Voice of Asia News

اگر نیٹو جوہری افواج کو روسی سرحد کے قریب تعینات کرتا ہے ہم احتیاطی اقدامات اٹھائیں گے،روس

ماسکو(وائس آ ف ایشیا) روس کے نائب وزیر خارجہ الیگزینڈر گروشکو نے کہا ہے کہ اگر نیٹو جوہری افواج اور بنیادی ڈھانچے کو روس کی سرحد کے قریب تعینات کرتا ہے تو ماسکو مناسب احتیاطی اقدامات کرے گا۔روسی خبر رساں ایجنسی انٹرفیکس کے مطابق گروشکو نے کہا کہ اگر نیٹو جوہری افواج اور بنیادی ڈھانچے کو روس کی سرحد کے قریب تعینات کرتا ہے تو اس کا جواب دینا ضروری ہو گا،روس اپنی عملداری کو یقینی بنانے کے لیے مناسب احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا حق رکھتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ماسکو کی فن لینڈ اور سویڈن کے ساتھ کوئی دشمنی نہیں ہے اور وہ ان دونوں ممالک کے نیٹو اتحاد میں شامل ہونے کی کوئی "حقیقی” وجوہات نہیں دیکھتا ہے۔انہوں نے کریملن کے پہلے بیان کو بھی دہرایا کہ نیٹو کی ممکنہ توسیع پر ماسکو کے ردعمل کا انحصار اس بات پر ہوگا کہ اتحاد روس کی طرف فوجی اثاثوں کو کس حد تک منتقل کرتا ہے اور وہ کون سا انفراسٹرکچر تعینات کرتا ہے۔ یاد رہے کہ فن لینڈ کی جانب سے نیٹو کی رکنیت کے لیے جمعرات کو درخواست دینےکے ارادے کا اظہار کیا گیا تھا، توقع کی جا رہی ہے کہ سویڈن بھی اس کی پیروی کرے گا۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں