Voice of Asia News

اتحادی حکومت کو قومی اسمبلی میں مشکلات کا سامنا اجلاس کا کورم پورا کرنے میں ناکامی

اسلام آباد(وائس آ ف ایشیا) اتحادی حکومت قومی اسمبلی کا اجلاس چلانے میں بھی ناکام 10مئی سے شروع ہونے والا اجلاس کورم پورا نہ ہونے کے باوجود چلایا جارہا تھا جس کی نشاندہی جی ڈی اے کی خاتون رکن سائرہ بانو نے کی جس کے بعد معمول کی کاروائی کے بعد ڈپٹی سپیکر نے کورم پورا نہ ہونے اراکین اسمبلی اور وزراکی جانب سے سنجیدگی کا مظاہرہ نہ کرنے پر افسوس کا اظہار کیا رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چونکہ سیاسی افراتفری کی وجہ سے اتحادی جماعتوں کے مرکزی قائدین اجلاسوں اور مشاورت میں مصروف ہیں اور قومی اسمبلی کی جانب ان کی توجہ نہیں ہے جبکہ وزیراعظم شہبازشریف نون لیگ سے تعلق رکھنے والے ارکین اسمبلی کے ساتھ پارٹی کے اہم اجلاس کے سلسلہ میں لندن میں موجود ہیں اس لیے نون لیگی اراکین اسمبلی بھی ویک اینڈ گزارنے اپنے حلقوں میں گئے ہوئے ہیں 10 مئی سے شروع ہونے والے ایوان زیریں کے جاری اجلاس کو کورم پورا ہوئے بغیر ہی چلایا جارہا ہے جی ٹی اے کے چند اراکین پر مشتمل حزب اختلاف کے چھوٹے گروپ نے منگل کے روزکورم کی نشاندہی کرکے ایوان کی کارروائی کو ملتوی کرنے پر مجبورکردیا. اتحادی حکومت میں وزیر اعظم شہباز شریف کے حلف اٹھانے کے بعد قومی اسمبلی کا یہ پہلا باقاعدہ جلاس تھا اسپیکر راجہ پرویز اشرف اور ڈپٹی اسپیکر کو پارلیمان کو فعال رکھنے میں دشواریوں کا سامنا ہے کیونکہ عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد کے بعد پی ٹی آئی کے 123 اراکین نے استعفے دے دیے تھے اسپیکر نے اب تک پی ٹی آئی اراکین کے استعفوں کی تصدیق کا عمل شروع نہیں کیا ہے حالانکہ تحریک انصاف کے ڈپٹی سپیکر قاسم سوری جوکہ اسپیکر اسد قیصرکے مستعفی ہونے کے بعد اسمبلی کے رولزآف بزنس کے تحت قائمقام اسپیکرکے فرائض انجام دے رہے تھے انہوں نے پی ٹی آئی کے123اراکین کی استعفوں کی تصدیق کرکے ان اراکین کو ڈی سیٹ کرنے کا عمل مکمل کرنے کے لیے الیکشن کمیشن کو بجھوادیا تھا تاہم الیکشن کمیشن نے ابھی تک اس پر کوئی کاروائی نہیں کی تحریک انصاف استحادی حکومت کے منتخب کردہ اسپیکر راجہ پرویزاشرف کی جانب سے استعفوں کی ڈی سیل کروانے اور الیکشن کمیشن کی جانب سے سابق قائمقام اسپیکر قاسم سوری کی جانب سے اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے ضابطے کی کاروائی پوری ہونے کے باوجود الیکشن کمیشن کی جانب سے کاروائی نہ کرنے کو بدنیتی پر مبنی عمل قراردیتی ہے. اس وقت صورتحال یہ ہے کہ اسمبلی کا اجلاس بغیر کسی ایجنڈے کے اراکین کو اپنے من پسند مسائل پر لمبی لمبی تقرریوں کی اجازت دے کر چلانے کی کوشش کی جارہی ہے اراکین بھی اس صورتحال کا فائدہ اٹھا رہے ہیں اور فلور حاصل کرنے کے لیے کورم کی نشاندہی کرنے کی دھمکی دینے کی نئی حکمت عملی اپنائی ہے نئے قائد حزب اختلاف کی نامزدگی میں تاخیر سے بھی ایوان نامکمل ہے جمعہ کے روز بھی گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے)کی سائرہ بانو نے کورم پورا نہ ہونے کی نشاندہی کی جس کے بعد حکومتی بنچوں کی جانب سے غیر حاضری اور حزب اختلاف کی جانب سے سوالات کے جوابات نہ دیے جانے پر شدید احتجاج کیا گیا۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں