Voice of Asia News

مجھے سنا نہیں جارہا، میرے ساتھ زیادتی ہورہی ہے، پرویز مشرف

 
دبئی (وائس آف ایشیا )پاکستان کے سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف نے کہا ہے کہ وہ اپنے خلاف سنگین غداری کیس میں بیان ریکارڈ کروانے کیلئے تیار ہیں۔دبئی کے ہسپتال میں زیرعلاج پرویز مشرف نے ہسپتال کے بیڈ سے ایک ویڈیو پیغام میں کہا کہ میری طبیعت شروع سے بہت خراب ہے اور میں ہسپتال میں آتا، جاتا رہا ہوں اور ڈاکٹر کے حوالے رہا ہوں اور میری یہی حالت ہے کہ صبح مجھے اٹھا کر یہاں لایا گیا ہے۔اپنے کیس پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ کیس میری نظر میں بالکل بے بنیاد ہے، غداری چھوڑیں میں نے اس ملک کیلئے جنگیں لڑی ہیں اور 10 سال ملک کی خدمت کی ہے۔پرویز مشرف نے کہاکہ اس کیس میں میری سنوائی نہیں ہورہی، صرف یہی نہیں کہ میری سنوائی نہیں ہورہی بلکہ میرے وکیل سلمان صفدر کو بھی نہیں سن رہے، میری نظر میں بہت زیادتی ہورہی ہے اور انصاف کا تقاضہ پورا نہیں کیا جارہا۔ویڈیو پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ جو کمیشن بنی ہے وہ یہاں آئیں میں انہیں بیان دینے کیلئے تیار ہوں لیکن وہ یہاں آئیں مجھے سنیں اور دیکھیں کہ میری طبیعت کیسی ہے۔انہوں نے کہاکہ کم از کم کمیشن کی بات کو اور میرے وکیل کی بات کو عدالت میں سنا جائے، امید ہے کہ مجھے انصاف ملے گا۔
وائس آف ایشیا4 0دسمبر2019 خبر نمبر153aa

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •