Voice of Asia News

دْبئی: لفٹ میں ننھی بچی کو جنسی ہراسگی کا نشانہ بنانے پر بھارتی نوجوان گرفتار

دْبئی (وائس آف ایشیا) دْبئی پولیس نے ایک سْپر سٹور کے ملازم کو 10 سالہ بچی کو جنسی ہراسگی کا نشانہ بنانے پر گرفتار کر لیا ہے۔ گرفتار ملزم کی عمر 23 سال جبکہ تعلق بھارت سے ہے۔ ملزم پر 10 سالہ کینیائی بچی سے غلیظ جنسی حرکات کرنے کا الزام ہے۔ اس مقدمے کی سماعت کے دوران بچی کی والدہ نے بتایا کہ’’وقوعہ کے روز میں نے اپنی بچی سے کہا کہ وہ ہماری رہائشی بلڈنگ میں موجود سْپر اسٹور سے ڈبل روٹی خرید لائے۔یہ صبح 10 بجے کا وقت تھا۔ جب بچی بریڈ خرید کر واپس آئی تو وہ خوف کے مارے تھرتھر کانپ رہی تھی۔ جب میں نے اْس سے پوچھا کہ کیا ہوا ہے تو وہ کہنے لگی کہ پولیس کو بْلا لو۔ میرے اصرار پر بچی نے بتایا کہ وہ ڈبل روٹی خرید کرسٹور سے واپس آ رہی تھی تو بھارتی ملازم نے کہا کہ وہ تھوڑی دیر رْک جائے اوراس کے ساتھ ہی واپس اپنے فلیٹ پر جائے۔یہ بھارتی ملازم بھی اسی بلڈنگ کے ایک فلیٹ میں رہائش پذیر تھا۔بچی سٹور سے نکل کر لفٹ کی جانب بڑھی تو اسی دوران بھارتی ملزم نے اْس کے انتہائی پاس آ کر اس کے ساتھ جسمانی چھیڑ چھاڑ کی اور اسے شیطانی نگاہوں سے بھی گھورتا رہا۔ جب بچی نے چیخ مارنے کی کوشش کی تو شرم ملزم نے اْس کے منہ پر ہاتھ رکھ دِیا۔ اس واقعے سے بچی بہت زیادہ خوف زدہ ہو گئی۔ اس دوران آس پاس کوئی بھی نہیں تھا۔ جب لفٹ کا دروازہ کھْلا تو ملزم واپس سٹور چلا گیا اور جنسی ہراسگی کا شکار بچی واپس اپنے فلیٹ پر آ گئی اور ساری بات اپنی والدہ کو بتا دی۔والدہ کی جانب سے اس واقعے کی رپورٹ القصیص پولیس اسٹیشن میں درج کرا دی گئی۔ عمارت میں نصب سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج چیک کی گئی تو اس میں بھارتی نوجوان کو لفٹ تک بچی کا پیچھا کرتے دیکھا گیا۔ جس کے بعد ملزم کو گرفتار کر لیا گیا۔ اس مقدمے کا فیصلہ 20 فروری 2020ء کو سْنایا جائے گا۔
وائس آف ایشیا11 فروری2020 خبر نمبر58

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •