Voice of Asia News

مقبوضہ کشمیر، نظر بند کا کورونا وائرس کے پیش نظر فوری رہائی کا مطالبہ

سرینگر (وائس آف ایشیا) مقبوضہ کشمیر میں غیر قانونی طورپر نظر بند افراد کے اہل خانہ سمیت انسانی حقوق کے کارکنوں نے بھارتی جیلوں میں غیر قانونی طور پر نظر بند کشمیریوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق نظر بند افراد کے اہل خانہ نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہر جیل میں گنجائش سے زیادہ قیدیوں کو رکھا گیا ہے اور غیر صحت بخش ماحول کے باعث ان کے پیاروں کا کورونا وائرس سے متاثر ہونے کا خدشہ ہے لہذا انہیں فوری طور پر رہا کرنے کی ضرورت ہے۔بھارتی ریاست اتر پردیس کی ایک جیل میں نظر بند ایک کشمیری نوجوان کی والدہ نے کہا کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے وہ اپنے بیٹے کی سلامتی کے حوالے سے سخت تشویش میں مبتلا ہے اور یہ ایک ماں ہی جانتی ہے کہ بیٹے کی دوری کا دکھ کیا ہوتا ہے۔ایک اور نظر بند کشمیری نوجوان کی والدہ نے کہا کہ کورونا وائرس کے باعث وہ اپنے بیٹے کی سلامتی کے حوالے سے مزید تشویش کا شکار ہو گئی ہے لہذا قابض انتظامیہ ان کے دکھ کو سمجھتے ہوئے ان کے بیٹے سمیت تمام نظر بند وں کو فوری طو ر پر رہا کرے۔انسانی حقوق کے کارکن بھی بھارتی حکومت پر زور دے رہے ہیں کہ وہ کورونا کے پیش نظر بند نظر بند کشمیریوں کو انسانی بنیادوں پر جلد ازجلد رہا کرے۔ یاد رہے کہ بھارتی حکومت نے گزشتہ برس پانچ اگست کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد حریت رہنماؤں او رکارکنوں سمیت ہزاروں کشمیریوں کو غیر قانونی طور پر گرفتار کر کے تھانوں ، جیلوں اور تفتیشی مراکز میں بند کر دیا ہے۔
وائس آف ایشیا،21مارچ2020خبر نمبر 58

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •