Voice of Asia News

کیا بالی وڈ اداکار اجے دیوگن بی جے پی کے ترجمان بن گئے ہیں؟

اسلام آباد(وائس آ ف ایشیا) بالی وڈ اداکار اجے دیوگن نے ہندی کو بھارت کا قومی زبان قرار دے کر اپنی پریشانیاں بڑھالی ہیں۔ یہ تنازع تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ جنوبی صوبے کرناٹک کے دو سابق وزرائے اعلیٰ بھی اس تنازع میں کود پڑے ہیں اور انہوں نے اجے دیوگن کو مشورہ دیا کہ کوئی اہم بات کہنے سے قبل حقائق کی جانکاری حاصل کرلیا کریں۔کرناٹک کے دو سابق وزرائے اعلیٰ کانگریس کے سدا رمیا اور جنتا دل (سیکولر) کے ایچ ڈی کماراسوامی نے اجے دیوگن کی سخت نکتہ چینی کی۔ دونوں رہنماؤں نے کہا کہ فلم اداکار کو اس بات کا علم ہونا چاہیے کہ ہندی بھارت کی قومی زبان نہیں ہے۔ کماراسوامی نے زیادہ سخت لہجہ اختیار کرتے ہوئے اجے دیوگن کو حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی) کا ترجمان قرا ردے دیا۔سابق وزیر اعلی کماراسوامی نے ایک ٹوئٹ کرکے کہا،”ایسا لگتا ہے کہ اجے دیوگن بی جے پی کی ہندی قوم پرستی کے ایک ملک، ایک ٹیکس، ایک زبان اور ایک حکومت کی مہم کے ترجمان بن گئے ہیں۔‘‘ انہوں نے مزید کہا،”ہندی نہ تو کبھی ہماری قومی زبان رہی ہے اور نہ کبھی ہوگی۔ ہمارے ملک کی لسانی تنوع کا احترام کرنا ہر ایک بھارتی شہری کی ذمہ داری ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں