمنٹ کی طرف سے رہنما اصول وضع کئے جائیں گے ۔ بالخصوص بھارت کی طرف سے مسئلہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کے خلاف قومی لائحہ عمل اور حکومت پاکستان کے اقدامات اورپالیسی سے متعلق رہنما اصولوں سے حکومت کو آگاہ کیا جائے گا۔ پارلیمانی کمیٹی برائے قومی سلامتی میں تمام حکومت اپوزیشن جماعتوں سے دونوں ایوانوں سے پارلیمانی لیڈرز کو شامل کیا گیا ہے ۔ ان میں اپوزیشن لیڈر محمد شہباز شریف پاکستان پیپلز پارٹی کے سربراہ بلاول بھٹو زرداری ایم ایم اے کے پارلیمانی رہنما مولانا اسعد محمود بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر مینگل امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما امیر حیدر خان ہوتی سینیٹر شیری رحمان نیشنل پارٹی کے سربراہ سینیٹر میر حاصل بزنجو سینیٹر مولانا عبد الغفور حیدری پختونخوا ملی عوامی پارٹی کے رہنما سینیٹر عثمان خان کاکڑ اور دیگر شامل ہیں ۔ وزارت دفاع اور دیگر متعلقہ اداروں کو قومی سلامتی کی موجودہ صورتحال پر بریفنگ کی ہدایت کی گئی ہے ۔
وائس آف ایشیا10اگست 2019 خبر نمبر19