Voice of Asia News

پی این ایس راہنورد کا کشمیر سے اظہاریکجہتی کے لیے سمندر کا مختصر دورہ

کراچی (وائس آف ایشیا) پاکستان نیوی کے واحدبادبانی جہاز پی این ایس راہنورد نے کشمیری جھنڈوں اور کشمیر کے متعلق پوسٹرز آویزاں کر کے سمندرکا ایک مختصر دورہ کیا۔ اس کروز کا مقصد کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی اور ان کی جدوجہد ِ آزادی کے لیے اپنے بھرپور تعاون کا اظہار تھا۔اس موقع پر پاکستان نیوی کے بینڈ کے ہمراہ بحریہ کالج کراچی کے طلباء نے کشمیر کی آزادی کے حوالے سے گیت گاتے ہوئے جہاز کو الوداع کیا۔سمندر سے گزرتے ہوئے بندرگاہ میں موجود پاک بحریہ کے دیگر جہازوں نے بھی کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے نعرے بلند کئے اور کشمیر کا پرچم لہرایا۔ اکیسویں آگزلری(Auxillary ) اسکواڈرن کے کمانڈر کیپٹن شاہد رفیق نے بحری سفارت کاری کے ذریعے مسئلہ کشمیر کو قومی اور بین الاقوامی سطح پر اجاگر کرنے کے حوالے سے پاک بحریہ کی کاوشوں کے بارے میں میڈیا نمائندگان کو آگاہ کیا۔انہوں نے حاضرین کو آگاہ کیا کہ چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی مختلف مواقع پر مسئلہ کشمیر کے بارے میں پاکستان کے مو قف کو اجاگر کررہے ہیں۔ مختلف مواقع پر نیول چیف نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ پاکستان اخلاقی ، سفارتی اور قانونی بنیادوں پر کشمیریوں کی جدوجہد کی حمایت کرے گا اور اقوام عالم کی جانب سے کشمیریوں کے حق خودارادیت کی حمایت کی ضرورت پر زوردیا۔کیپٹن شاہد نے وضاحت کی کہ دنیا بھر میں بحری افواج نے اپنے بحری اثاثوں کی مدد سے قوام عالم تک سفارتی رسائی کو بڑھانے اور موثر بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ پاک بحریہ پورٹ کالزکے دوران اپنے جہازوں پر پوسٹرز اور بینرز آویزاں کر کے بھی مسئلہ کشمیر کو اجاگر کررہی ہے۔ مزید برآں غیر ملکی بندرگاہوں پر قیام کے دوران پمفلٹ اور بروشر ز بھی تقسیم کیے جارہے ہیں۔ان کاوشوں کا مقصد مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کو اجاگر کرنا اور کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی حمایت کرنا ہے۔اس تقریب کا مقصد اس حقیقت کا اظہار کرنا تھا کہ پاک بحریہ کشمیری عوام کی جدوجہد میں ان کے سا تھ کھڑی ہے اور اس ضمن میں اپنی ذمہ داریوں کو بخوبی نبھا رہی ہے۔ پاک بحریہ کے افسران اور جوان اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں اور پاکستان بحریہ حکومتی پالیسیوں کے مطابق کشمیری بھائیوں اور بہنوں کو بھارتی غاصبانہ قبضے سے آزادی دلانے کے لئے کسی بھی حد تک جانے کے لئے پرعزم اور تیار ہے۔
وائس آف ایشیا4فروری2020 خبر نمبر53

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •