Voice of Asia News

سعودی خواتین کے لیے موٹر سائیکل رائیڈنگ انسٹیٹیوٹ قائم

ریاض(وائس آف ایشیا) سعودی عرب کی سڑکوں پر خواتین ڈرائیور اگرچہ عام بات ہوچکی ہے لیکن موٹرسائیکل سوارخواتین شاذ و نادر ہی دکھائی دیتی ہیں۔عرب نیوز کے مطابق ریاض میں قائم بائیکرز اسکل انسٹی ٹیوٹ میں مقیم یوکرین کی تجربہ کار انسٹرکٹر ایلینا بکریویا سعودی عرب میں خواتین بائیکرز کے لیے واحد ٹرینر ہیں۔یہ سعودی عرب کا پہلا ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ ہے۔یہاں پرموٹرسائیکل چلانے کا شوق رکھنے والے مردوں کے ساتھ ساتھ خواتین کے لیے بھی موٹرسائیکل چلانے کی تربیت کا آغاز کیا گیا ہے۔ابتدائی طور پر جو خصوصی کورسز سکھائے جا رہے ہیں ان میں بیسک موٹرسائیکل رائڈنگ، اسمارٹ رائڈنگ، ٹاپ گن موٹوجم خانہ جیسے پروگرام شامل ہیں۔آف روڈ ٹریننگ اور چلڈرن موٹرسائیکل سکولوں کے کورسز بھی کرائے جا رہے ہیں جن کی فیس 750 ریال سے ڈیڑھ ہزار ریال تک ہے۔انسٹیٹیوٹ میں اس وقت موٹرسائیکل رائیڈنگ کی ٹریننگ کے لیے مختلف ممالک کی 43 خواتین بائیکر میں 20 سعودی خواتین کے علاوہ مصر، لبنان اور برطانوی خواتین ہیں۔
وائس آف ایشیا4فروری2020 خبر نمبر45

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •