Voice of Asia News

امریکا اور عراق امریکی افواج کے انخلا پر بات چیت کے لیے تیار ،وائٹ ہائوس

واشنگٹن ( وائس آف ایشیا) وائٹ ہاوس نے بتایاہے کہ امریکا اور عراق اپریل میں اسٹریٹیجک مذاکرات بحال کرنے والے ہیں۔ان مذاکرات کا آغاز ٹرمپ انتظامیہ کے دوران جون 2020 میں ہوا تھا اور گزشتہ جنوری میں عہدہ صدارت سنبھالنے کے بعد جو بائیڈن انتظامیہ میں یہ پہلی میٹنگ ہوگی۔دونوں ممالک عراق میں اس وقت موجودہ ڈھائی ہزار امریکی فورسز کی واپسی کے طریقہ کار پر بات چیت کریں گے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق وائٹ ہاوس کی ترجمان جین ساکی نے ایک بیان میں کہاکہ ان میٹنگوں سے یہ بات مزید واضح ہوجائے گی کہ اتحادی افواج کی عراق میں موجودگی کا واحد مقصد عراقی فوج کو تربیت دینا اور اس امر کو یقینی بنانے میں ان کی مدد کرنا ہے کہ آئی ایس آئی ایس دوبارہ خود کو منظم کرنے نا پائے۔انہوں نے مزید کہا کہ حکام سکیورٹی، تجارت، ماحولیات اور ثقافت جیسے دیکر امور پر بھی بات چیت کریں گے۔امید ہے کہ فریقین باہمی مفادات کے اہم امور اور واشنگٹن اور بغداد کے مابین تعلقات پر پڑنے والے ان کے اثرات پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔عراقی اور امریکی حکام دونوں کا کہنا تھا کہ وہ ایک طے شدہ پروگرام کے تحت عراق سے افواج کے انخلا کی حمایت کرتے ہیں لیکن اصل سوال اس کے وقت اور اسلامی ریاست گروپ کی جانب سے ممکنہ خطرے کے حوالے سے ہے۔بتایا گیا ہے کہ اس سے قبل سفارتی عملے کو عمارت سے نکال لیا گیا تھا۔ بغداد کے محفوظ ترین علاقے میں جاری اس احتجاج میں ہزاروں افراد شریک ہیں۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے