Voice of Asia News

حکومتی اداروں کے درمیان بھی طاقت کی لڑائی جاری ہے، شہزاد اکبر

 
اسلام آباد(وائس آف ایشیا )وزیراعظم کے معاون خصوصی شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ حکومتی اداروں کے درمیان بھی طاقت کی لڑائی جاری ہے۔بدھ کو یہاں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ معلومات تک رسائی ہر شہری کا بنیادی حق ہے، پاکستان میں قانون سازی ہوتی ہے لیکن عمل نہیں ہوتا، نئی قانون سازی سے زیادہ پہلے سے موجود قوانین پرعمل کرنے کی ضرورت ہے۔شہزاد اکبر نے کہا کہ حکومتی اداروں کے درمیان بھی طاقت کی لڑائی جاری ہے، ادارے ایک دوسرے کیساتھ معلومات تک رسائی میں تعاون نہیں کرتے، کہا جاتا ہے کہ سرکاری اداروں کے افسران کی تنخواہیں پبلک ہونی چاہئیں، کوئی ملک ایسا نہیں جو سرکاری افسران کی تنخواہیں ظاہر کرے۔انہوں نے کہاکہ دنیا میں کوئی ملک ایسا نہیں جو سرکاری افسران کی تنخواہوں کی تفصیلات عام کرے۔شہزاد اکبر نے کہا کہ آج کے دور کی حکومت کا رویہ حاکمانہ نہیں ہو سکتا، معلومات تک رسائی ہر شہری کا بنیادی حق ہے۔انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا کے ذریعے حکومتی فیصلوں پر رد عمل فوری آ جاتا ہے ، آج تمام سیاسی جماعتوں کو اس کی طاقت کا اندازہ ہے۔کوئی چاہے بھی تو عوام سے حقائق چھپا نہیں سکتا۔انہوں نے کہاکہ سٹیزن پورٹل کے ذریعے عام شہری کو وزیر اعظم آفس تک رسائی حاصل ہے،کوئی افسر شہریوں کے مسائل حل نہیں کرتا تو یہ اس کیلئے پریشان کن ہے۔انہوں نے کہا کہ شہریوں کے مسائل حل نہ کرنے والے افسران کی کارکردتی رپورٹ خراب ہوتی ہے، کابینہ اجلاس میں ہونے والے فیصلوں کو پبلک کیا جاتا ہے۔
وائس آف ایشیا4 0دسمبر2019 خبر نمبر152

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •