Voice of Asia News

جعلسازی سے کورونا ویکسین کی تقریباً 90 خوراکیں لگوانے والا جرمن شہری پکڑا گیا

برلن ( وائس آف ایشیا ) جرمنی میں جعلی ویکسین کارڈ فروخت کرنے کے لیے تقریباً 90 بار کورونا ویکسین لگوانے والا شخص پکڑا گیا ، اس شخص نے ایسا اس لیے کیا تاکہ اپنے ویکسی نیشن سرٹیفیکیٹ ان افراد کو فروخت کرسکے جو ویکسین لگوائے بغیر ہی کارڈ بنوانا چاہتے ہیں ۔ بین الاقوامی میڈیا کے مطابق جرمنی میں ایک 60 سالہ شخص نے مبینہ طور پر خود کو کورونا کی درجنوں بار ویکسی نیشن کروائی تاکہ ویکسین کے اصلی بیچ نمبر والے جعلی ویکسین کارڈز ویکسین نہ لگوانے والے لوگوں کو فروخت کر سکے ، اس شخص کا تعلق مشرقی جرمنی کے شہر میگڈے برگ سے ہے تاہم اس کا نام جرمن رازداری کے قوانین کے تحت جاری نہیں کیا گیا ۔بتایا گیا ہے کہ اس شخص نے مشرقی ریاست سیکسنی کے ویکسی نیشن مراکز میں مہینوں تک کورونا سے بچاؤ کی 90 خوراکیں لگوائیں جب تک کہ اسے پولیس نے پکڑ نہیں لیا ، مشتبہ شخص کو حراست میں نہیں لیا گیا لیکن اس سے ویکسی نیشن کارڈ کے غیر مجاز اجراء اور دستاویزات کی جعلسازی کے سلسلے میں تفتیش جاری ہے ۔معلوم ہوا ہے کہ وہ سیکسنی میں ایلنبرگ کے ایک ویکسی نیشن سینٹر میں اس وقت پکڑا گیا جب وہ ایک ہی مرکز میں مسلسل دوسرے دن کورونا ویکسین لگوانے کے لیے پہنچا جہاں اسے عملے کے ایک رکن نے پہچان لیا ، پولیس نے اس کے پاس سے متعدد خالی ویکسی نیشن کارڈ ضبط کرلیے اور فوجداری کارروائی شروع کردی تاہم فوری طور پر واضح نہیں ہو سکا کہ مختلف برانڈز کی ویکسین کے تقریباً 90 ڈوز نے اس شخص کی ذاتی صحت پر کیا اثر ڈالا۔خیال رہے کہ جرمن پولیس نے ویکسینیشن پاسپورٹ کی جعلسازی کے سلسلے میں کئی چھاپے مارے ہیں کیوں کہ کورونا کو نہ ماننے والے بہت سے لوگ سے جرمنی میں ویکسین لگوانے سے انکار کرتے ہیں لیکن ساتھ ہی وہ ویکسی نیشن کارڈ بھی حاصل کرنا چاہتے ہیں جو عوامی زندگی اور بہت سے مقامات جیسے کہ ریسٹورنٹس ، تھیٹر، سوئمنگ پول یا کام کی جگہوں تک رسائی کو آسان بنا دیتے ہیں۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں