Voice of Asia News

ریاست کا خصوصی درجہ منسوخ کرنا غیر جمہوری،بھارت بنگلہ دیش ,بی بی پی

سرینگر(وائس آف ایشیا ) مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے اور ریاست کو مرکز کے زیر انتظام لانے پر بھارت، بنگلہ دیش، پاکستان پیپلز فورم نے سخت ردعمل ظاہر کیا ہے۔فورم کی ریاستی سیکرٹری محترمہ امرت ورشا نے رام بن میں میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا دفعہ 370 اور 35 اے کو غیر جمہوری طریقہ سے منسوخ کر دیا گیا جو غیر قانونی ہے۔انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر میں پچھلے سو دنوں سے غیر اعلانیہ ہڑتال اور پابندیاں عائد ہیں جن کی وجہ سے اقتصادیات تباہ ہوگئی ہے۔ساتھ ایشین وائر کے مطابق انہوں نے کہا کہ حکومت نے ریاست کو مرکزی زیر انتظام علاقہ بنا کر مقامی لوگوں کے ساتھ ناانصافی کی ہے۔ بی بی پی انہوں نے تشویش ظاہر کی کہ ریاست کا خصوصی درجہ ختم کرنے سے یہاں بے روزگاری بڑھ جائے گی۔انہوں نے کہا ملک کی کئی ریاستیں ایسی ہیں جہاں لوگوں کے پاس رہنے کے لیے گھر نہیں ہے اور وہاں کے لوگ کھلے آسمان تلے زندگی بسر کرنے پر مجبور ہیں۔ لیکن اس کے مقابلے میں مقبوضہ جموں کشمیر کی صورتحال بہتر ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ مذکورہ فورم 26 نومبر کو جموں و کشمیر کے مختلف جگہوں پر پرامن احتجاج کر کے ریاست کو خصوصی درجہ واپس دینے، سیاسی جماعتوں کے رہنماں کو رہا کرنے اور ریاست میں انٹرنیٹ سروس کی بحالی کے لئے آواز بلند کرے گا۔
وائس آف ایشیا14نومبر2019 خبر نمبر15

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •