Voice of Asia News

نگروٹہ حملہ میں پاکستان کو ملوث کر نا قابل مذمت ہے ، مودی جھوٹوں کا بادشاہ ہے ، سر دار مسعود خان

اسلام آباد(وائس آف ایشیا ) آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کو جھوٹوں کا بادشاہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ مقبوضہ جموں وکشمیر میں نگروٹہ حملے کے واقعہ میں پاکستان کو ملوث کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں ،واقعہ بھارت کا سوچا سمجھا ڈرامہ ہے ،اب من گھڑت الزامات لگا کر پاکستان اور کشمیریوں کی تحریک آزادی کو بدنام کرنے کا وقت گزر چکا ہے کیونکہ دنیا یہ جان چکی ہے کہ مقبوضہ کشمیر میںجو دہشت گردی ہے وہ بھارت کی ریاستی دہشت گردی ہے جس میں بھارت کی نولاکھ فوج اور مودی کی جماعت بی جے پی اور آر ایس ایس کے غنڈے ملوث ہیں،بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے جموں۔سرینگر شاہراہ پر نگروٹہ کے علاقے میں بھارتی قابض فوج اور مبینہ عسکریت پسندوں کے درمیان جھڑپ میں مارے جانے والے چار افراد کے تعلق کو پاکستان کیساتھ جوڑنے کے الزام پر تبصرہ کرتے ہوئے صدر آزادکشمیر نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے پاکستان کے اندر بھارتی دہشت گردی کے ناقابل تردید ثبوت سامنے آنے کے بعد بھارت سے اس قسم کی جھوٹی کارروائی کے خدشات کئی دنوں سے ظاہر کیے جا رہے تھے کیونکہ بھارت اپنی دہشت گردی کو چھپانے اور عالمی برادری کی توجہ اصل مسئلہ سے ہٹانے کے لئے ایسی اوچھی حرکتیں ماضی میں کئی بار کر چکا ہے۔انہوںنے کہا کہ چٹھی سنگھ پورہ کا قتل عام ہو یا اوڑی ، پٹھان کوٹ اور پلوامہ کے واقعات ہوں بھارت کی تاریخ جھوٹ، فریب اور الزامات سے بھری پڑی ہے تاہم دنیا کی منڈی میں اب بھارت کا جھوٹ بکنے والا نہیں ہے اور مودی اور بھارت کے سارے حکمران اب بری طرح ناکام ہو چکے ہیں۔ صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ اب یہ عالمی برادری کی ذمہ داری ہے کہ وہ بھارت کو جھوٹ اور مکاری کے پردے کے پیچھے چھپنے نہ دے اور اسے اس کی دہشت گردی، انسانیت دشمنی اور جنگی جرائم پر جوابدہ ٹھہرائے اور ظلم، جبر اور انسانیت سوز مظالم کے شکار کشمیریوں کو انصاف دلا کر اپنی تہتر سالہ غفلت کا کفارہ ادا کرے۔اگر بھارت کو مجرم نہ ٹھہرایا گیا اور اس کا ہاتھ نہ روکا گیا تو پھر دنیا کو ایسا جنگل بننے سے کوئی نہیں روک سکے گا جہاں سچ، جھوٹ ، انصاف اور ناانصافی کا فیصلہ طاقتور کے اشارہ ابرو سے ہوتا ہے۔ صدر آزادکشمیر نے مقبوضہ جموں وکشمیر میں بکروال گجر کمیونٹی کے خلاف بھارتی حکومت اور فوج کے آپریشن کی بھی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ ہزاروں سال سے مقبوضہ وادی کے جنگلوں اور پہاڑوں پر اپنے مال مویشیوں کے ساتھ زندگی گزارنے والے ان انسانوں کو صرف اس لئے سزا دی جارہی ہے کہ وہ مسلمان ہیں۔انہوںنے کہا کہ ہمیں اس بات پر سخت تشویش ہے کہ ان خانہ بدوشوں کی پہاڑوں پر قائم عارضی بستیوں کو مسمار کیا جا رہا ہے اور اُن کے جانور اور مال مویشی یا تو ہلاک کیے جارہے ہیں یا اُن سے چھینے جارہے ہیں۔ صدر آزادکشمیر نے بھارتی حکومت کی طرف سے ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ کونسل کے انتخابات کو بھی ایک ڈرامہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ انتخابات نہ تو غیر جانبدارانہ اور صاف اور شفاف ہونگے اور نہ ہی ان سے مقبوضہ کشمیر کے عوام کو کوئی ریلیف ملنے والا ہے بلکہ اصل حقیقت یہ ہے کہ بھارتی حکومت مقبوضہ کشمیر سے متعلق اپنے غیر قانونی اقدامات کو جائز قرار دلوانے کے لئے اور دنیا کو دھوکہ دینے کے لئے یہ ڈرامہ رچا رہی ہے جسے مقبوضہ کشمیر کے عوام اتحاد و اتفاق سے مسترد کر دیں گے۔انہوںنے کہا کہ گزشتہ سات دہائیوں میں مقبوضہ جموں وکشمیر میں ہونے والے تمام انتخابات دھوکہ اور فراڈ تھے اور اب ہونے والے انتخابات بھی گزشتہ انتخابات سے مختلف نہیں ہونگے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے