Voice of Asia News

ٹرمپ ایران سے مذاکرات کیلئے تیار دباؤ میں کمی نہیں آئیگی،امریکی اعلیٰ لیفٹیننٹ

 
واشنگٹن( وائس آف ایشیا )ڈونلڈ ٹرمپ کے 2 اعلی لیفٹننٹ کا کہنا ہے کہ وہ اپنے ایرانی ہم منصب سے غیر مشروط ملاقات کے لیے تیار ہیں جبکہ تہران پر دبا میں کمی نہیں آئے گی۔واضح رہے کہ امریکی صدر نے اس سے قبل قومی سلامتی کے مشیر جون بولٹن کو برطرف کیا تھا جو ایران کے حوالے سے سخت موقف رکھتے تھے۔ان کی برطرف پر قیاس آرائیاں کی جارہی تھیں کہ ڈونلڈ ٹرمپ ایران کے ساتھ اپنے رویے میں نرمی کریں گے تاہم دوسری جانب سیکریٹری آف اسٹیٹ مائیک پومپیو نے اسرائیل کی حمایت کرتے ہوئے بیان دیا تھا کہ تہران کی جانب سے ممکنہ غیر اعلانیہ جوہری سرگرمیاں جاری ہیں جبکہ امریکی انتظامیہ نے ایران سے منسلک تنظیم کے چند رہنماں کو دہشت گردوں کی فہرست میں بھی شامل کرلیا ہے۔ سیاسی ماحول دھندلا ہونے کے باوجود ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھیوں نے اشارہ دیا ہے کہ وہ ایرانی صدر حسن روحانی سے ملاقات کے لیے تیار ہیں۔خیال رہے کہ 2015 کے تہران کے ساتھ جوہری معاہدے، جسے ڈونلڈ ٹرمپ نے منسوخ کردیا تھا، کو برقرار رکھنے کے لیے فرانسیسی صدر بھی ڈونلڈ ٹرمپ کی ایرانی صدر سے ملاقات کرانے کی پیشکش کرچکے ہیں۔ڈونلڈ ٹرمپ کے سیکریٹری اسٹیون نیوچن نے ایران کی جانب سے یورینیئم کی افزائش بڑھانے کے اعلان کے چند دن بعد ہی بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ ‘صدر نے واضح کردیا ہے کہ وہ غیر مشروط ملاقات کے لیے تیار ہیں تاہم ہم ایران پر دبا برقرار رکھیں گے’۔وائیک ہاس میں ان کے ہمراہ کھڑے مائیک پومپیو نے نیو یارک میں اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی کے اجلاس کے دوران ٹرمہ اور حسن روحانی کی ملاقات کے حوالے سے سوال کے جواب میں کہا کہ کہ ‘بالکل’۔یہ ریمارکس ایسے وقت میں سامنے آئے جبکہ 90 منٹ قبل ہی ڈونلڈ ٹرمپ نے اعلان کیا تھا کہ انہوں نے جون بولٹن کو برطرف کردیا ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •