Voice of Asia News

کرتار پور کے بارے میں پاکستانی پروپیگنڈا کا مقابلہ کیا جائے گا: بھارت کی ہرزہ سرائی

نئی دہلی (و ائس آف ایشیا)پاکستان نے سکھ یاتریوں کے لئے کرتارپور راہداری کھولنے کے جو اقدامات کئے ہیں، بھارت اس پر بوکھلا گیا ہے۔اور پاکستانی مذہبی رواداری کے اقدامات کو پروپیگنڈہ اور دہشت گردی سے تعبیر کررہا ہے۔ بھارت نے کرتار پور راہداری سے متعلق اپنی سرکاری ویڈیو میں خالصستانی رہنما جرنیل سنگھ بھنڈرانوالے کی تصاویر کو استعمال کرنے پر پاکستان پر اعتراض کیا ہے اور زور دیا ہے کہ وہ راہداری کی آڑمیں پنجاب میں دہشت گردی کی بحالی کے مقصد کے تمام پروپیگنڈے کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار ہے۔ساتھ ایشین وائر کے مطابق ایک عہدیدار نے بتایا کہ بھارت پاکستانی پروپیگنڈے کا مقابلہ کرنے کے لئے اقدامات کر رہا ہے۔ عہدیدار نے بتایا کہ ہم ایک ایسی ریاست کے ساتھ مقابلہ کر رہے ہیں جس میں پروپیگنڈہ کی ایک بہت بڑی مشینری موجود ہے۔ ایک اور عہدیدار نے مزید کہا کہ اس راہداری کوپنجاب میں دہشت گردی کی بحالی کے لئے استعمال کرنے کا منصوبہ پاک فوج نے عمران خان کے حلف برداری سے قبل ہی تشکیل دیا تھی۔ساتھ ایشین وائر کے مطابق پاکستانی ویڈیو پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ، وزیراعلی پنجاب امریندر سنگھ نے کہاکہ اس کے پیچھے آئی ایس آئی اور پاکستان کا منفی ایجنڈا ہے۔ ہمیں بہت محتاط رہنا چاہئے۔پاکستان کی طرف سے جاری کی گئی یہ ویڈیو ، 9 نومبر کے پروگرام کا پیش خیمہ ہے جو ناظرین کو گوردوارہ دربار صاحب کرتار پور آنے والے زائرین کی مدد کے لئے تیار کی گئی سہولیات کے بارے میں آگاہ کرتی ہے۔کرتار پور گوردوارہ تک بھارتی سکھوں کو ویزا فری رسائی فراہم کرنے والی کرتار پور راہداری کا افتتاح ہفتہ کو ہوگا۔یہ راہداری 12 نومبر کو سکھ مذہب کے بانی ، گرو نانک کی 550 ویں یوم پیدائش پر شروع کی جا رہی ہے۔
وائس آف ایشیا08نومبر2019 خبر نمبر39

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •