Voice of Asia News

چیک ری پبلک کی خاتون اول نے گھرمیں ماسک سینے شروع

 
برسلز (وائس آف ایشیا ) چیک ری پبلک ، سپین، بلغاریہ، جرمنی، ہنگری، لیتھوانیا، اور اٹلی سمیت کئی یورپی ممالک میں خواتین دن رات ماسک سی رہی ہیں۔ یورپی ممالک کو کورونا وائرس نے بری طرح اپنے لپیٹ میں لیا ہوا ہے اور متعدد ممالک میں لاک ڈاؤن جاری ہے۔ ایسے میں ہزاروں خواتین نے گھر، گھر ماسک تیار کرنا شروع کردیئے ہیں اور اب تک لاکھوں ماسک سی کر ہسپتالوں کو فروخت کیے جا چکے ہیں۔فرانس کے خبر رساں ادارے کے مطابق خواتین کی اس کوشش کو سراہتے ہوئے چیک ری پبلک، سپین، بلغاریہ، جرمنی، ہنگری، لیتھوانیا اور اٹلی سمیت کئی ممالک میں ماسک تیار کرنے والی درجنوں کمپنیوں نے بھی دن رات ماسک کی خریداری شروع کر دی ہے جس کے نتیجے میں آرڈرز کی لائن لگ گئی ہے۔پراگ کے فلمی فنکار اور اہم شخصیت یہاں تک کہ چیک کے صدر ویکلیو ہاول کی اہلیہ ڈیگمر ہولووا بھی ماسک تیار کرنے والی خواتین میں شامل ہیں۔مغربی جرمنی کے شہر ایسن کے ایک ہسپتال نے اپنے مریضوں کے لیے کلرکوں سے لے کر مالی تک تمام غیر طبی عملے سے ماسک تیار کروانا شروع کر دیئے ہیں۔دنیا کا سب سے بڑا فیشن گروپ گلیشیا بھی اب ماسک کی تیاری میں پیش پیش ہے۔’اے ایف پی’ کے مطابق یورپی ملک اسپین خطے کا دوسرا سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے جہاں ہفتے تک 1326 افراد کرونا کے ہاتھوں لقمہ اجل بن چکے تھے جب کہ تقریبا 25 ہزار افراد میں کرونا وائرس کی موجودگی کی تصدیق ہوئی ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •