فلم میں ہندو لڑکی کے کردار کیلئے اداکارہ فضاء علی کیلئے خصوصی طور پر ملبوسات تیار کرا ئے لئے گئے

لاہور(وائس آف ایشیا) رائٹر و ڈائریکٹر خلیل الرحمان قمر کی فلم ’’ قاف کنگنا‘‘میں کام کرنے والی اداکارہ فضاء علی کیلئے انکے کردار کی مناسبت سے خصوصی طور پر ملبوسات تیار کرا لئے گئے۔تفصیلات کے مطابق اداکارہ فضاء علی فلم میں ایک ہندو لڑکی انجلی کا کردار نبھا رہی ہیں جبکہ ا ن کے والد کا کردار سینئر اداکار ساجد حسن ادا کر رہے ہیں۔ فلم کے ہدایتکار کی جانب سے اداکارہ فضاء علی کے کردار کی مناسبت سے خصوصی ملبوسات تیار کرائے گئے ہیں۔ فلم کی ریکارڈنگ ان دنوں مقامی فارم ہاؤس میں جاری ہے۔




ماہرہ اور فواد خان کی فلم کے لیے مزید مشکلات

لاہور (وائس آف ایشیا)ماہرہ خان اور فواد خان کی آنے والی ایکشن فلم ’دی لیجنڈ آف مولا‘ جٹ کے ٹریلر نے یوں تو ریلیز ہوتے ہی دھوم مچادی تھی۔تاہم اس فلم کے لیے شروع سے ہی مشکلات رہی ہیں اور اب فلم کی ٹیم کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا۔لاہور ہائی کورٹ نے ’دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘ کو فلم میں ’مولا جٹ‘ نام استعمال کرنے سے روکتے ہوئے تاحکم ثانی حکم امتناع جاری کردیا۔ماہرہ خان اور فواد خان کی فلم کے خلاف 1979 میں ریلیز ہونے والی فلم ’مولا جٹ‘ کے پروڈیوسر سرور بھٹی کے بیٹے متقی بھٹی نے لاہور ہائی کورٹ میں حکم امتناع کی درخواست دائر کی تھی۔متقی سروس کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے لاہور ہائی کورٹ نے فلم ’’دی لیجنڈ ا?ف مولا جٹ‘‘ کو تاحکم ثانی ’’مولا جٹ‘‘ کا نام اور فلم میں پرانی فلم کے ڈائلاگ اور کرداروں کے نام استعمال کرنے سے روک دیا۔ماضی کی مقبول فلم کے مالکانہ حقوق رکھنے والی فلم کمپنی ’باہو فلمز کارپوریشن‘ کی جانب سے فیس بک پوسٹ میں بھی بتایا گیا کہ لاہور ہائی کورٹ نے ’دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘ کو تاحکم ثانی فلم کے نام نام اور ڈائلاگ استعمال کرنے سے روک دیا۔خیال رہے کہ ’دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘ اور 1979 میں بنائی گئی فلم ’مولا جٹ‘ کے پروڈیوسر سرور بھٹی کے بیٹے متقی بھٹی کے درمیان اس وقت سے کاپی رائٹس سے متعلق جنگ جاری ہے جب کہ ماہرہ اور فواد خان کی فلم بنائی جا رہی ہے۔ان کا کیس کاپی رائٹس ٹربیونل اور وفاقی تحقیقاتی ادارے ’ایف آئی اے‘ سمیت دیگر پلیٹ فارمز پر بھی چل رہا ہے۔دی لیجنڈ آف مولا جٹ عید الفطر کے موقع پر پاکستان کے ساتھ ساتھ چین میں بھی بیک وقت ریلیز کی جائے گی۔




زارا شیخ کی طویل عرصے بعد فلمی دنیا میں واپس آنے کی تیاری

کراچی (وائس آف ایشیا) رومانوی ہسٹوریکل فلم ’تیرے پیار میں‘ کے ذریعے 2000 میں فلمی کیریئر کا آغاز کرنے والی اداکارہ زارا شیخ طویل عرصے بعد واپس فلمی دنیا میں آنے کو تیار ہیں۔زارا شیخ نے ’تیرے پیار میں‘ ایک بھارتی سکھ لڑکی کا کردار ادا کیا تھا جو مذہبی مقامات دیکھنے کے لیے پاکستان آتی ہیں، جہاں انہیں ایک مسلمان بینکار سے محبت ہوجاتی ہے۔اپنی پہلی ہی فلم میں شاندار اداکاری دکھانے اور ایوارڈ جیتنے والی زارا شیخ نے اب تک اگرچہ ایک درجن فلموں میں کام کیا ہے، تاہم وہ شائقین کا توجہ رہی ہیں۔زارا شیخ کی آخری فلم ’آنر کلنگ’ 2014 میں ریلیز ہوئی تھی، اس کے بعد وہ اگرچہ 2017 میں فلم ’جنگ‘ میں مختصر کردار میں نظر آئی تھیں، تاہم اب وہ ایک رومانوی کامیڈی فلم ’ہیر مان جا‘ سے شائقین کے دلوں میں اترجانے کے لیے تیار ہیں۔فلم’’ہیر مان جا‘‘ کو رواں برس عیدالاضحیٰ پر ریلیز کیا جائے گا۔زارا شیخ نے بتایا کہ’ ’ہیر مان جا‘‘ میں وہ ڈانس نمبرز کرنے جا رہی ہیں اور انہیں یہ کام بہت اچھا لگا۔اداکارہ نے بتایا کہ وہ فلم میں کردار بھی کرتی دکھائی دیں گی، تاہم انہوں نے اپنے کردار کے حوالے سے کھل کر وضاحت نہیں کی۔زارا شیخ نے بتایا کہ اگرچہ وہ فلم میں مرکزی کردار میں نظر نہیں آئیں گی، تاہم ان کا کردار اچھا ہے اور شائقین کو بہت پسند آئے گا۔اداکارہ نے فلم کی ٹیم اور خصوصی طور پر پروڈیوسر عمران رضا کاظمی کی تعریف کی اور بتایا کہ انہیں ’ہیر مان جا‘ کی ٹیم کے ساتھ کام کرنے میں بہت مزہ آیا۔فلموں سے دور اور اپنے کام کرنے کے حوالے سے زارا شیخ نے بتایا کہ انہیں مختلف منصوبوں میں کام کرنے کی پیش کش ہے، تاہم انہوں نے اس حوالے سے کوئی فیصلہ نہیں کیا۔خیال رہے کہ ’ہیر مان جا‘ میں زارا شیخ ایک شادی کے گانے پرڈانس پرفارمنس کرتی دکھائی دیں گی۔




دس سال تک صرف استادوں کو سنتا رہا ،انکی اجازت کے بعد ریڈیو پر آڈیشن دینے گیا‘ گلوکار غلام علی

لاہور(وائس آف ایشیا) نامور گائیک غلام علی نے کہا ہے کہ دس سال تک صرف استادوں کو سنتا رہا اور پھر ان کی اجازت کے بعد ریڈیو پاکستان پر آڈیشن دینے گیا تھا ، میرا ایمان کی حد تک یقین ہے کہ استادوں کی عزت کے بغیر مقام حاصل نہیں کیا جا سکتا او ر مجھے جو عزت و مرتبہ ملا ہے وہ اسی کا نتیجہ ہے۔ ایک انٹر ویو میں غلام علی نے کہا کہ میرے والد محترم کو بھی موسیقی سے لگاؤ تھا اور وہ استادبڑے غلام علی کے پرستار تھے۔میرے والد نے مجھے موسیقی کی تربیت کیلئے استاد برکت اور استاد مبارک علی کے سپرد کر دیا تھا اور میں دس سال تک استادوں کو سنتا رہا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ15سال کی عمر میں ریڈیو پاکستان پر پہلی غزل پیش کی اور اپنے استادوں سے اجازت لے کر ریڈیو پاکستان آڈیشن دینے کیلئے گیا تھا۔انہوں نے کہا کہ استادوں کے احترام کا نتیجہ تھاکہ پہلی غزل پیش کرنے کے بعد ہر شخص نے میری پذیرائی کی اور مجھے شاباش دی۔دو ماہ بعد مجھے بی کلاس ،پھر ا ے کلاس دی گئی اور جلد ہی مجھے سپیشل کیٹگری میں شامل کر لیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ والد صاحب فلموں میں گائیکی کے سخت مخالف تھے لیکن موسیقار بخشی وزیر نے والد کو بڑی مشکل سے راضی کیا اور اس کے بعد میں نے فلموں کے لئے بھی گیت پیش کئے۔انہوں نے کہا کہ میری شاعر ناصر کاظمی سے بڑی الفت تھی اور ان کے ساتھ بڑا اچھا وقت گزرا،صوفی تبسم مجھے اپنی وہ غزلیں دیا کرتے تھے جو وہ کسی ا ور کو نہیں دیتے تھے۔




سانحہ کرائسٹ چرچ کے ذمے دار ٹرمپ ہیں،جان لیجنڈ

واشنگٹن(وائس آف ایشیا)امریکا کے مقبول گلوکار جان لیجنڈ نے سانحہ کرائسٹ چرچ کا ذمے دار امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو ٹھہرا دیا۔جان لیجنڈ نے کہا کہ صدر ٹرمپ کو تسلیم کرنا ہوگا کہ وہ یہ بیان بازی کر کے غلط کر رہے ہیں، برائی کے اس نظریے کے تحت سیاہ فام افراد نے مساجد، معبد اور گوردواروں کو نشانہ بنایا۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ واقعے کے براہِ راست ذمے دار نہیں ہیں، ان کے بیانیے نے قاتل کو اکسایا۔امریکی گلوکار نے یہ بھی کہا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ برائی کے اس نظریے کی مذمت کریں اور اس کا مقابلہ کریں۔




مائیکل جیکسن کی بیٹی پیرس کی خودکشی کی کوششوں کی خبروں کی تردید

نیویارک(وائس آف ایشیا)آنجہانی پاپ گلوکارہ مائیکل جیکسن کی بیٹی ماڈل پیرس جیکسن کے بارے میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے خودکشی کی کوشش کی ہے جس کے بعد انہیں فوری اسپتال منتقل کردیاگیا تاہم مائیکل جیکسن کی بیٹی پیرس جیکسن نے ان خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہاہے کہ ان کے خلاف پروپیگنڈا کیاجارہا ہے اورایسی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ،غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ذرائع نے انہیں بتایاکہ آنجہانی پاپ گلوکارہ مائیکل جیکسن کی بیٹی ماڈل پیرس جیکسن کے بارے میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے خودکشی کی کوشش کی ہے جس کے بعد انہیں فوری اسپتال منتقل کردیاگیا ہے ،ابتدائی طبی امداد کے بعد پیرس جیکسن کو اسپتال سے چھٹی دیدی گئی ہے ،واضح رہے کہ یہ دوسری بارپیرس جیکسن کے اقدام خودکشی کی خبرسا منے آئی ہے۔دوسری جانب پیرس نے ٹویٹ کے ذریعے ایسی تمام خبروں کی تردید کردی ہے۔




جو کامیابیاں ملیں، انکا تصور بھی نہیں کیا تھا ، آئمہ بیگ

لاہور(وائس آف ایشیا)گلوکارہ آئمہ بیگ نے کہا ہے کہ پلے بیک سنگر کے طور پر مجھے جو کامیابیاں ملی ہیں، ان کا کبھی تصور بھی نہیں کیا تھا۔گلوکاری کی وجہ سے عزت ملی اور یہی میری پہلی ترجیح ہے۔ کم عمری میں پذیرائی ملنے سے حوصلہ بڑھا ہے اور میں مزید لگن اور محنت سے کام کر رہی ہوں۔میڈیارپورٹس کے مطابق ایک انٹر ویو میں انہوں نے کہا کہ مجھے اداکاری کا شوق نہیں اور نہ ہی مجھے اداکاری آتی ہے مگر اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ میں مستقبل میں بھی اداکاری نہیں کروں گی۔ فی الوقت میری پہلی ترجیح گلوکاری ہے اور اسی میں اپنا نام بنانے کی خواہشمند ہوں۔آئمہ بیگ نے کہا کہ کم عمری میں پذیرائی ملنے سے حوصلہ بڑھا ہے اور میں مزید لگن اور محنت سے کام کر رہی ہوں۔




جب بھی ہانیہ کیساتھ ہوتا ہوں اچھا محسوس ہوتا ہے‘عاصم اظہر

کراچی(وائس آف ایشیا) گلوکار عاصم اظہر نے کہا ہے کہ ہانیہ وہ انسان ہیں جو میری زندگی میں بہت سی خوشگوار اور مثبت چیزیں لاتی ہے۔ایک انٹرویو میں گلوکار کا کہنا تھا کہ ہانیہ عامر سے تعلق پر کچھ نہیں کہہ سکتا ،تاہم اس سوال پر میرا دل بہت تیزی سے دھڑک رہا ہے، مجھے ایسا لگتا ہے کہ ہانیہ وہ انسان ہے جو میرے لیے بہت سی مثبت چیزیں لاتی ہے، اور جب بھی ہانیہ کیساتھ ہوتا ہوں مجھے بہت اچھا محسوس ہوتا ہے۔




ستارہ امتیازکے لیے نامزدگی سے کچھ لوگوں کومروڑ اٹھ رہے ہیں، مہوش حیات

لاہور(وائس آف ایشیا)پاکستانی فلم انڈسٹری کی نامور اداکارہ مہوش حیات نے کہا ہے کہ جب سے میری ستارہ امتیاز کیلئے نامزدگی ہوئی ہے، کچھ لوگوں کے مروڑ اٹھ رہے ہیں اور ان کا حسد اور بغض سامنے آرہا ہے۔میں ایسے لوگوں کیلئے صرف دعا ہی کر سکتی ہوں اور تجویز دوں گی کہ محنت کر کے مقابلے کی دوڑ میں شامل ہوجائیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق ایک انٹر ویو میں اداکارہ نے کہا کہ اس سے پہلے بھی فنکاروں کو ایوارڈز ملتے رہے ہیں لیکن کبھی اس طرح تنقید نہیں کی گئی۔ اگر حکومتی سطح پر میری فنی خدمات کا اعتراف کیا گیا ہے تو اس پر لوگو ں کو اپنا سر نہیں پیٹنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ جو لوگ میرے خلاف مہم کا حصہ ہیں میں ان کیلئے میری خواہش ہے کہ آئندہ برس وہ بھی اعزاز کیلئے نامزد ہوں۔




کتنی بڑی پیشکش ہو اب بھارت نہیں جاوں گی ‘وینا ملک

کراچی (وائس آف ایشیا) پاکستانی اداکارہ و ٹی وی میزبان وینا ملک نے کہا ہے کہ اب اگر بھارت سے فلموں میں کام کرنے کی پیش کش موصول بھی ہو تو کام کے لیے نہیں جاؤں گی،چاہے کتنی بھی بڑی پیش کش کی جائے یا انہیں سلمان خان اور شاہ رخ کے ساتھ کام کرنے کا کہا جائے پھر بھی پاکستان چھوڑ کر کام کے لیے بھارت نہیں جاوں گی۔منگل کو ایک انٹرویو میں انہو ں نے کہا کہ بھارت میں کام کرنا اپنی مرضی سے چھوڑا،اگرچہ اس دوران مجھے دھمکیاں بھی ملتی رہیں، لیکن میں نے کبھی دھیان نہیں دیا ۔۔وینا ملک نے بتایا کہ بھارتی فلم انڈسٹری میں مرضی سے کام نہ کرنے کی مختلف وجوہات اور مسائل تھے۔اداکارہ نے کہا کہ اگر کوئی پاکستانی اداکار پوری زندگی بھی بھارتی فلم انڈسٹری کو دے دے گا تو بھی وہاں اس کا نام نہیں ہوگا جبکہ پاکستان میں تھوڑا بھی کام کرنے کے بعد اس کے مرنے کے بعد بھی اس کا نام پاکستانی انڈسٹری میں یاد رکھا جائیگا۔انہوں نے کہا کہ بھارت سے کام ملنے کی پیشکش بند نہیں ہوئی، ہر کسی کو اپنے تجربات سے سیکھنا چاہیے اور میں نے بھی تجربات سے ہی سیکھا ہے۔وینا ملک نے کہا کہ اب بھارت کی بجائے اپنے ملک میں رہ کر محنت کروں گی ، بھارت جا کر اچھا تجربہ نہیں بلکہ اچھا سبق ملا۔




مہوش حیات کو شائقین پر تنقید مہنگی پڑگئی

کراچی(وائس آف ایشیا) لوگوں پر تنقید کرنا مہوش حیات کو مہنگا پڑ گیا، عامرلیا قت نے اداکارہ کو ٹویٹرپیغام میں کہا ہے کہ وہ ان پر مقدمہ درج کروائیں گے۔ جب سے اس بات کا اعلان ہوا ہے کہ اداکارہ مہوش حیات کو تمغہِ امتیاز سے نوازا جائے گا تب سے ہی سوشل میڈیا پر بحث چھڑ گئی ہے کہ یہ فیصلہ غلط ہے، سوشل میڈیا سارفین کا کہنا ہے پاکستان میں اور بہت سے سینئر فنکار موجود ہیں جو اس اعزاز کے حقدار ہیں اور اس لیے ایک جونئیر اداکارہ کو یہ اعزاز دیا جانا غلط ہے اور یہ فیصلہ میرٹ کے مطابق نہیں۔شائقین نے سوشل میڈیا پر اس فیصلے خلاف شدید تنقید کی جس پر اداکارہ مہوش حیات ضبط نہ کر پائیں اور انہوں نے لوگوں پر تنقید کرتے ہوئے ٹویٹر پیغام میں کہا کہ آپ لوگو اسی طرح اپنے ملک کے فنکاروں کی کردار کشی کرتے ہیں ، انہوں نے لوگوں کی تنقید پر افسوس کا اظہار کیا۔اداکارہ کے اس ٹویٹ کے بعد تحریک انصاف کے رکن پارلیمنٹ اور ٹی وی میزبان ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے انہیں ٹویٹر پر ہی جواب دیتے ہوئے کہا کہ کیوں نہ میں آپ کی فلم ’لوڈ ویڈنگ‘ پر مقدمہ درج کروا دوں؟ انہوں نے کہا کہ اس فلم کی ساری کہانی میرے گرد گھومتی ہے، پوری فلم میں میرے کردار کا مزاق اڑایا گیا، میری اجازت لیے بغیر میرے کردار پر منفی فلم بنائی گئی اور آپ نے اسے روکنے کی کوشش نہیں کی بلکہ اس میں کام بھی کیا۔یاد رہے کہ اداکارہ مہوش حیات نے چند ڈراموں اور ٹی وی اشتہارات میں کام کیا ہے اور انہیں حکومت کی جناب سے تمغہ امتیاز دینے کا اعلان کیا گیا ہے، عوام اور فنکاروں نے اس فیصلے پہر شدید حیرانی کا اظہار کیا ہے کیونکہ مہوش حیات بہت جونئیر اداکارہ ہیں جبکہ پاکستان میں بہت سے قابل اور سینیئرفنکار موجود ہیں جو اس اعزاز کے حقدار ہیں۔ سوشل میڈیا پر بھی اس حوالے سے بحث چھڑی ہوئی ہے۔




ثمینہ پیرزادہ اپنی 64ویں سالگرہ 9اپریل کو منائیں گی

لاہور(وائس آف ایشیا )معروف اداکارہ ثمینہ پیرزادہ اپنی 64ویں سالگرہ کا کیک 9اپریل کو اپنے خاندان اور دوستوں کے ہمراہ کاٹیں گی۔تفصیلات کے مطابق فلم وٹی وی کی ناموراداکارہ ثمینہ پیرزادہ 9 اپریل 1955 کو لاہور میں پیدا ہوئیں۔انہوں نے ٹی وی اور فلموں میں اداکاری کے ساتھ ہدایتکارہ کے طور پر بھی کام کیا انہوں نے اپنی فلمی زندگی میں نزدیکیاں، مکھڑا، بازار حسن، بلندی اور خواہش جیسی فلموں میں اداکاری کی اور ٹی وی کے بیشمار ڈرامہ سیریلز میں بھی کام کیا اس کے علاوہ انہوں نے سٹیج ڈراموں پر بھی اداکاری کے جوہر دکھائے۔




اداکار محمد علی کی13ویں برسی’’آج‘‘منائی جائے گی

لاہور/ جہانیاں(وائس آف ایشیا) اداکار محمد علی کی13ویں برسی آج19مارچ کو منائی جائے گی ۔محمد علی پاکستان فلم انڈسٹری کا بہت بڑا نام اور ایک لیجنڈ اداکار تھے،آج ان کے مداح ان کی بارھویں برسی پر انہیں یاد کر رہے ہیں۔محمد علی کافلمی سفر 1962 میں چراغ جلتا رہا سے شروع ہوا، پھر محمد علی کے فن کا چراغ برسوں روشن رہا۔شہنشاہ جذبات محمد علی، فلم انڈسٹری کی سنہری تاریخ انکے ذکر کے بغیر ادھوری ہے۔محمد علی نے اپنے کیرئر کا آغاز ریڈیو پاکستان حیدرآباد، سندھ سے کیا۔ ان کی بھرپور آواز نے انہیں ایک بہترین ریڈیو صداکار کی حیثیت سے منوایا اور انہیں فلمی دنیا تک پہنچانے میں بھی ان کی آواز نے ہی اہم کردار ادا کیا۔اس وقت ایک ڈرامے کی صدا کاری کے دس روپے ملا کر تے تھے۔بعد ازاں انہوں نے ریڈیو پاکستان بہاولپور سے بھی پروگرام کیے۔ان کی آواز سن کر ریڈیو پاکستان کے جرنل ڈرائریکٹر ذوالفقار احمد بخاری المعروف زیڈ اے بخاری صاحب نے انہیں کراچی بلا لیا۔ سونے کو کندن بنانے میں زیڈ۔ اے بخاری مرحوم کا بہت ہاتھ تھا۔ انہوں نے محمد علی کو آواز کے اتارچڑھاؤ، مکالموں کی ادائیگی، جذبات کے اظہار کا انداز بیاں اور مائیکرو فون کے استعمال کے تمام گر سیکھا دیئے۔ زیڈ۔ اے بخاری نے ان کی آواز کی وہ تراش خراش کی کہ صدا کاری میں کوئی ان کا مدمقابل نہ رہا۔سن 1962میں فلم’چراغ جلتا رہا‘سے فلمی کیرئرکا آغازکیا۔ فلم کا افتتاح کراچی کے نشاط سینما میں مادر ملت محترمہ فاطمہ جناح نے اپنے ہاتھوں سے کیا۔ فلم زیادہ کامیاب نہ ہو سکی مگر محمد علی کی اداکاری اور مکالمے بولنے کے انداز نے دوسرے فلم سازوں اور ہدایتکاروں کو ضرور متوجہ کر لیا اور جلد ہی ان کا شمار ملک کے معروف فلمی اداکاروں میں کیا جانے لگا۔جبکہ محمد علی کی اور مقبول فلم ’’ شرارت‘‘ 1964ء میں ریلیز ہوئی۔محمد علی کی مشہور فلموں میں جاگ اٹھا انسان ، اموش رہو، ٹیپو سلطان ، جیسے جانتے نہیں، آگ ، گھرانہ ،میرا گھر میری جنت ،بہاریں پھر بھی آئیں گی ،محبت ،تم ملے پیار ملا اور دیگر بہت سی فلمیں شامل ہیں۔پہلی فلم کے بعد محمد علی نے ابتدائی پانچ فلموں میں بطورولن کام کیا۔ محمد علی کو شہرت 1963ء میں عید الاضحی پرریلیز ہونے والی فلم ’شرارت‘سے ملی۔ انہوں نے درجنوں فلموں میں بحیثیت ہیرو کے کام کیا۔ ان کی فلموں کی زیادہ ترہیروئن ان کی اپنی اہلیہ زیبا تھیں نیز ان فلموں میں زیادہ ترگانے جو ان پر فلمائے گئے ان کے گلوکار مہدی حسن تھے۔انہوں نے 300 فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے۔’علی زیب‘کی جوڑی اتنی کامیاب تھی کہ انہوں تقریباً 75 فلموں میں اکٹھے کام کیا۔محمد علی نے کبھی بھی سیاست میں حصہ نہیں لیا۔ ان کے ذوالفقار بھٹو کے ساتھ دوستانہ تعلقات تھے۔ 1974ء میں مسلم سربراہی کانفرنس میں شرکت کے لیے آئے ہوئے سلطان قابوس اورشاہ فیصل شہید نے علی زیب ہاؤس میں ہی قیام کیا تھا،اسی دوران فلسطین آزادی کے رہنما یاسر عرفات مرحوم نے بھی محمد علی سے ملنے کی خواہش کی تھی، اور مسقط عمان کے سلطان قابوس نے انھیں غیرسرکاری سفیر کی حیثیت سے تعریفی شیلڈ پیش کی، ایران کے شہنشاہ نے پہلوی ایوارڈ دیا۔اس طرح عالمی سطح پر محمد علی کو مقبولیت حاصل رہی۔ پاکستان میں ہر سربراہ حکومت سے ان کے اچھے اور قریبی تعلقات قائم رہے۔ بھٹو کی حمایت کرنے پر 1977ء میں جنرل ضیاء الحق کے دور حکومت میں انھیں جیل بھی کاٹنی پڑی۔ تاہم حالات ٹھک ہونے کے بعد جنرل ضیاء ا لحق سے محمد علی کے اچھے اور قریبی تعلقات ہو گئے۔ وہ ضیاء الحق کے ساتھ 1983ء میں بھارت کے دور پر بھی گئے۔ نواز شریف سے ان کے بہت قریبی تعلقات رہے، وہ ان کے ایڈوائز بھی رہے،محمد علی کو اسی طرح ہمیشہ قومی سطح پر اولیت دی جاتی رہی۔انھوں نے ‘‘علی زیب فاؤنڈیشن’’ کے تحت سر گودھا، فیصل آباد، ساہیوال اور میانوالی میں تھیلسیمیا میں مبتلا بچوں کے علاج اور کفالت کے لیے ہسپتال قائم کیے، جہاں بلا معاوضہ بچوں کا علاج کیا جاتا ہے۔ اس ادارے کے تمام اخراجات وہ اپنے وسائل سے پورے کرتے تھے۔ ‘‘علی زیب فاؤنڈیشن’’ کے علاوہ محمد علی کئی اداروں کے صدر اور فاؤنڈر ممبر رہے۔ ان تمام اموار میں ان کی پیاری بیوی بھی ان کے ہم رکاب رہیں۔ نجی سطح پر بھی علی زیب ضرورت مندوں کی ہر ممکن مدد معاونت کرتے رہتے تھے۔ انھوں نے کئی بیواؤں اور یتیموں کے وظیفے مقرر کر رکھے تھے۔ بہت سے غریبوں کے گھر کے چولہے محمد علی کے امدادی چیک سے جلتے تھے۔ انھوں نے ہمیشہ اپنے ساتھیوں کے بْرے وقت میں کام آتے تھے۔محمد علی نے 277 فلموں میں کام کیا جن میں 248 اردو، 17 پنجابی، 8 پشتو، 2 ڈبل وریڑن انڈین، 1 بنگالی، 28 فلموں میں بطور مہمان اداکار اور ایک ڈاکو منٹری فلم میں کام کیا۔پاکستانی سینما کے یہ لازوال فنکار 19 مارچ 2006 میں اچانک دل کا دررہ پڑنے پردنیا سے کوچ کرگئے۔




لاہوروالوں کی عزت ،محبت اور چاہت کو لفظوں میں بیان نہیں کیا جا سکتا‘ عدنان صدیقی

لاہور(وائس آف ایشیا) کراچی سے تعلق رکھنے والے سینئر اداکار عدنان صدیقی نے کہا ہے کہ جب بھی کسی پراجیکٹ کے سلسلہ میں لاہور آتا ہوں مجھے یہاں بے پناہ عزت ،محبت اور چاہت ملتی ہے ،ہر دور ے میں لاہور کے کھانوں اور تاریخی مقامات کی سیر سے ضرور لطف اندوز ہوتا ہوں۔ایک انٹرویو میں عدنان صدیقی نے کہا کہ لاہور فن و ادب اور ثقافت کا گڑھ ہے اور اس شہر نے بڑے بڑ ے اداکار ،گلوکار ،رائٹرز اور ڈائریکٹرز پیدا کئے ہیں جنہوں نے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منواہا ہے۔انہوں نے کہا کہ لاہور شہر پر خصوصی مہربانی ہے کہ دوسرے شہر سے آنے والا کبھی ناکامی کا منہ نہیں دیکھتا اور یہ میرا ذاتی مشاہدہ بھی ہے۔ عدنان صدیقی نے کہا کہ لاہور والے جتنی محبت اور چاہت سے پیش آتے ہیں اسے لفظوں میں بیان نہیں کیا جا سکتا اور میں کراچی میں اکثر و بیشتر اس کا ذکر کرتا ہوں۔




کامیابی پرسراہ نہیں سکتے تونفرت بھی نہ پھیلائیں:حدیقہ کیانی

لاہور(وائس آف ایشیا)معروف گلوکارہ حدیقہ کیانی اداکارہ مہوش حیات کی حمایت کیلئے میدان میں آگئیں۔انہوں نے مہوش حیات کو سول ایوارڈ ملنے پر تنقید کے حوالے سے کہا کہ ہمارے ملک میں دن بدن عدم برداشت اور نفرت بڑھتی جارہی ہے۔ میں نے 2006 میں تمغہ امتیاز حاصل کیا تھا، وہ وقت بہت حیرت انگیز اورخوشی سے بھرا تھا،اس کے بعد میں نے لوگوں کی تنقید کے باوجود پاکستان میں رہ کرپاکستان کیلئے کام کرناجاری رکھا۔ ہم لوگ محبت بانٹ سکتے ہیں،اگر ہم وطنوں کی کامیابیوں پر انہیں سراہ نہیں سکتے تو کم از کم نفرت بھی نہ پھیلائیں۔




ہانیہ عامر اور عاصم اظہر کی دوستی کے سوشل میڈیا پر چرچے

لاہور(وائس آف ایشیا)پاکستانی اداکارہ ہانیہ عامر اور گلوکار عاصم اظہر کی قربتیں بڑھنے لگیں اور ان کی محبت کی داستان زبان زدعام ہونے لگی ہے ،آج کل سوشل میڈیا پر ان دونوں کی دوستی کے حوالے سے بہت چرچا ہورہاہے۔کراچی میں فیشن پاکستان ویک کے ریمپ پر دونوں ایک ساتھ چلے تو مداح ان دونوں کی کیمسٹری دیکھ کر حیران رہ گئے۔ہانیہ عامر نے سرخ رنگ کا نہایت خوبصورت عروسی جوڑا زیب تن کیا تھاجبکہ عاصم اظہر کرتا پاجامہ اور ویسٹ کوٹ پہنے ہوئے تھے۔عاصم اظہر ریمپ پر گلوکاری بھی کررہے تھے جبکہ ان دونوں کے رومانوی انداز کاسوشل میڈیا پر خوب چرچا ہوا۔رواں سال ہانیہ عامر نے اپنی 22 ویں سالگرہ منائی تھی جس کی شاندار تقریب کا اہتمام عاصم اظہر نے کیا تھا، اس دوران عاصم اظہر پورے وقت ہانیہ کیساتھ نظر آئے جبکہ ان کی ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی،متعدد مداحوں نے یہ بھی کہا کہ ان دونوں کا افیئر چل رہا ہے۔یہ دونوں ایک ساتھ متعدد ایونٹس میں بھی ساتھ شریک ہو ئے جبکہ دونوں اپنے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر بھی ایک دوسرے کے ساتھ تصاویر شیئر کررہے ہیں جنہیں دیکھ کر اندازہ ہورہا ہے کہ یہ دونوں واقعی ایک دوسرے کو کافی پسند کرتے ہیں۔




مہوش حیات تمغہ امتیاز کے بعد ایک اور تنازع میں پھنس گئیں،عامر لیاقت حسین کی اداکارہ پر تنقید

کراچی (وائس آف ایشیا)نامور پاکستانی اداکارہ مہوش حیات تمغہ امتیاز کے تنازع سے ابھی باہر نکلی ہی نہیں تھیں کہ ایک اور تنازع کا شکار ہوگئیں۔میڈیا رپورٹ کے مطابق اداکارہ مہوش حیات کو جب سے تمغہ امتیاز دینے کا اعلان ہوا ہے سوشل میڈیا پر ان کے خلاف محاذ کھل گیا ہے اور لوگ اس بات پر حیران ہیں کہ آخر مہوش حیات نے ایسا کون سا کارنامہ انجام دے دیا کہ انہیں تمغہ امتیاز سے نوازا جارہا ہے،مہوش حیات نے خود پر تنقید کرنیوالوں کو جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ ’آپ لوگ اس طرح اپنے ملک کے فنکاروں کی کامیابیوں کا جشن مناتے ہیں انہیں بلاوجہ تنقید کا نشانہ بنا کر آپ کو شرمی آنی چاہئے ‘۔تاہم مہوش حیات کو یہ تنقید اس وقت الٹی پڑگئی جب پاکستانی اینکر اور رکن اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین نے انہیں آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا آپ کی فلم’’لوڈ ویڈنگ‘‘میں میری رضامندی کے بغیر میرے کردار کو بالکل غلط انداز میں پیش کیاگیا اور مجھے بدنام کیاگیا آپ کی پوری فلم میرے ہی ارد گرد گھوم رہی تھی۔ بطور فنکارہ نہ صرف آپ نے اس فلم میں کام کیا بلکہ آپ اس بکواس کو روکنے میں بھی ناکام رہیں لہٰذا مجھے آپ پر مقدمہ نہیں کردینا چاہئے، بہت شرم کی بات ہے۔




ٹی وی فنکاروں کو فلم انڈسٹری کو وقت دینا ہوگا:فیصل قریشی

کراچی (وائس آف ایشیا) اداکار فیصل قریشی نے کہا ہے کہ فنی زندگی کا آغاز فلمی دنیا سے کیا تھا آج فلم انڈسٹری کے بدلتے ہوئے حالات دیکھ کر خوشی ہورہی ہے کہ نئی نسل کے فلم میکرز نے اپنی فنی صلاحیتوں کے ذریعے کامیاب ترین فلمیں ’’نامعلوم افراد، پنجاب نہیں جاؤں گی ، بن روئے ، جوانی پھر نہیں آنی، وار، میں ہوں شاہد آفریدی ،جانان ، ایکٹر ان لا ،پرچی‘‘ و دیگر پیش کرکے کمال کردیا ہے۔ فلم ڈسٹری بیوٹرز بھی معیاری کام کو پیش کررہے ہیں گو کہ ماضی میں فلموں میں کام کرنے کا تجربہ تلخ رہا، اس کے باوجود اب وقت آگیا ہے کہ ٹی وی فنکاروں کو فلم انڈسٹری کو وقت دینا ہوگا۔ٹی وی ڈراموں نے مجھے اصل شہرت اور مقبولیت دی جس کا کبھی سو چا بھی نہ تھا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک ملاقات میں میڈیا سے کیا۔انہوں نے کہا ٹی وی ڈراموں میں ڈیمانڈ کی وجہ سے اپنی فٹنس پر بھر پور توجہ دے رہا ہوں،ہر چینل کے ڈرامے میں موجود ہونا اپنے کام سے مخلص ہو نے کا ثبوت ہے۔




اداکار حمزہ علی عباسی نے عافیہ صدیقی کی ممکنہ رہائی کی تصدیق کردی

لاہور (وائس آف ایشیا) اداکار حمزہ علی عباسی نے عافیہ صدیقی کی ممکنہ رہائی کی تصدیق کردی، اداکار کی جانب سے ٹوئٹر پر جاری کیے گئے پیغام میں کہا گیا ہے کہ سننے میں آیا ہے کہ جلد قوم کی بیٹی عافیہ صدیقی اپنے گھر لوٹ آئے گی، یاللہ مدد!۔ تفصیلات کے مطابق معروف اداکار حمزہ علی عباسی کی جانب سے امریکا کی جیل میں قید عافیہ صدیقی کی رہائی سے متعلق ٹوئٹ کیا گیا ہے۔اداکار حمزہ علی عباسی نے عافیہ صدیقی کی ممکنہ رہائی کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ سننے میں آیا ہے کہ جلد قوم کی بیٹی عافیہ صدیقی اپنے گھر لوٹ آئے گی، یاللہ مدد!۔ دوسری جانب اس حوالے سے معروف صحافی اور تجزیہ نگار اوریا مقبول جان کا کہنا ہے کہ آج سے دو تین ماہ قبل جب کہ قیدیوں کے تبادلے کی بات آئی تو طالبان نے عافیہ صدیقی کی رہائی کا نام دیا تھا۔اوریا مقبول جان کا کہنا تھا کہ طالبان کہتے ہیں کہ ہمیں پاکستان کی طرف سے عافیہ صدیقی کا نام دیا گیا۔اوریہ مقبول جان نے کہا کہ عمران خان وہ پہلے سیاستدان تھے جنہوں نے عافیہ صدیقی کی رہائی کا آواز اٹھائیں اور اس کے لیے ان کی تعریف کرنا بنتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ 2013ء4 کی بات ہے تب عافیہ صدیقی امریکی جیل میں قید نہیں تھی،تب عمران خان نے کہا تھا کہ مجھے ایک قیدی عورت کا علم ہوا ہے جو بگرام جیل میں ہے اور اس عورت کی چیخیں سنائی دیتی ہیں۔اوریا مقبول جان نے کہا کہ عافیہ صدیقی 16 مارچ کو پاکستان آ جائیں گی۔جب کہ اسی متعلق ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی بہن کا کہنا ہے کہ عافیہ کی رہائی کے لیے 16 مارچ کی تاریخ کہی جا رہی ہے پر میرے خیال سے ان کو جنوری میں ہی آجانا چاہئیے تھا۔انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم عمران خان اس کام میں مخلص ہیں تاہم وہ جذبات سے کوئی کام نہیں لینا چاہتے۔خیال رہے گذشتہ سال نومبر میں ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی ہیوسٹن میں پاکستانی سفارتی عملے سے ملاقات ہوئی تھی جس میں انہوں نے عمران خان کے نام پیغام بھی بھجوایا ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے ماضی میں میری بہت حمایت کی ہے وہ ہمیشہ سے میرے ہیرو رہے ہیں۔ اپنے خط میں وزیراعظم کو مخاطب کرتے ہوئے عافیہ صدیقی کا کہنا ہے کہ امریکا میں میری سزا غیر قانونی ہے میں قید سے باہر نکلنا چاہتی ہوں۔۔عافیہ صدیقی کو جیسے ہی علم ہوا کہ عمران خان وزیر اعظم بن گئے ہیں تو انہوں نے عمران خان کے نام پیغام بھیجا تھا۔ان کی بہن نے بتایا تھا کہ تب میں دفتر خارجہ بھی گئی لیکن وہاں ملاقات نہ ہو سکی۔




گائیکی شوق نہیں، جنون ہے :حمیراارشد

لاہور(وائس آف ایشیا)گلوکارہ حمیراارشد نے کہاہے کہ گائیکی میرا شوق نہیں جنون ہے اور میں اپنے پرستاروں کی پسند کومدنظر رکھتے ہوئے گانے بناتی ہوں۔ایک انٹرویومیں انہوں نے کہامجھے شروع ہی سے گلوکاری کا بیحد شوق تھا جو آگے چل کر جنون بن گیا۔حمیراارشد نے کہا آج تک کبھی ایسا کوئی گیت نہیں گایا جسکی وجہ سے مجھے شرمندگی ہو، ہمیشہ صاف ستھرے گانے گائے جن میں اپنے پرستاروں کی پسند کو ہمیشہ مد نظر رکھا۔