Breaking News
Voice of Asia News

محکمہ صحت کے افسران نے اپنی نااہلی چھپانے کی خاطرماتحت عملہ کی ’’بللی‘‘چڑھادی

 
گریڈ20 میں ترقی پانے والی میڈموں میں تسلیم کوثر ،میڈم نسرین بٹ،
میڈم تسنیم کوثر کے آرڈرزمحکمہ کی جانب سے 3-2-20 کوجاری کئے گئے ،جبکہ17فروری کودوسرے دوبارہ آرڈرز جاری کئے گئے
PSB کااجلاس اکتوبر کے مہینے میں ہوا تھا اور 4میڈموں کو گریڈ 20 میں پرموٹ کرنے کا فیصلہ کیا گیا
مگر ہیلتھ ڈیپارئمنٹ کی نااہلی کی وجہ سے ان چاروں کا نوٹیفکیشن چار ماہ بعد جنگی بنیادوں پر کیا گیا
3 میڈموں کو گیپ پریڈ کے مسئلہ میں الجھا دیا گیا ہیلتھ ڈیپارئمنٹ کے افسران سے رابطہ کیا گیا توانہوں نے کہا کہ یہ بہت بڑی غلطی ہے جوکوئی بھی اس کا قصوروار ہوا تواس کوقرارواقعی سزادی جائے گئی
NC-1 کے اسسٹنٹ مختار کانام لیا کہ ہمارے ادارے کے کلرک نے اس سے آرڈرز لیا تھا اس پر مختار کو NC-1 سیکشن سے فارغ کردیا گیا اور اس پر پیڈا ایکٹ کے تحت انکوائری شروع کردی گئی
لاہور(وائس آف ایشیا کی رپورٹ) محکمہ صحت کی پھرتیاں، یاچمک کا کمال، آفیشنل آرڈر سے 13 روز پہلے ہی گریڈ20 کی میڈموں نے نئی سیٹوں پر جوائنگ دیدی، محکمہ صحت کے اعلیٰ افسران نے اپنے چھوٹے افسران کو بچانے کے لیے ماتحت ملازمین کی (بللی) چڑھادیا، تفصیلات کے مطابق معلوم ہواہے کہ محکمہ صحت سپلائزڈ ہیلتھ کی جانب سے گریڈ 20کی سیٹوں کے لیے ایک تحریری آرڈر3-2-2020 کو نکالا گیا ہیلتھ ڈیپارئمنٹ نے مورخہ3فروری 2020 کو آرڈر نمبریSO(NC-1)10-9-15نے ایک نوٹیفکیشن جاری کیا جس میں وزیراعلی کی منظوری سے تین نرسنگ میڈموں کوگریڈ 19 سے گریڈ20 میں ترقی دی جن میں تسلیم کوثر DCNS چوہدری پرویز الٰہی انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں گریڈ19 سے پرموٹ ہوکر گریڈ 20 میں چیف نرسنگ سپرنٹنڈنٹ میوہسپتال لاہور تعینات کیا گیا، نسرین بٹ ڈپٹی چیف نرسنگ سپرنٹنڈنٹ گریڈ 19 کو پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی لاہور سے گریڈ 20 میں ترقی دیکرسروسزہسپتال لاہور میں تعینات کرنے کے احکامات جاری کئے،تینوں میڈموں نے اپنے متعلقہ انسٹیٹیوٹ سے 4 فروری کو رخصت لیکر 4-2-20 کو نئی جگہوں پر جوائنگ دیدی،17-2-20 کو ہیلتھ ڈیپارئمنٹ کی جانب سے ایک دوبارہ نوٹیفکیشن جاری کیا گیا جس میں 3 فروری کی بجائے 17 فروری کی تاریخ درج کی گئی محکمہ صحت کی اس غفلت کے باعث ان میڈموں کے آرڈرز میں 14 روز کا فرق پڑرہ ہے جسکو دور کرنے کے لئے ہیلتھ ڈیپارئمنٹ نے ان تینوں میڈموں کو ایک دن کا ٹائم دیا ہے کہ آپ14 دن کا گیپ پر یڈ کروانے کے لئے21 فروری تک گیپ پریڈ کی درخواست دیدیں یا درہے کہ گریڈ 20میں PSB کااجلاس اکتوبر کے مہینے میں ہوا تھا اور 4میڈموں کو گریڈ 20 میں پرموٹ کرنے کا فیصلہ کیا گیامگر ہیلتھ ڈیپارئمنٹ کی نااہلی کی وجہ سے ان چاروں کا نوٹیفکیشن چار ماہ بعد جنگی بنیادوں پر کیا گیا مگر اس میں بھی 3 میڈموں کو گیپ پریڈ کے مسئلہ میں الجھا دیا گیا جب ہیلتھ ڈیپارئمنٹ کے افسران سے رابطہ کیا کرکے موقف لیا گیا توانہوں نے کہا کہ یہ بہت بڑی غلطی ہے جوکوئی بھی اس کا قصوروار ہوا تواس کوقرارواقعی سزادی جائے گئی 20 فروری بروز جمعرات 3 میڈموں کو پرسنل ہیرئنگ پر سیکرٹریٹ میں طلب کیاگیا کہ آپ بتائیں کہ آپ کو 3 فروری والے آرڈرز کیس نے دئیے تھے تو انہوں میں سے 2 میڈموں نے NC-1 کے اسسٹنٹ مختار کانام لیا کہ ہمارے ادارے کے کلرک نے اس سے آرڈرز لیا تھا اس پر مختار کو NC-1 سیکشن سے فارغ کردیا گیا اور اس پر پیڈا ایکٹ کے تحت انکوائری شروع کردی گئی،بعض نرسنگ میڈموں سے رابطہ کرنے پر انہوں نے بتایا کہ ہماری ہی کچھ میڈموں نے سیکرٹریٹ کے عملہ کے ساتھ مل کریہ سازش کی ہے تاکہ نسرین بٹ اور تسنیم کوثر جوکہ یکم مارچ اور 2 مارچ کو ریٹائرڈ ہورہی ہیں انکو ذلیل کرنے کی کوشش ہے جبکہ 2 میڈموں کا جوائنگ اور رلیونگ میں 14 دن کا فرق ہوگا تو وہ ریٹائرڈ نہیں ہوسکیں گئیں۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •