Voice of Asia News

نئی دلی: طلباء کا دفعہ 370کی منسوخی اورمقبوضہ کشمیر میں مسلسل پابندیوں کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

نئی دلی(وائس آف ایشیا)نئی دلی میں سینکڑوں طلباء نے بھارتی حکومت کی طرف سے دفعہ 370کی منسوخی اور کشمیر کے مسلسل فوجی محاصرے کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق طلباء نے نئی دلی کے جنتر منتر میں کشمیر کے موجودہ ابتر حالات کی عکاسی کرنے والا ایک ڈھانچہ تعمیر کیا جس کی شکل جیل خانے جیسی تھی اور وہاں احتجاج کیا۔ انہوں نے بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر ’’جمہوریت کی موت‘‘ اور’’ ہم کشمیریوں کے ساتھ ہیں‘‘جیسے نعرے درج تھے ۔ احتجاجی طلباء نے اس موقع پر ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ ایک ماہ سے زائد عرصے سے جاری محاصرے، کرفیو ، پابندیوں اور ذرائع ابلاغ کی معطلی پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت یہ دعویٰ کررہی ہے کہ کشمیر میں حالات معمول پر آرہے ہیں جو بالکل غلط ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلسل محاصرے اور پابندیوں کے باعث کشمیر میں اودیات اور دیگر ضروریات زندگی کی شدید قلت پیدا ہو چکی ہے۔ طلباء نے کہا کہ حکومت کشمیر یوں کو آزادی کا جو تصور دے رہی ہے وہ پوری طرح سے غلط ہے۔جامعہ ملیہ نئی دلی کے ایک طالب علم فائق کا کہنا تھا کہ وہ ناانصافی کے خلا ف احتجاج کر رہے ہیں لیکن حکومت کوئی بات سننے کیلئے تیار نہیں ۔ طالب علم نے کہا کہ جمہوریت کسی ایک شخص کی طرف سے عوام پر فیصلے لاد دینے کا نام نہیں اُسے شہریوں کو اپنی بات کرنے کا موقع تو دینا چاہیے۔
وائس آف ایشیا12ستمبر 2019 خبر نمبر125

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •