کانگریس رہنما نے پاکستان پر حملہ کرنا ”غلطی” قرار دے دیا

نئی دہلی (وائس آف ایشیا)کانگریس رہنما نے پاکستان پر حملے کو حکومت کی ”غلطی” قرار دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق بھارت کی سیاسی جماعت کانگریس صدر راہول گاندھی کے قریبی ساتھی، بھارتی اوورسیز کانگریس کے چیف اور پارٹی کے ایک نظریہ ساز رہنما سیم پترودا نے پلوامہ حملے کے بعد بالاکوٹ میں بھارتی فضائیہ کی کارروائی کو غلطی قرار دیتے ہوئے اس کارروائی میں مبینہ ہلاکتوں پر سوال اْٹھا دیا۔غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کو انٹرویو دیتے ہوئے سیم پترودا کا کہنا تھا کہ اگر بھارتی فضائیہ نے بالاکوٹ میں 300 لوگوں کو ہلاک کیا تو میرا سوال یہ ہے کہ کیا آپ مزید حقائق پیش کر سکتے ہیں اور اس دعوے کو ثابت کر سکتے ہیں؟ انہوں نے کہا کہ حکومت کا دعویٰ ہے کہ بالاکوٹ میں فضائیی کارروائی میں 300 لوگ مارے گئے لیکن میں نے نیویارک ٹائمز اور دیگر اخباروں میں اس سے مختلف رپورٹس دیکھی ہیں، کیا واقعی ہم نے حملہ کیا ہے اور300 افراد کو ہلاک کیا ہے؟ واضح رہے کہ بھارت نے پاکستان کے علاقہ بالاکوٹ میں فضائی کارروائی کرنے اور 300 افراد کی ہلاکتوں کا بھونڈا دعویٰ کیا تھا لیکن اپنے دعوے کی حمایت میں بھارت ایک بھی ثبوت پیش نہیں کر سکا تھا۔جس سے بھارت کی دنیا بھر میں جگ ہنسائی ہوئی تھی جبکہ کئی غیر ملکی اخبارات اور اداروں نے بھی سیٹلائٹ فوٹیج کی مدد سے بھارت کے اس دعوے کا بھانڈا پھوڑ دیا تھا۔ یاد رہے کہ مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں 14 فروری کو ایک کار خود کش دھماکے میں 40 بھارتی فوجی ہلاک ہوئے تھے جس کا الزام بھارت نے براہ راست پاکستان پر عائد کیا تھا۔ پلوامہ واقعے کے بعد صورتحال کشیدہ ہوئی اور 26 فروری کی رات بھارتی فضائیہ نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کی جس پر پاک فضائیہ کی بروقت جوابی کارروائی پر بھارتی طیارے بالاکوٹ کے قریب نصب ہتھیار پھینکتے ہوئے بھاگ نکلے تھے۔جس کے بعد بدھ کی صبح 27 فروری کو پاک فضائیہ نے بھارت کو سرپرائز دیتے ہوئے بھارت کے دو طیارے مار گرائے جبکہ ایک بھارتی پائلٹ کو بھی گرفتار کر لیا گیا تھا۔ جس کے ایک دن بعد ہی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان عمران خان نے بھارتی پائلٹ کی رہائی کا اعلان کیا اور ساتھ ہی کہا کہ ہم بھارتی پائلٹ کو امن کے فروغ کے لیے جذبہ خیر سگالی کے تحت رہا کر رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے اس فیصلے کو نہ صرف پاکستان اور بھارت بلکہ عالمی سطح پر بھی خوب سراہا گیا تھا۔جمعہ کے روز یکم مارچ کو بھارتی پائلٹ ابھینندن کو پاکستان نے جذبہ خیر سگالی کے تحت واہگہ بارڈر پر بھارت کے حوالے کر دیا تھا۔




حزب اللہ لبنان کی ترقی اور استحکام میں رکاوٹ ہے،امریکی وزیرخارجہ

بیروت( وائس آف ایشیا ) امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے لبنان کے دورے کے دوران ایران نواز شیعہ ملیشیا حزب اللہ کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاہے کہ حزب اللہ لبنان کے لیے ایک چیلنج ہے۔ وہ ایک طرف حکومت کا حصہ ہے اور دوسری ملک کو کمزور کر رہی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق اپنے لبنانی ہم منصب جبران باسیل کے ہمراہ ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب میں پومپیو نے کہا کہ حزب اللہ لبنان کی ترقی اور استحکام کی راہ میں 34 سال سے رکاوٹ بنی ہوئی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ حزب اللہ لبنان کے لیے ایک چیلنج ہے۔ وہ ایک طرف حکومت کا حصہ ہے اور دوسری ملک کو کمزور کر رہی ہے۔امریکی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ حزب اللہ ایران کے مفادات کے لیے کام کر کے لبنان اور پورے خطے کو عدم استحکام سے دوچار رکھنا چاہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ حزب اللہ بے گناہوں کے قتل اور غیرقانونی طور پر اسلحہ ذخیر کرنے میں ملوث ہے۔حزب اللہ ملیشیا نے لبنانی قوم کو لاشوں کے سوا کچھ نہیں دیا۔ انہوں نے لبنانی قوم پر حزب اللہ کی سرگرمیوں سے نمٹنے کے لیے جرات مندانہ کوششوں پر زور دیا۔امریکی وزیر خارجہ نے انکشاف کیا کہ ان کا ملک ایران پر حزب اللہ کی مالی مدد روکنے کے لیے دباؤ ڈال رہا ہے۔ ایران میں اقتصادی ابتری کے باوجود تہران حزب اللہ کو 70 کروڑ ڈالر کی رقم دے چکا ہے۔انہوں نے شام، لبنان اور عراق میں ایرانی جنرل قاسم سلیمانی اور حزب اللہ کی مداخلت کی مذمت کی۔دوسری جانب لبنانی وزیر خارجہ جبران باسیل نے کہا کہ ان کا ملک جنوبی سرحد پر امن قائم رکھنے کے لیے اقوام متحدہ کی قرار داد 1701 پر عمل درآمد کو یقینی بنائے گا۔انہوں نے کہا کہ بیروت امریکا کی طرف سے لبنانی سیکیورٹی اداروں کی امداد کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔جبران باسیل نے کہا کہ ان کی امریکی ہم منصب کے ساتھ ہونے والی بات چیت میں شامی پناہ گزینوں اور دیگر امور پر بات چیت ہوئی ہے۔




یوم پاکستان پر سعودی قیادت کا پیغام عوام کے لیے مزید ترقی اور خوشحالی کی نیک خواہشات کا اظہار

سعودی عرب (وائس آف ایشیا)ملک بھر میں قرار دادِ پاکستان پیش کیے جانے کے 79 سال پورے ہونے پر یومِ پاکستان قومی جوش و جذبے سے منایا جارہا ہے۔اس حوالے سے ملک بھر میں مخلتف تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔پاکستان کو مختلف ممالک کی طرف سے یوم پاکستان کے موقع پر مبارکباد کے پیغامات موصول ہو رہے ہیں۔سعودی قیادت نے بھی یوم پاکستان پر پاکستان کو مبارکباد دی ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے یوم پاکستان کے موقع پر ڈاکٹر عارف علوی کو سعودی عوام و حکومت اور خود اپنی جانب سے مبارکباد دی ہے۔انہوں نے اپنے پیغام میں پاکستان کے برادر عوام کے لیے مزید ترقی اور خوشحالی کی نیک خواہشات کا اظہار کیا۔صدر کے لیے خیر سگالی کے جذبات پیش کیے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق ولی عہد، نائب وزیراعظم و وزیزر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان نے بھی ڈاکٹر عارف علوی کو یومِ پاکستان کی مبارکباد کا پیغام ارسال کیا۔گذشتہ روز بھارتی وزیراعظم نریندر مودینے یوم پاکستان پر پاکستانی قوم کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ وقت ا?گیا ہے کہ دہشت گردی سے پاک ماحول میں آگے بڑھیں۔ یہ بات وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنے ایک ٹوئٹ میں بتائی۔ وزیراعظم عمران خان نے بتایا کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے یوم پاکستان پر اپنے پیغام میں پاکستانی قوم کو مبارکباد دی ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم نے یوم پاکستان پر نیک تمناؤں کا پیغام بھیجا ہے۔ وزیراعظم کے مطابق نریندر مودی نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ وقت ا?گیا ہے کہ دہشت گردی سے پاک ماحول میں ا?گے بڑھیں۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی ایشیاء کے لوگ امن پرستی اور جمہوریت کیلئے کام کریں۔




یوم پاکستان پر گورنر سندھ ، وزیراعلیٰ سندھ کی مزارقائد پر حاضری

کراچی (وائس آف ایشیا) یو م پاکستان کے موقع پر گورنر سندھ، وزیراعلیٰ سندھ، تینوں مسلح افواج کے نمائندوں اوردیگر سیاسی رہنماؤں نے مزار قائد پرحاضری دی اورپھولوں کی چادر چڑھائی۔تفصیلات کے مطابق یوم پاکستان پر بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کوخراج عقیدت پیش کرنے کے لئے پر وقارتقریب کا انعقاد کیا گیا، گ ورنر سندھ عمران اسماعیل، وزیراعلیٰ مراد علی شاہ اور صوبائی کابینہ کےارکان نے مزارقائد پرحاضری دی اورپھول چڑھائے۔اس موقع پر گورنر سندھ نے اپنے پیغام میں کہا خواہش ہے قائداعظم کاوژن جلدمکمل ہو جبکہ وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا متحد قومیں ہی ملک کا دفاع کرسکتی ہیں کمشنرکراچی سیاسی وسماجی شخصیات نے بھی مزار قائد پر حاضری دی۔اس سے قبل یوم پاکستان کے موقع پر لاہورمیں مزاراقبال پر گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریب ہوئی، جس میں شاہینوں کے چاق وچوبند دستے نےمصور پاکستان کو سلامی پیش کی اور مزار پرگارڈزکے فرائض سنبھال لیے۔

مہمان خصوصی ائیرکموڈور رضوان ملک نے پریڈ کا معائنہ کیا، مہمان خصوصی نے چیف آف ائیر سٹاف اور پاکستان ائیرفورس کی جانب سے مزار پر پھول چڑھائے اورفاتحہ خوانی کی۔ائیرکموڈور رضوان ملک نےمہمانوں کی کتاب میں تاثرات بھی قلمبندکیے۔

خیال رہے آج یوم پاکستان ملی جوش اور جزبے سے منایا جار ہا ہے، دن کا آغاز وطن عزیز کی سلامتی کیلئے خصوصی دعاوں سے ہواجبکہ وفاقی دارلحکومت اسلام اباد کا کیولری گرائونڈ اکتیس توپوں کی سلامی سے گونج اٹھا۔

یوم پاکستان کے دن اسلام آباد کے پریڈ گراؤنڈ میں مسلح افواج کی شاندار پریڈ ہوئی ،سعودی عرب اور آذربائیجان کے دستوں نے پریڈ میں شرکت کی،  تقریب کے مہمان خصوصی ملیشیا کے وزیراعظم مہاتیرمحمد ہیں۔




ڈی جی آئی ایس پی آر کا یوم پاکستان پریڈ کے پروموز کے شرکاء سے اظہار تشکر

راولپنڈی : ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے یوم پاکستان پریڈ کے پروموز کے شرکاء سے اظہار تشکر ہوئے قومی مہم میں تعاون پر میڈیا کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کیا۔تفصیلات کے مطابق تفصیلات کے مطابق پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے ڈایریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر یوم پاکستان پریڈکے پروموز کے شرکا سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا پروموز میں شرکت پر تمام پاکستانیوں کا شکریہ ادا کیا۔ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ قومی مہم میں تعاون پرمیڈیا کا بھی خصوصی طور پر شکریہ ، “ہم سب کی آواز ۔۔ پاکستان زندہ باد”۔

 یاد رہے آئی ایس پی آر کی جانب سے یوم پاکستان کی مناسبت سے پروموز جاری کیے گئے ، ان پروموز میں فنکاروں ، کھلاڑیوں اور میڈیا نمائندہ گان ، پاکستانیوں، سیاستدانوں کی جانب سے پاکستان زندہ کے پیغامات شامل کیے گئے تھے۔

آئی ایس پی آر نے تئیس مارچ کا ترانہ “ہردل کی آواز پاکستان” جاری کیا تھا، جس میں دشمن کو پیغام دیا جارحیت کیخلاف پوری قوم متحد ہے اور تحریک پاکستان کےکارکنوں کوخراج عقیدت پیش کیا گیا تھا۔خیال رہے آج یوم پاکستان ملی جوش اور جزبے سے منایا جار ہا ہے، دن کا آغاز وطن عزیز کی سلامتی کیلئے خصوصی دعاوں سے ہواجبکہ وفاقی دارلحکومت اسلام اباد کا کیولری گرائونڈ اکتیس توپوں کی سلامی سے گونج اٹھا۔

یوم پاکستان کے دن اسلام آباد کے پریڈ گراؤنڈ میں مسلح افواج کی شاندار پریڈ جاری ہے، سعودی عرب اور آذربائیجان کے دستے بھی پریڈ میں شریک ہیں، تقریب کے مہمان خصوصی ملیشیا کے وزیراعظم مہاتیرمحمد ہیں۔




یوم پاکستان پر31 توپوں جبکہ صوبائی دارالحکومتوں میں21،21 کی سلامی

 

 

اسلام آباد(وائس آف ایشیا) ملک بھر میں یوم پاکستان ملی جوش و جذبے سےمنایا جا ر ہا ہے۔ اسلام آباد اور چاروں صوبائی دارالحکومتوں میں توپوں کی سلامی سے دن کا آغازہوا۔تفصیلات کےمطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یوم پاکستان کے دن کا آغاز 31 توپوں جبکہ صوبائی دارالحکومتوں میں21،21 توپوں کی سلامی سے ہوا۔ اس موقع پر ملک کی سلامتی اور یکجہتی کے لیے خصوصی دعائیں بھی کی گئیں۔یوم پاکستان پرلاہور کے محفوظ شہید گیریژن میں پاک فوج کی جانب سے 21 توپوں کی سلامی اور پشاور کے کرنل شیرخان اسٹیڈیم میں 21 توپوں کی سلامی سے دن کا آغاز کیا گیا۔دوسری جانب وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یوم پاکستان کی روایتی پریڈ ہوگی جہاں مسلح افواج کے دستے مارچ کریں گے اور پاک فضائیہ کے شاہین فضائی مظاہرہ پیش کریں گے۔صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی پاک فوج کے دستوں سے سلامی لیں گے جبکہ وزیراعظم عمران خان اور تینوں مسلح افواج کے سربراہان بھی تقریب میں موجود ہوں گے۔ملیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد پریڈ گراؤنڈ میں ہونے والی یوم پاکستان کی تقریب میں خصوصی مہمان ہوں گے۔اسلام آباد میں پریڈ گراؤنڈ کے اطراف کی سڑکوں کو بھی بند رکھا جائے گا، ٹریفک کی روانی برقرار رکھنے کے لیے متبادل پلان جاری کردیا گیا ہے۔

ایوان صدر میں شام کو تقسیم اعزازات کی تقریب منعقد ہوگی جہاں ڈاکٹرعارف علوی مختلف شعبوں میں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی شخصیات کو اعزازات اور تمغے دیں گے۔

واضح رہے کہ رواں سال مجموعی طور پر 127 پاکستانیوں اور غیرملکی شخصیات کو سول اعزازات دیے جائیں گے۔




وفاقی دارالحکومت سمیت ملک بھر میں 79واں یومِ پاکستان جوش و خروش کیساتھ منایا گیا

اسلام آباد، لاہور ،کراچی، کوئٹہ،پشاور(وائس آف ایشیا)ملک بھر میں 79واں یوم پاکستان انتہائی جوش و جذبے کیساتھ منایا گیا ، مرکزی تقریب وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے شکرپڑیاں پریڈ گراؤنڈ میں منعقد ہوئی ، لاہور، کراچی ، کوئٹہ اور پشاور میں بھی تقاریب کا خصوصی اہتمام کیا گیا ، نماز فجر کے بعد مساجد میں ملک کی سلامتی، ترقی، خوشحالی کے لیے خصوصی دعاؤں کا اہتمام کیا گیا،وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں صبح کا آغاز پر31توپوں اور صوبائی دارالحکومتوں میں 21، 21 توپوں کی سلامی دی گئی،دفاعی ساز و سامان کی نمائش بھی کی گئی۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کے پریڈ گرانڈ میں ہونے والی مسلح افواج کے ساتھ پریڈ میں چین، سعودی عرب اور آذربائیجان کے دستے اور ہواز باز بھی شریک ہوئے۔تقریب کے مہمان خصوصی ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد تھے جو صدرِ مملکت عارف علوی، وزیراعظم عمران خان، وزیر دفاع پرویز خٹک، چیئرمین جوائنٹ چیفس جنرل زبیر محمود حیات، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، نیول چیف ایڈمرل ظفر محمود اور وائس ائیر چیف کے ہمراہ سلامی کے چبوترے پر براجمان رہے ۔ جبکہ آذربائیجان کے وزیردفاع، بحرین کے فوجی سربراہ اور اومان کے حکومتی حکام بھی خصوصی مہمان کی حیثیت سے شریک ہوئے،3 مارچ کی پریڈ میں چین، سعودی عرب، ترکی، آذربائیجان، بحرین اور سری لنکا کے فوجی دستوں نے بھی حصہ لیا،صدرِ مملکت ڈاکٹر عارف علوی مختلف شعبہ زندگی میں کارہائے نمایاں انجام دینے والے افراد کو سرکاری اعزازات سے بھی نوازا۔صدرِ مملکت سمیت مہمانِ خصوصی کی آمد کے بعد گرانڈ میں قومی ترانا پڑھا گیا اور تلاوتِ کلام پاک کی گئی۔جس کے بعد صدرِ مملکت عارف علوی کو مسلح افواج کے دستوں سے سلامی پیش کی اور صدر نے مسلح افواج کی پریڈ کا معائنہ کیا۔صدرِ مملکت کو سلامی پیش کیے جانے کے بعد پاک فضائیہ کے سربراہ ائیر چیف مارشل مجاہد انور خان کی سربراہی میں جنگی طیاروں نے صدرِ مملکت کو سلامی پیش کی جب کہ ائیرچیف نے کاکٹ پٹ سے براہِ راست پیغام بھی دیا۔ائیر چیف کی سربراہی میں پاک فضائیہ کے طیاروں نے فلائی پاسٹ کیا اور اس دوران طیاروں کی گھن گھرج نے وفاقی دارالحکومت کا ماحول گرما دیا۔صدرِ مملکت عارف علوی نے تقریب کے شرکا سے خطاب کیا اور شاندار پریڈ کے انعقاد پر مسلح افواج اور منتظمین کو مبارکباد دی۔پاک فوج، رینجرز، بحریہ کے دستوں نے معزز مہمانوں کو سلامی دی اور الخالد ٹینکوں کے دستے نے بھی مخصوص انداز میں سلامی پیش کی۔تقریب میں دفاعی سازو سامان کی نمائش کی گئی جس میں دشمن کو دندان شکن جواب دینے کی صلاحیت رکھنے والے الخالد سمیت دیگر ٹینکوں اور میزائلوں کی بھی نمائش کی گئی۔تقریب میں غیر ملکی مہمان بحرین کی نیشنل گارڈ کے سربراہ اور آذربائیجان کے وزیر دفاع بھی تقریب میں شریک ہیں۔اس کے علاوہ حکومتی شخصیات، غیر ملکی سفارتکار اور اعلی سول و عسکری حکام سمیت زندگی کے مختلف شعبہ جات سے تعلق رکھنے والی شخصیات تقریب میں شریک ہیں۔مسلح افواج کے دستے سپریم کمانڈر صدرِ مملکت عارف علوی کو سلامی دی۔اسلام آباد کے پریڈ گرانڈ میں مشترکہ پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت عارف علوی نے کہا کہ ہم سب سے پہلے اللہ تعالی کا شکر ادا کرتے ہیں جس نے ہمیں آزادی جیسی عظیم نعمت عطا فرمائی اور اس سے بڑھ کر ہمیں اپنے وطن کی حفاظت کی ہمت بخشی۔انہوں نے کہا کہ آج کے روز مسلمانوں نے قرار داد کی صورت میں آزادی کے حصول کا عزم باندھا اور ایسی آزاد ریاست کی جدوجہد شروع کی جہاں معیشت، معاشرت اور سیاست کو دین اسلام کی روشنی میں اتار سکیں اور دنیا کے لیے مثالی ریاست کا نمونہ پیش کرسکیں۔صدر مملکت کا کہنا تھا کہ قوم اس دن کو اس عہد کی تجدید کے ساتھ منارہی ہے کہ ہم قائد و اقبال کے نظریاتی تصور اور اقدار کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے کل اور مستقبل کی صور گری کریں گے، پاکستان کو اللہ کی عظیم نعمت تصور کرتے ہوئے اس کی ترقی، خوشحالی اور استحکام کو یقینی بنائیں گے، پرعزم قوم کے طور پر اقبال اور قائد کے افکار کی تعمیر کریں گے۔عارف علوی نے کہا کہ آزادی کو برقرار رکھنے کے لیے بے شمار قربانیاں دینی پڑتی ہیں، جب پاکستان ہماری پہچان بنا تو ہمیں لامحدود چیلنجز کا سامنا تھا، ہماری زندگیوں میں بہت سے نشیب و فراز آئے اور ہم پر جنگیں مسلط کی گئیں، ہمیں حالیہ تاریخ میں اپنی قومی تاریخ کے سب سے بڑے چیلنج دہشگردی کا سامنا کرنا پڑا، ہم دنیا کی واحد قوم ہیں جس نے اتنی لمبی لڑائی لڑی، جانی و مالی قربانی دی مگر بے پناہ حوصلے سے دہشت گردی کا مقابلہ کیا اور دہشت گردوں کو کامیاب نہیں ہونے دیا۔صدر مملکت نے مزید کہا کہ ہم قوم کے عزم اور افواج پاکستان کی جرت و بہادری کی بدولت نہ صرف سرخرو ہوئے بلکہ امن و قومی تعمیر و ترقی کے راستے پر گامزن ہوئے، آج ہم ابھرتی ہوئی معاشی قوت کے ساتھ دفاعی لحاظ سے مضبوط اور پر امن ایٹمی طاقت ہیں، ہم دنیا کے تمام ممالک کی خودمختاری اور سلامتی کا احترام کرتے ہیں۔ان کا کہناتھاکہ ہم واضح کردینا چاہتے ہیں کہ امن کی خواہش کو ہرگز ہماری کمزوری نہ سمجھا جائے، پاکستان ایک حقیقت ہے اور ہم زندہ و تابندہ آزاد قوم ہیں، بھارت کو یہ تسلیم کرنا ہوگا، ان کی قیادت کی تنگ نظری ہوگی اگر وہ ہمیں 1947 کے نظریات اور تصورات کی عینک سے دیکھیں گے، یہ خطے کے امن کے لیے خطرناک ہے، خطے کو امن کی ضرورت ہے، ہمیں جنگ کے بجائے تعلیم، صحت اور روزگار کی فراہمی پر توجہ دینی چاہیے، ہماری اصل جنگ غربت اور بیروزگاری کے خلاف ہے۔عارف علوی نے کہا کہ ہم ذمہ دار قوم ہیں، ماضی سے سبق سیکھ کر مستقبل تعمیر کررہے ہیں، ہم تلخیوں اور نفرتوں کو ختم کرکے خوشحالی کے بیج بونا چاہتے ہیں، ہم جمہوری ملک ہونے کے ناطے لڑائی پر یقین نہیں رکھتے، ہر مسئلے کو مذاکرات اور بات چیت کے ذریعے حل کرنا چاہتے ہیں، اس ضمن میں بھارت کا رویہ نامناسب اور غیر ذمہ دارانہ رہا ہے جس کی بدولت خطہ امن کے مسلسل خطرات سے دوچار ہے، پلوامہ حملے کے بعد کی صورتحال اس کی تازہ مثال ہے جس میں بلا ثبوت پاکستان پر الزام لگادیا گیا، دھمکی آمیز پیغامات سے جنگ کی فضا پیدا کی گئی۔صدر مملکت کا کہنا تھا کہ بین الاقوامی قوانین کو توڑتے ہوئے پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی گئی، اس کا جواب دینا ہمارا فرض ہے، ہماری افواج تیار تھی اور قوم کی دعائیں و حمایت ان کے ساتھ تھی،ہم نے بہترین حکمت عملی سے مثر اور فوری جواب دیا، اس پر پوری قوم اپنی افواج کو زبردست خراج تحسین پیش کرتی ہے، دشمن کو منہ توڑ جواب دے کر نہ صرف انہوں نے ذمہ داریاں پوری کیں بلکہ اپنی اہلیت اور برتری ثابت کردی۔عارف علوی نے کہا کہ بلاشبہ افواج پاکستان کی پیشہ ورانہ صلاحیت، اہلیت اور معیار کا کوئی ثانی نہیں، سرحدوں پر وطن کے دفاع کا فریضہ انجام دینے والوں کو سلام پیش کرتا ہوں، بلاشبہ آپ قوم کا فخر اور وقار ہیں، آپ کی جرت و بہادری اور بہترین حربی صلاحیتوں نے ملک کا ناقابلِ تسخیر بنادیا، آج کی پریڈ پیغام دے رہی ہے کہ ہم پر امن قوم ہیں مگر دفاع سے غافل نہیں۔ان کا کہنا تھا کہ کوئی شک نہیں دہشت گردی دنیا کے امن کے لیے سب سے بڑا خطہ ہے لیکن ہم نے طویل جنگ کے بعد اس عفریت کو قابو کرلیا اب اس پر مزید کام کی ضرورت ہے، افغانستان میں امن پاکستان کے لیے ضروری ہے، اس کی خودمختاری، جغرافیائی اور سیاسی اہمیت کی بھرپور حمایت کرتے ہیں اور اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے، افغانستان کے عوام طویل جنگ سے نجات چاہتے ہیں، ان کی خوہش میں ان کے ساتھ ہیں۔صدرِ پاکستان نے کہا کہ آج کی پریڈ میں سعودی عرب، چین، ترکی، آذربائیجان، بحرین اور سری لنکا کی افواج کے نمائندوں کی شرکت نے ہمارے ولولوں کو جلا بخشی، یہ ان ممالک کی پاکستان کے ساتھ دوستی کا بھرپور اظہار ہے جس پر وہاں کی حکومت اور عوام کا شکریہ ادا کرتا ہوں، مہاتیر محمد کی خصوصی آمد پر ان کے مشکور ہیں، قوم معزز مہمانوں کا گرم جوشی سے خیر مقدم کرتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سرحدوں پر کشیدہ صورتحال کے باجود پریڈ کا انعقاد افواج کے بلند حوصلوں کا مظہر ہے، جوانوں اور افسران کے پرعزم چہرے، جدید حربی سامان کی نمائش ملکی سلامتی کی ضمانت ہے، پاکستان محفوظ ہے، ہماری معاشی اور معاشرتی ترقی بہت عرصے سے سیکیورٹی حالات کی وجہ سے متاثر رہی، اب پاکستان کو ترقی و کامیابی کے راستے پر لے جانے کا وقت آگیا، ترقی یافتہ ملک شہدا اور غازیوں کے لیے بہترین تحفہ ہوگا۔آخر میں صدرِ پاکستان نے شاندار پریڈ کے انعقاد پر پریڈ کمانڈر، شرکا اور منتظمین کو مبارکباد پیش کی۔یوم پاکستان پر لاہور میں مزار اقبال پر گارڈز کی تبدیلی کی پر وقار تقریب کا انعقاد ہوا۔پاک فضائیہ کے چاک و چوبند دستے نے گارڈز کے فرائض سنبھال لیے اس سے پہلے یہ فرائض پنجاب رینجرز کے پاس تھے۔ایئر کموڈور رضوان ملک نے پریڈ کا معائنہ کیا اور مزار پر حاضری دی، پاک فضائیہ کے دستے نے مفکر پاکستان کو جنرل سلوٹ پیش کیا۔بیس کمانڈر سید صباحت حسن نے مفکرِ پاکستان کے مزار پر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی۔قبل ازیں وفاقی دارالحکومت میں 31 اور صوبائی دارالحکومتوں میں 21-21 توپوں کی سلامی دی گئی۔یوم پاکستان آج ملی جوش وجذبے سیمنایا جا رہا ہے، یوم پاکستان پریڈ کی تقریب کے مہمان خصوصی ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر بن محمد ہوں گے۔ پریڈ میں ترکی کے ایف 16 اور چین کے جے 10 طیارے فضائی کرتب دکھائیں گے۔اس کے علاوہ کراچی ، کوئٹہ ، پشاور سمیت ملک بھر اور آزاد کشمیر میں بھی یوم پاکستان کے حوالے سے تقریبات کا خصوصی اہتمام کیا گیا ۔دوسری جانب چین کے قونصلیٹ میں سفارتی عہدیداران، پاک فضائیہ کی ٹیم، طالبعلموں اور دیگر افراد نے یومِ پاکستان منایا۔




ملائیشین وزیراعظم کے دورہ پاکستان سے سرمایہ کاری کے نئے دروازے کھل گئے، مشترکہ اعلامیہ جاری

اسلام آباد(وائس آف ایشیا) ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد کے دورہ پاکستان سے سرمایہ کاری کے نئے دروازے کھل گئے، مشترکہ اعلامیے میں کہا گیا دونوں ممالک میں کئی شعبوں میں باہمی تجارت اورتعاون کے فروغ اور سرمایہ کاروں کیلئے اچھا ماحول فراہم کرنے پر اتفاق ہوا۔تفصیلات کے مطابق ملیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کا دورہ پاکستان کا مشترکہ اعلامیہ جاری کردیا ، اعلامیہ میں کہا گیا عمران خان اورمہاتیرمحمدکیدرمیان ون آن ون ملاقات ہوئی، دونوں رہنماؤں کے درمیان خوشگوارماحول میں تفصیلی بات چیت ہوئی جبکہ رہنماں میں علاقائی عالمی، باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔مشترکہ اعلامیہ میں کہا ویزہ پابندیوں کے خاتمے سے متعلق ایم اویو اور سیکریٹری خارجہ سطح پر ہونے والے مشاورتی عمل کا جائزہ لیاگیا، مہاتیر محمد نے نشان پاکستان کا اعزاز عطا کرنے پر شکریہ ادا کیا۔اعلامیہ کے مطابق اتفاق ہواپاک ملائیشیاتعلقات اسٹریٹجک تعلقات میں تبدیل ہوچکے، نئی سطح کے تعلقات دونوں ممالک کے درمیان رابطوں اور کئی شعبوں میں باہمی تجارت اورتعاون کو فروغ دیں گے۔مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا اقتصادی شراکت داری معاہدے کا اجلاس جلد بلانے کا فیصلہ کیا اور سرمایہ کاروں کیلئے مناسب ماحول فراہم کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا جبکہ ملیشیا نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی کوششوں کو سراہا۔اعلامیہ میں کہا اعلی تکنیکی تعلیم اورووکیشنل ٹریننگ کے شعبہ میں تعاون اور امت مسلمہ کودرپیش مسائل کے حل کیلئے مشترکہ کوششوں پر بھی اتفاق کیا، دونوں رہنماؤں نے امت مسلمہ کودرپیش مسائل پر تفصیلی بات کی اور فلسطین، کشمیر اور دیگر متنازع مسلم علاقوں پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔جاری اعلامیہ کے مطابق اسلامی شخصیات سے متعلق توہین آمیزموادپرمشترکہ لائحہ عمل اپنانے پر اتفاق کیا اور کہا گیا دہشتگردی کوکسی مذہب سینہیں جوڑا جاسکتا۔مشترکہ اعلامیہ میں کہا گیا وزیراعظم نے مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سےآگاہ کیا، دونوں رہنماوں کا باہمی اقتصادی تعلقات کے مزید استحکام اور دونوں ممالک کے مابین تجارت، سرمایہ کاری کیلئے مواقع پیداکرنے پر اتفاق ہوا۔اعلامیہ کے مطابق ملائیشین پام آئل،اس کی مصنوعات کی برآمدات میں اضافے کی خواہش کااظہار کرتے ہوئے اقتصادی شراکت داری معاہدہ سے متعلق مشترکہ اجلاس جلد بلانے پر بھی اتفاق ہوا جبکہ دونوں ملک اعلی تکنیکی تعلیم اورووکیشنل ٹریننگ کے شعبیمیں تعاون کریں گے۔




اسلام آباد:79 واں یوم پاکستان: وفاقی دارالحکومت میں مسلح افواج کی شاندار پریڈ

اسلام آباد(وائس آف ایشیا)ملک بھر میں یومِ پاکستان ملی جوش و جذبے کے ساتھ منایا جارہا ہے اور اس مناسبت سے اسلام آباد کے پریڈ گراؤنڈ میں مسلح افواج کی شاندار  پریڈ جاری ہے جس میں چین، سعودی عرب اور آذربائیجان کے دستے بھی شریک ہیں۔پریڈ گراؤنڈ میں ہونے والی تقریب کے مہمان خصوصی ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد ہیں۔وزیراعظم عمران خان تقریب میں پہنچ چکے ہیں اور چیئرمین جوائنٹ چیفس سمیت تینوں سروسز چیفس کے ہمراہ سلامی کے چبوترے پر براجمان ہیں۔صدرِ مملکت عارف علوی بھی تقریب میں شرکت کریں گے۔تقریب میں غیر ملکی مہمان بحرین کی نیشنل گارڈ کے سربراہ اور آذربائیجان کے وزیر دفاع بھی تقریب میں شریک ہیں۔اس کے علاوہ حکومتی شخصیات، غیر ملکی سفارتکار اور اعلیٰ سول و عسکری حکام سمیت زندگی کے مختلف شعبہ جات سے تعلق رکھنے والی شخصیات تقریب میں شریک ہیں۔تینوں مسلح افواج کے سپیشل سروسز گروپ اور خواتین کے دستے بھی پریڈ کا حصہ ہوں گے۔ سعودی عرب اور آزربائیجان کے فوجی دستے بھی پریڈ میں حصہ لیں گے جبکہ پہلی بار بحرین، سری لنکا، سعودی عرب اور آزربائیجان کے پیراٹروپیرز بھی فری فال کا مظاہرہ کریں گے۔ترکی کا ایف سولہ اور چین کے جے ٹین طیارے فضائی کرتب کا مظاہرہ کریں گے۔ ائیر دیفنس کا دستہ بھی پریڈ کا حصہ ہوگا۔پاک فضائیہ کے سربراہ ائر چیف مارشل مجاہد انور فلائی مارچ پاسٹ کی قیادت کریں گے۔آرمی ایوی ایشن اور بحریہ ایوی ایشن کے ہیلی کاپٹرز پر مشتمل دستے تین سو فٹ کی بلندی پر فلائی مارچ پاسٹ، پاکستان آرمی، نیوی اور پاک فضائیہ کے کمانڈوز 10 ہزار فٹ کی بلندی سے فری فال کا مظاہرہ کریں گے۔انفنٹری کی مختلف رجمنٹس کے دستے، مکینائزڈ انفنٹری، آرمڈ کور اور ایس پی ڈی کے تحت مختلف رینج کے میزائل بھی پریڈ میں شامل ہوں گے۔اس سے پہلے وفاقی دارالحکومت میں 31 اور صوبائی دارالحکومتوں میں 21، 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔یوم پاکستان پر دن کا آغاز ملکی سلامتی، استحکام امن اور خوشحالی کیلئے خصوصی دعاؤں سے ہوا، وفاقی دارالحکومت میں 31 اور صوبائی دارالحکومتوں لاہور، کراچی، کوئٹہ اور پشاور میں 21، 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔




پاکستان ایک حقیقت ہے اور بھارت کو یہ تسلیم کرنا ہوگا، صدر عارف علوی

اسلام آباد(وائس آف ایشیا)صدر مملکت ڈاکٹرعارف علوی نے کہا ہے کہ پاکستان ایک حقیقت ہے اور بھارت کو یہ تسلیم کرنا ہوگا۔یوم پاکستان کی مناسبت سے مسلح افواج کی پریڈ کی تقریب سے خطاب کے دوران صدر مملکت نے کہا کہ 23 مارچ پاکستان کے حصول کا سنگ میل ہے، قائداعظم کی ولولہ انگیز قیادت نے پاکستان کے حصول کو یقینی بنایا، اللہ تعالیٰ کاشکر ادا کرتیہیں اس نےآزادی جیسی نعمت عطاکی، آج آزادی کا حصول قربانی کا متقاضی ہے، پوری قوم تجدید عہد کے ساتھ یوم پاکستان منارہی ہے۔ آج پاکستان ابھرتی ہوئی معاشی قوت ہے۔صدر مملکت نے کہا کہ جب پاکستان ہماری پہچان بنا تو ہمیں لامحدود چیلنجز کا سامنا تھا، ہماری زندگیوں میں بہت سے نشیب و فراز آئے اور ہم پر جنگیں مسلط کی گئیں، ہمیں حالیہ تاریخ میں اپنی قومی تاریخ کے سب سے بڑے چیلنج دہشت گردی کا سامنا کرنا پڑا، ہم دنیا کی واحد قوم ہیں جس نے اتنی لمبی لڑائی لڑی، جانی و مالی قربانی دی مگر بے پناہ حوصلے سے دہشت گردی کا مقابلہ کیا اور دہشت گردوں کو کامیاب نہیں ہونے دیا۔صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان ایک حقیقت ہے اور ہم زندہ و تابندہ آزاد قوم ہیں، بھارت کو یہ تسلیم کرنا ہوگا، ہمیں 1947 کے نظریات اور تصورات کی عینک سے دیکھنا بھارتی قیادت کی تنگ نظری ہوگی، یہ خطے کے امن کے لیے خطرناک ہے، خطے کو امن کی ضرورت ہے، ہمیں جنگ کے بجائے تعلیم، صحت اور روزگار کی فراہمی پر توجہ دینی چاہیے، ہماری اصل جنگ غربت اور بے روزگاری کے خلاف ہے۔ تمام ممالک کی خودمختاری کا احترام کرتے ہیں ہم لڑائی پر یقین نہیں رکھتے، ہم مسائل کو مذاکرات سے حل کرنے پر یقین رکھتے ہیں لیکن امن کی خواہش کو ہماری کمزوری نہ سمجھا جائے، بھارت بھی حقائق کوتسلیم کرے، ہم نے بہترین حکمت عملی سے بھارت کو جواب دیا، ہم پْر امن قوم ہیں لیکن اپنے دفاع سے ہرگز غافل نہیں۔




پاکستان اپنے دفاع میں ہر قدم اٹھانے کا حق رکھتا ہے، وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد(وائس آف ایشیا)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان اپنے دفاع میں ہر قدم اٹھانے کا حق رکھتا ہے، ہمسایہ ممالک سے برابری کی سطح پر دوستانہ تعلقات چاہتے ہیں، آج کے دن ہمیں مقبوضہ وادی کے اپنے کشمیری بھائیوں کو نہیں بھولنا چاہیے۔یوم پاکستان کے موقع پر وزیراعظم عمران خان نے اپنے پیغام میں کہا ہے 23 مارچ ہماری ملی تاریخ کا عظیم دن ہے، آج کے دن مسلمانان ہند نے اپنی منزل کا تعین کیا، جدوجہد کے باعث 14 اگست 1947 کو پاکستان معرض وجود میں آیا۔ انہوں نے کہا پاکستان کے قیام کی صورت میں عوام کو اپنے حقوق اور مذہبی آزادی ملی، آج کا پاکستان ایک نیا پاکستان ہے، ہم پاکستان کو ایک حقیقی اسلامی فلاحی ریاست بنانے کیلئے کوشاں ہیں، ہمسائیہ ممالک سے برابری کی سطح پر دوستانہ اور پرامن تعلقات کے خواہاں ہیں۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا خواہش ہے جنوبی ایشیا میں سب ملکر غربت کا خاتمہ کریں، پاکستان اپنے دفاع کی خاطر ہر قدم اٹھانے کا حق رکھتا ہے، ہماری امن کی خواہش کو ہرگز کمزوری نہ سمجھا جائے، اللہ تعالی کا شکر ہے کہ پاکستان کا دفاع ناقابل تسخیر ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا ہمیں اپنی بہادر مسلح افواج پر فخر ہے، آج کے دن ہمیں کشمیری بھائیوں کو ہرگز نہیں بھولنا جو بھارتی ریاستی دہشتگردی کا شکار ہیں۔عمران خان نے کہا مقبوضہ کشمیر کے غیور عوام سے بھرپور اظہار یکجہتی، قربانیوں کو سلام پیش کرتے ہیں، ہم حق خودارادیت کے حصول کی سیاسی، سفارتی، اخلاقی حمایت دنیا کے ہر فورم پر جاری رکھیں گے۔




پاکستان نئی اورپراعتماد قیادت کے ساتھ ترقی کی راہ پرگامزن ہے ملیحہ لودھی

نیویارک(وائس آف ایشیا) اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی کا کہنا ہے کہ پاکستان امن وسلامتی ،بین الاقوامی تعاون کی کوششوں کی حمایت جاری رکھے گا۔تفصیلات کے مطابق نیویارک میں پاکستانی مشن برائے اقوام متحدہ میں یوم پاکستان کی پر وقار تقریب منعقد ہوئی جس میں اقوام متحدہ کے اعلی عہدیداروں، سفرا اور مندوبین کی کثیرتعداد نے شرکت کی۔ ڈاکٹرملیحہ لودھی نے یوم پاکستان کا کیک کاٹا۔اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نئی اور پراعتماد قیادت کے ساتھ ترقی کی راہ پرگامزن ہے۔ملیحہ لودھی نے کہا کہ پرامید، نوجوان با صلاحیت، پاکستان مستحکم ، ترقی یافتہ مستقبل کی جانب گامزن ہے۔ پاکستان امن وسلامتی ، بین الاقوامی تعاون کی کوششوں کی حمایت جاری رکھے گا۔