بھارتی شہر حیدرآباد 15 سالہ بچی سے دادا اور چچا کی زیادتی

حیدرآباد(وائس آف ایشیا) بھارتی شہر حیدرآباد میں ایک اور دل دہلا دینے والا واقع پیش آیا ہے جس میں ایک 15 سالہ بچی کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ لڑکی کو بدفعلی کا نشانہ اس کے اپنے دادا اور چچا کی جانب سے بنایا گیا۔تفصیلات کے مطابق بچی اپنے دادا اور چچا کے ساتھ رہتی تھی جہاں اسے زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور دھمکی بھی دی گئی جس میں انہوں نے اسے اس بات کا ذکر کسی سے بھی کرنے سے منع کیاتھا۔پہلے تو بچی نے کسی کو نہیں بتایا، لیکن بعد میں اس نے ہمت کر کے اپنے والدین کو سارا واقع بتا دیا جس پر والدین کی جانب سے فوری پولیس کو اطلاع کی گئی۔ پولیس نے فوری کارروآئی کرتے ہوئے مقدمہ درج کیا اور ملزمان کو گرفتار کر لیا۔ یاد رہے کہ کچھ دن قبل بھی بھارتی شہر حیدرآباد میں ایک ایسا ہی واقع پیش آیا تھا جس میں ایک ماڈل گرل کو زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا اور اسے زیادتی کا نشانہ کسی اور نے نہیں بلکہ اسی ہاسٹل کے مالک کے بیٹے نے بنایا تھا جس ہاسٹل میں لڑکی رہتی تھی۔بعد میں لڑکے کی جانب سے شادی کی پیشکش کی گئی لیکن لڑکی نے پیشکش کو ٹھکراتے ہوئے پولیس کو اطلاع کی تھی اور پولیس نے ملزم کو گرفتار کر لیا تھا۔اب اس واقع میں بھی دادا اور انکل کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور ان کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا گیا ہے۔ابتدائی میڈیکل رپورٹس کے مطابق بتایاگیا ہے کہ بچی کو بار بار زیادتی کو نشانہ بنایا گیا ہے۔پولیس نے والدین کو یقین دلوایا ہے کہ وہ ملزمان کو سزا دلوا کر رہیں گے دوسری جانب سے عدالت کی جانب سے دونوں ملزمان کو جوڈیشل عدالت میں بھیج دیا گیا ہے جہاں ان کے کیس کی سماعت کی جائے گی۔یاد رہے کہ بچی اپنے دادا اور انکل کے ساتھ رہتی تھی جہاں اسے بار بار مبینہ زیادتی کا نشانہ بنایا گیا اور دھمکی دی گئی کہ وہ یہ بات کسی کو نہ بتائے۔
وائس آف ایشیا4فروری2020 خبر نمبر61