Voice of Asia News

پاک ،بھارت مذاکرات بند ، شاید کشمیرکا قرض اتارنے کا وقت آ گیا ،شیخ رشید

 
لاہور ( وائس آف ایشیا)وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت میں مذاکرات کے دروازے بند ہو گئے ، شاید اب ہم پر کشمیر کا قرض اتارنے کا وقت آگیا، بلاول جیل گئے تو تحریک چلاؤں گا، تعویذ کام کر گئے، پہلے ہی کہا تھا صادق سنجرانی جیتیں گے، فواد چودھری سے صلح ہو گئی، وہ میرے بھائی ہیں۔۔لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید احمد نے کہا کہ ‘سمجھوتہ اور تھر ایکسپریس بند کردی گئی ہیں اور جب تک میں وزیر ہوں یہ بند رہیں گی۔انہوں نے بھارت کی ٹرینوں کی بحالی کی درخواست مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اب یہ دونوں ٹرینیں کسی قیمت پر نہیں چلیں گی اور یہ فیصلہ سوچ سمجھ کر کیا ہے۔ انہوں نے مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے بھارت کے یکطرفہ اقدامات پر ایک بار پھر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کے حالیہ اقدامات کے خلاف پوری دنیا سے ردعمل آرہا ہے، سعودی عرب، بحرین، عمان، ملائیشیا نے پاکستان کی حمایت کی ہے جبکہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں ظلم ہو رہا ہے، انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں قوم کو اپنی آنکھیں کھلی رکھنے کی ضرورت ہے، شاید اب ہم پر کشمیر کا قرض اتارنے کا وقت آگیا ہے، پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات کے تمام دروازے بند ہوچکے ہیں ، کشمیریوں نے اپنے خون سے آزادی کی شمع روشن کی ہے، شاید اب کشمیر کا ہم پر قرض اتارنے کا وقت آگیا ہے اور وقت آگیا کہ ثابت کریں کشمیری ہمارے خون کا حصہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ جس نے بھی کشمیر پر غاضبانہ قبضہ کرکے شملہ معاہدہ ختم کیا اس کو قیمت چکانا پڑے گی، بھارت کے غلط فیصلے سے سرینگر اس کے لیے قبرستان بن جائے گا، آج مودی دنیا میں ہٹلر کی کاپی ہے اور وقت ثابت کرے گا کہ مودی نے سیاسی خودکشی کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر پر جتنا کشمیریوں کا حق ہے اتنا ہی پاکستانیوں کا بھی ہے، پاکستان کے طالبِ علموں سے اپیل کرتا ہوں کہ عید کے بعد کشمیریوں کے لیے سڑکوں پر نکلیں۔حکومت اور فوج کے درمیان تعلقات سے متعلق انہوں نے کہا کہ عمران خان اور آرمی چیف ایک ہی گاڑی کے دو پہیے ہیں، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ صلح پسند انسان ہیں لیکن اگر جنگ مسلط کی گئی تو یہ آخری جنگ ہوگی۔اپنے اور وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کے درمیان معاملات کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ فواد چوہدری سے صلح ہوگئی، کوئی جلے نہ، ان سے بھائی اور دوستوں والا تعلق ہے جبکہ فردوس عاشق اعوان کو پریس کانفرنس میں اس کا ذکر نہیں کرنا چاہیے تھا۔ انہوں نے مریم نواز کی گرفتاری سے متعلق انہوں نے کہا کہ چوہدری شوگر ملز کا کیس عمران خان کے نہیں پیپلز پارٹی کے دور میں شروع ہوا، ڈاکو اور چور چاہتے ہیں کہ پیسے تھرڈ پارٹی دے لیکن ان ذکر نہ آئے، جبکہ (ن)لیگ اور پیپلز پارٹی میں ریلیف ملنے کے لیے مقابلہ ہے۔انہوں نے کہا کہ بلاول جیل گئے تو تحریک چلاؤں گا، تعویذ کام کر گئے، پہلے ہی کہا تھا صادق سنجرانی جیتیں گے۔حافظ سعید کیس سے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ حافظ سعید کا کیس عدالت میں ہے، اس پرتبصرہ نہیں کروں گا۔
وائس آف ایشیا10اگست 2019 خبر نمبر38

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •