Voice of Asia News

کورونا وائرس کی وبا، دنیا میں ماسک اور ذاتی تحفظ کے آلات کم پڑ گئے

جنیوا (وائس آف ایشیا)عالمی ادارہ صحت ( ڈبلیوایچ او)کے سربراہ نے خبردار کیا ہے کہ چین سے پھیلنے والے مہلک کرونا وائرس سے تحفظ کے لیے ماسک اور دوسرے آلات کم پڑ گئے ۔ جنیوا میں ڈبلیو ایچ او کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں بتایا ہے کہ اس وقت دنیا کو ذاتی تحفظ کے آلات(پی پی ای) کی کمی کا سامنا ہے۔انھوں نے صحافیوں کو بتایا کہ بعض اشیا کی قیمتیں معمول سے سو گنا زیادہ ہیں لیکن چہرے کے ماسک کے نامناسب استعمال کی وجہ سے مسئلہ سنگین صورت اختیار کرتا جارہا ہے کیونکہ ان کے بقول ایسے لوگ بھی ماسک پہن رہے ہیں جو بیمار ہیں اور نہ ہی طبی عملہ سے تعلق رکھتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ سٹاک میں پڑے ماسک ختم ہوچکے ہیں۔اب عالمی سطح پر ماسک اور نظام تنفس سے متعلق آلات ڈبلیو ایچ او اور اس کے شراکت داروں کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ناکافی ہوچکے ہیں۔انھوں نے خبردار کیا ہے کہ ان ممالک اور علاقوں میں ان آلات کا ذخیرہ نہ کیا جائے جہاں وائرس پھیلنے کی شرح بہت تھوڑی ہے۔
وائس آف ایشیا8فروری2020 خبر نمبر30

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے