Voice of Asia News

بھارت ،تاج محل کے 20 کمروں کی حقیقت جاننے کے لیے عدالت میں پٹیشن دائر

نئی دہلی(وائس آ ف ایشیا) بھارت کی ایک عدالت میں مغلیہ دور کی مشہور یادگار تاج محل کے 20 کمروں کی حقیقت جاننے کے لیے ایک پٹیشن دائر کی گئی ہے کہ ان کو کھولا جائے ۔بھارتی نشریاتی ادارے کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی کے ایودھیہ ضلع کے میڈیا انچارج ڈاکٹر راجنیش سنگھ نے الہ آباد ہائی کورٹ کے لکھنو بینچ میں ایک پٹیشن دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ تاج محل میں قریباً 20 کمروں کو تالے لگے ہوئے ہیں اور اس میں کسی کو داخل ہونے کی اجازت نہیں ہے لہذا آرکیالوجیکل سروے کو ہدایت دی جائے کہ ان کمروں کو کھول کر حقیقت معلوم کی جائے۔انہوں نے مزید کہا کہ ان کمروں کی حقیقت جاننے کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دی جائے۔واضح رہے کہ تاج محل بھارت کے شہر آگرہ میں واقع سنگ مرمر سے بنی ایک عظیم الشان عمارت ہے جسے مغل شہنشاہ شاہ جہاں نے اپنی زوجہ کی محبت کی لافانی یادگار کے طور پر دریائے جمنا کے ساحل پر بنایا تھا تاج محل اپنے فن تعمیر کی خوبیوں اور خصوصیتوں کی بنا پر دنیا بھر میں مشہور ہے اور عجائبات عالم میں شمار ہوتا ہےتاج محل کو اسلامی فن کا عملی اور نایاب نمونہ بھی کہا گیا ہے اسے تقریباً 1648ء میں مکمل تعمیر کیا گیا۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں