Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیرمیں مسلسل کرفیو کا سلسلہ چالیسویں روزمیں داخل ہوگیاہے زندگی مفلوج

سری نگر(وائس آف ایشیا)مقبوضہ کشمیرمیں مسلسل کرفیو کا سلسلہ چالیسویں روزمیں داخل ہوگیاہے جس کے باعث معمولات زندگی مفلوج ہوگئے ہیں سکول، بازار، کاروبار اورذرائع آمدورفت بند ہیں۔پانچ اگست سے بھارت کی طرف سے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے فیصلے کے بعد پورے کشمیرمیں موبائل فون، انٹرنیٹ سروس اور ٹی وی چینلزسمیت ذرائع مواصلات بند ہیں۔کرفیو اورمواصلاتی بندش سے ہرمذہب، عمراورعقیدے کے تمام شہری بلاامتیازمتاثر ہوئے ہیں۔وہ خوراک ،دودھ ،زندگی بچانے والی ادویات اوردوسری ضروریات زندگی کی قلت کاسامنا کررہے ہیں ۔ ڈاکٹروں کے مطابق صورہ ہسپتال سری نگرمیں روزانہ چھ سے زیادہ مریض لاک ڈان کی وجہ سے شہیدہوجاتے ہیں۔ادھرقابض حکام نے گزشتہ مہینے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے بعد سے اب تک تقریبا چارہزارافرادکوگرفتارکیاہے۔ دوسابق وزرائے اعلی سمیت دوسوسے زائدسیاستدانوں اور مختلف سیاسی گروپوں کے سوسے زائد رہنماؤں کو گرفتا رکیاگیا تاہم یہ واضح نہیں ہوسکا کہ ان افراد کو کن وجوہات کی بنا پرحراست میں لیاگیا۔
وائس آف ایشیا13ستمبر 2019 خبر نمبر1

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •