Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت میں تبدیلی سے بھارت نے اپنے بکھرنے کی بنیاد رکھ دی ہے

 
باغ(وائس آف ایشیا )مقبوضہ کشمیر کے عوام پر ہونے والے ظلم وستم اور مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت ختم کرنے کی ہم شدید مذمت کرتے ہیں اس ظلم و تشدد سے انڈیا نے اپنے بکھرنے کی بنیاد رکھ دی ہے۔ جمعیت علماء اسلام تقسیم کشمیر کے کسی ایجنڈے کو تسلیم نہیں کرتی ۔ ان خیالا ت کا اظہارحضرت مولاناعطاء الرحمن سابق امیدوار اسمبلی ومرکزی امیرضلع باغ جمعیت علماء اسلام ،حضرت مولاناتیمور نائب امیرجمعیت علماء اسلام ضلع باغ ،اورقاری اشرف علی مرکزی سیکرٹری جنرل جمعیت علماء اسلام نے ریڑہ جامع مسجد میں خطاب جمعہ کے دوران کیا۔اس موقع پر انھوں نے پاکستان اور امت مسلمہ پر زور دے کر کہا کہ پاکستان اور امت مسلمہ ، اس تشدد کو رکوائے اور مسلۂ کشمیر کے حل کے لیے جاندار کردار ادا کرے۔ انھوں نے مزید کہا کہ مسلۂ کشمیر کے حوالہ سے دھرے کردار بے نقاب ہو نے چاہیے۔ امریکی ثالثی کی پیشکش کے فوراً بعد بھارت کا اقدام کیا معنی رکھتا ہے۔ قوم اس حوالہ سے سخت تشویش کا شکا رہے۔ امت مسلمہ اپنے مسائل کے حل کے لیے غیروں کے دروازوں پر دستک دینے کے بجائے اتحاد و یکجہتی سے اپنی مرکزی حیثیت تسلیم کروائے ۔ جمعیت علمائے اسلام نے قوم کے خلا ف ہونے والی سازشوں کو ہمیشہ بے نقاب کیا ہے ۔ آج بھی جمعیت علمائے اسلام کا موقف واضح ہے کہ یہ سازش ہوئی ہے۔ جمعیت علمائے اسلام 19ستمبر کو مظفرآباد میں ہونے والے کانفرنس آزاد ی مارچ میں قوم کو لائحہ عمل دے گی۔ انھوں نے اس توقع کا اظہار کرتے ہوئے تمام پارٹیوں کو شرکت کی دعوت دی کہ یہ آزادی مارچ حقیقی معنوں میں کشمیر کی آزاد ی کی نوید بنے گا۔ مولانا فضل الرحمن کا مظفرآباد تشریف لانا ہم سب کے لیے نیک شگون ہے۔ جمعیت علمائے اسلام کے کارکنان آزادی مارچ کی دعوت گھر گھر پہنچائیں۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •