Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر میں حالیہ برفباری نے صنعت سے وابستہ دیگر افراد کی کمر توڑ دی

 
جموں(و ائس آف ایشیا)مقبوضہ کشمیر میں حالیہ برفباری نے باغ مالکان اور اس صنعت سے وابستہ دیگر افراد کی کمر توڑ کر رکھ دی ہے۔مقبوضہ وادی کے بیشتر اضلاع میں برفباری سے جہاں پیڑوں پر موجود پھل ضائع ہوا ہے وہیں پھل دار درختوں کو بھی کافی نقصان ہوا ہے۔ بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب ہونے والی برفباری سے جنوب و شمال میں پھلدار درختوں کو کافی نقصان پہنچا ہے، جس کی وجہ سے مالکان کی پریشانیوں میں بھی کافی اضافہ ہوا ہے۔ضلع بارہمولہ سے تعلق رکھنے والے ایک باغ مالک رشید نے کہا ہے کہ وہ غیر متوقع برفباری سے بے خبر تھے۔جنوبی ضلع شوپیاں میں سیب کے درخت یا تو برفباری سے اکھڑ گئے یا انکی شاخیں ہی ٹوٹ گئیں، جس کی وجہ سے کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے۔باغبانی صنعت کشمیر کی معیشت کے لیے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے۔ القمرآن لائن کے مطابق تقریبا 7 لاکھ افراد کا روزگار اس صنعت سے وابستہ ہے، لیکن دفعہ 370 کی منسوخی کے اور ریاست کی تقسیم کاری کے بعد سے ہی غیر یقینی صورتحال بنی ہوئی ہے۔اس غیر یقینی صوتحال میں تجارتی سرگرمیاں نہ ہونے کے باعث مقبوضہ وادی کی معیشت بری طرح متاثر ہو ئی ہے۔
وائس آف ایشیا08نومبر2019 خبر نمبر35

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •