وزیراعظم عمران خان کی ملائیشیا میں مہاتیر محمد سے ملاقات

پترا جایا(وائس آف ایشیا) وزیراعظم عمران خان نے ملائیشیا کے شہر پترا جایا میں اپنے ہم منصب مہاتیر محمد سے ملاقات کی‘وزیراعظم کے دفترپہنچنے پر مہاتیر محمد نے وزیراعظم پاکستان کا پرتپاک استقبال کیا جس کے بعد عمران خان نے ملاقات کرنے والوں کی کتاب میں اپنے تاثرات بھی درج کیے.وزیراعظم کے دورے کے دوران دونوں ممالک کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون کے متعدد سمجھوتوں اور مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط کیے جانے کی توقع ہے عمران خان ایک تھنک ٹینک تقریب سے بھی خطاب کریں گے جس کا اہتمام ملائیشیا کے اسٹریٹجک اور بین الاقوامی علوم کے ادارے نے کیا ہے.اس کے ساتھ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال بھی اجاگر کریں گے اور بھارت کے جارحانہ رویے کی وجہ سے علاقائی امن وسلامتی کو درپیش خطرات کے خاتمے اور مسئلہ کشمیر کے پرامن حل پر زور دیں گے.قبل ازیں ملائیشیا کے 2 روزہ دورے کے لیے کوالالمپور انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے بونگا رایا کمپلیکس آمد پر ملائیشیا کے وزیر دفاع محمد صابو اور اعلیٰ حکام نے ان کا استقبال کیا تھا ملائیشیا میں پاکستان کی ہائی کمشنر آمنہ بلوچ اور ہائی کمیشن کے دیگر حکام بھی اس موقع پر موجود تھے جبکہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، منصوبہ بندی وترقی کے وزیر اسد عمر، مشیر تجارت عبدالرزاق دا?د اور سیکرٹری خارجہ سہیل محمود ان کے ہمراہ ہیں.وزیر اعظم کا یہ دورہ پاکستان اور ملائیشیا کے مابین مضبوط تعلقات اور دونوں ممالک کے درمیان اسٹریٹجک شراکت داری کو مزید تقویت دینے کے تناظر میں مشترکہ عزم کی علامت ہے.وزیراعظم ہاؤس سے جاری اعلامیے میں کہا گیا تھا پاکستان اور ملائیشیا عقیدے اور ثقافت کے اعتبار سے قریبی اور دوستانہ تعلقات رکھتے ہیں اور اس میں باہمی اعتماد اور مفاہمت کے خواہش مند ہیں.وزیراعظم عمران خان مختلف ملاقاتوں کے دوران علاقائی اور بین الاقوامی امن وسلامتی کے حوالے سے پاکستان کے مثبت کردار پر بھی بات کریں گے.
وائس آف ایشیا4فروری2020 خبر نمبر49




ایل این جی کیس‘شاہد خاقان عباسی کے جوڈیشل ریمانڈ میں 21فروری تک توسیع

 
اسلام آباد (وائس آف ایشیااسلا م آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد اعظم خان نے ایل این جی کیس میں گرفتار سابق وزیر اعظم اور پاکستان مسلم لیگ (ن)کے سینئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی کے جوڈیشل ریمانڈ میں 21فروری تک توسیع کر دی۔ دوران سماعت سابق وزیر اعظم سمیت دیگر ملزمان کی حاضری لگائی گئی۔ جج اعظم خان نے کہا کہ کچھ ملزمان کے مچلکے ابھی تک جمع نہیں ہوئے۔ ملزم شاہد اسلام کے وارنٹ جاری کئے گئے تاہم اس میں ابھی تک کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔ دوران سماعت نیب کی جانب سے ملزم شاہد اسلام کے حوالہ سے رپورٹ عدالت میں جمع کروا دی۔ نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ ملزم شاہد اسلام ابھی تک خود بھی پیش نہیں ہوئے اور نہ ہی ان کی جانب سے کوئی وکیل پیش ہوا ہے۔ ملزم کی ٹریول ہسٹری کی تفصیلات بھی رپورٹ کے ساتھ منسلک کی گئی ۔ نیب پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ ملزم پاکستان میں یا کسی بیرون ملک موجود ہے اس حوالہ سے انکوائری جاری ہے۔ اس پر احتساب عدالت کے جج کا کہنا تھا کہ کس پتہ پر نوٹس کیا جائے پوری دنیا میں تو نوٹس جاری نہیں کرسکتے۔ عدالت نے ایل این جی کیس کی مزید سماعت 21فروری تک ملتوی کر دی۔ سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ چورو ں کی حکومت ہے جو عوام کو لوٹ رہی ہے، عوام کا پیسہ اے ٹی ایم کھا گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت میں جو مرضی تبدیلی لے آئیں، بہتری نہیں آئے گی۔ عمران خان اور عثمان بزدار بتائیں عوام کو کون لوٹ رہا ہے؟ ان کا کہنا تھا کہ تبدیلی کے اثرات عوام نے خود دیکھ لئے۔ عوام گھبرائیں نہیں سب ٹھیک ہوجائے گا، حکومت آج سے نہیں جب سے آئی ہے تب سے ناکام ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک میں آج آٹے اور چینی کی قیمتیں دیکھیں ،ہر روز پاکستان کے عوام سے د وارب روپے لوٹے جارہے ہیں۔ مہنگائی پر کوئی پوچھنے والا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت تو ختم ہو چکی ،جنازہ رکھا ہے جب مرضی پڑھ لیں۔
وائس آف ایشیا4فروری2020 خبر نمبر62




عہد کر رکھا ہے کہ میں اپنی زندگی میں سرینگر پر پرچم لہراؤں گا، علی محمد خان

  
اسلام اAباد(وائس آف ایشیا) وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے کہا ہے کہ میں نے عہد کر رکھا ہے کہ اپنی زندگی میں سرینگر پر پرچم لہراؤں گا، غزوہ ہند کی ابتداء ہو چکی ہے ‘ ایسی حکمت عملی بنائیں گے جس سے دشمن کو اندر سے کھوکھلا کریں گے۔ پیر کو قومی اسمبلی میں یوم یکجہتی کشمیر کی مناسبت سے بحث میں حصہ لیتے ہوئے وزیر مملکت علی محمد خان کہا کہ کشمیر کی آزادی کے لئے ہمیں لفاظتی سے زیادہ دل و جان سے ایک منصوبہ بنانا ہوگا۔اس طرح جس طرح یہودیوں نے کئی سو سال جدوجہد کی اور اسرائیل بنا کر چھوڑا۔ ہمیں اﷲ سے مدد مانگنی چاہیے مگر جذبات کے ساتھ ساتھ ہمیں ہوش سے بھی کام لینا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ میں کشمیر کے معاملے پر ہمیشہ جذباتی ہو جاتا ہوں کیونکہ میرے قائد قائداعظم محمد علی جناح نے اپنے آخری وقت میں کشمیر‘ مہاجرین اور فلسطین کا ذکر کیا۔انہوں نے کہا کہ سید علی گیلانی 85 سالہ ضعیف شخص ہیں جو کہتے ہیں کہ ہم پاکستانی ہیں۔انہوں نے کہا کہ برہان مظفر وانی شہادت کے بعد پاکستانی پرچم میں دفن ہوا‘ اب کون سا استصواب رائے باقی ہے۔ کشمیریوں نے تو اپنا فیصلہ دے دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آسیہ اندرابی کے شوہر ڈاکٹر قاسم ختو 27 سالوں سے جیل میں ہیں۔ 27 سال تک لگاتار جیل میں تو نیلسن منڈیلا نے بھی نہیں گزارے۔ یاسین ملک کی جوانی جیلوں میں گزر گئی مگر ان کا جذبہ اب بھی جوان ہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیری ماؤں بہنوں کی بھارتی فوج عصمت دری کر رہی ہے۔ اس صورتحال میں ہمارا نماز روزہ کچھ بھی قبول نہیں ہوگا۔ میں نے عہد کر رکھا ہے کہ میں اپنی ندگی میں سری نگر پر پرچم لہراؤں گا۔ غزوہ ہند کی ابتدا ہو چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسی حکمت عملی بنائیں گے دشمن کو اندر سے کھوکھلا کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے معاملے پر بھارت کے مقابلے کے لئے پوری قوم تیار ہے۔ ظالم کے خلاف سینہ سپر ہونا ہی کربلا کا پیغام ہے۔




پاکستان اور ملائشیاء کے درمیان قیدیوں کی حوالگی کے معاہدے پر دستخط

ملائشیاء(وائس آف ایشیا)پاکستان اور ملائشیاء کے درمیان قیدیوں کی حوالگی کے معاہدے پر دستخط کئے گئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق معاہدے پر دستخط پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی اور ملائشیاء کے وزیر قانون نے کئے جبکہ تقریب میں دونوں ملکوں کے وزیراعظم بھی موجود تھے۔وزیراعظم عمران خان اور ان کے ہم منصب مہاتیر محمد نے مشرکہ پریس کانفرس کرتے ہوئے بتایا کہ پاکستان اور ملائشیاء نے قیدیوں کی حوالگی کے حوالے سے ایک معاہدے پر دستخط کئے ہیں جس کے بعد جرم کی روک تھام میں مدد ملے گی۔اس موقع پر عمران خان کا کہنا تھا کہ معاہدے سے پہلے بھی ملائشیاء نے جرائم میں ملوث لوگوں کو پاکستان کے حوالے کیا تھا۔وزیراعظم عمران خان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے مہاتیر محمد کا مسئلہ کشمیر پر آواز اٹھانے پر شکریہ ادا اکیا اور کہا کہ مجھے افسوس ہے کہ میں کوالالمپورسمٹ میں شریک نہ ہو سکا، انشااﷲ اگلی مرتبہ میں شرکت کروں گا۔مزید بات کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کوالالمپورسمٹ سے متعلق دوست ممالک کے خدشات دور ہو گئے ہیں، اس کا مقصد امت کو تقسیم کرنا نہیں بلکہ امت مسلمہ کو درپیش مسائل کا حل نکالنا ہے۔مزید کہنا تھا کہ ہمارے ایک دوست ملک کو لگ رہا تھا کہ شاید اس کا مقصد امت کو تقسیم کرنا ہے،لیکن ہمیں مل کر اسلاموفوبیا اور امت مسلمہ کو درپیش مسائل کے خلاف مل کر جدوجہد کرنی ہے۔اسلام کے حقیقی تشخص اجاگر کرنے کے لئے اب پاکستان اور ملائشیاء مل کر کام کریں گے اور آنے والے سال میں کوالالمپورسمٹ میں بھی شرکت کریں گے اور ساتھ ہی ساتھ پاکستان کے کسی بھی ملک سے تعلقات خراب نہیں ہوں گے۔ اسی ملاقات میں پاکستان اور ملائشیاء کے درمیان قیدیوں کی حوالگی کے معاہدے پر دستخط کئے گئے ہیں، معاہدے پر دستخط پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی اور ملائشیاء کے وزیر قانون نے گئے
وائس آف ایشیا4فروری2020 خبر نمبر47




سائنس اور ٹیکنالوجی میں مہارت اور جدید علوم و فنون میں کمال حاصل کرنا ہوگا، گورنر پنجاب

راولپنڈی(وائس آف ایشیا)گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے کہا ہے کہ سائنس اور ٹیکنالوجی میں مہارت اور جدید علوم و فنون میں کمال حاصل کرکے ہم پاکستان کو ترقیافتہ ملکوں کی صف میں لا سکتے ہیں اور ان مقاصد کے حصول کے لئے وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی قیادت میں پاکستان اس وقت قومی ترقی کے اہم سنگ میل عبور کر رہا ہے اور نوجوانوں کو اعلی معیار کی تعلیم و تربیت اور آگے بڑھنے کے بھرپور مواقع فراہم کئے جا رہے ہیں تاکہ وہ مستقبل میں پاکستان کے لئے قابل فخر کردار ادا کرسکیں انہوں نے یہ بات ہائی ٹیک یونیورسٹی، ٹیکسلا کے چوتھے کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔کانووکیشن میں چیئرمین بورڈ آف گورنرز لیفٹینٹ جنرل عبداﷲ ڈوگر ، وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر یونس جاوید، ممبرز بورڈ آف گورنر، فکلٹی ممبر ز، والدین اور طلباء طالبات نے شرکت کی گورنر پنجاب نے کہا کہ کامیابیوں کی خوشی مناتے ہوئے ان شخصیات کو خراج تحسین پیش کرنا چاہیے جوان کامیابیوں میں نمایاں کردار ادا کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ والدین بچوں کیلئے بے انتہاء قربانیاں دیتے ہیں اور بچوں کو بھی ان قربانیوں کا احساس کرتے ہوئے اپنی پوری توجہ اپنی پڑھائی پر مرکوز رکھنی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ دین اسلام میں تعلیم کی اہمیت اجاگر کی گئی ہے اور مسلمان جب تعلیم میں آگے تھے تو انہوں نے پور ی دنیا پر حکومت کی اور جب تعلیم نے تعلیم سے انحراف کیا تو دوسری قومیں ہم پر حاوی ہو گئیں۔ گورنر پنجاب نے کاکہاکہ پاکستان میں یہ کلچر بن گیا ہے کہ ہم دوسروں کو اپنی ناکامی کا ذمہ دار ٹھراتے ہیں اور خود محنت سے کتراتے ہیں اگر قومی سوچ اور کردار اپنایا جائے تو ہم شعبے میں کامیابی حاصل کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ دنیا کے مختلف ممالک میں پاکستانیوں نے اپنی محنت سے کامیابوں کے جھنڈے گاڑے ہیں اور پاکستان کا نام روشن کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یورپ میں پاکستان کے لئے جی ایس پی پلس سٹیٹس کی وجہ 15 ملین ڈالر کا معاشی فائدہ پہنچا ہے۔ گورنر بننے کے بعداعلی تعلیم کا فروغ اولین ترجیح ہے ، ہم نے ایڈہاک ازم کو ختم کرکے ریگولر بنیادوں پر میرٹ کی بنیاد پر با صلاحیت وائس چانسلرز کا انتخاب کیا جس سے یونیورسٹیوں کے تعلیم معیار میں خاطر خواہ اضافہ ہوا۔انہوں نے کہاکہ غربت ، دہشت گردی ، انتہائی پسندی کا خاتمہ، زراعت کی ترقی اور معاشی خوشحالی بہت بڑے چیلنج ہیں اور پوری قوم کو یک جان ہو کر ان چیلنجز کا مقابلہ کرنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت کی پالیسیوں ، بین المذاہب ہم آئنگی، دہشت گردی پر قابو پانے کے کوششوں کو ہر سطح پر سراہا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ دنیا کی سب سے بڑی پارلیمنٹ میں پاکستان کے حق میں چھ قرار دادیں منظور ہوئی ہیں جن میں کشمیر مقبوضہ کشمیر میں ڈھائے جانے والے مظالم کی مذمت کی گئی ہے اور یورپی پارلیمنٹ میں بھارت کے متنازعہ شہریت بل کی مخالفت کی گئی ہے جو کہ پاکستان کی بہت بڑی سفارتی کامیابی ہے اور بھارت کو ہزیمت کا سامنا کرنا پڑا ہے اور نرنندر مودی کو ناکامی ہوئی ہے۔گورنر پنجاب نے کہاکہ پور دنیا نے دہشت گردی پر قابو پانے کے لئے افواج پاکستان کی خدمات کو سراہا ہے اور یہ ہمارے لئے قابل فخر ہے۔ وائس چانسلر ہائی ٹیک یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد یونس جاوید (ستارہ امتیاز ملٹری )نے کہا کہ پوری دنیا میں پاکستانی طلبا ء و طالبات کا کوئی ثانی نہیں اور قابلیت کے اس معیار کو قائم رکھتے ہوئے یونیورسٹی کے فارخ التحصیل طلباء و طالبات محنت اور جدو جہد جاری رکھیں اور اپنے والدین اور اساتذہ کی توقعات پر پورا اتریں۔انہوں نے کہاکہ والدین اپنا پیٹ کاٹ کر بچوں کی تعلیم و تربیت کی ذمہ داریاں پوری کرتے ہیں اس لئے یہ لازم ہے کہ طلباء و طالبات خود کومعاشرے کا باوقار اور کامیاب شہری بن کر اپنے والدین کے خواب پورے کریں۔ وائس چانسلرہائی ٹیک یونیورسٹی نے کہاکہ ہائی ٹیک یونیورسٹی بین الاقوامی سطح پر مقتدر اداروں سے منسلک ہے جس کی وجہ سے طلباء و طالبات کو ریسرچ کے بہترین مواقع حاصل ہو رہے ہیں اور چوتھے سالانہ کانووکیشن میں کل 815 طلباء و طالبات نے ڈگریاں حاصل کیں۔ جن میں 13 پی ایچ ڈیز بھی شامل ہیں۔انہوں نے کہاکہ ایم ایس پروگرامز میں ضیاء اﷲ اسلم ، خدیجہ خاتون، بشری جبیں، اسرار احمد ، مہشان علی خان، جویریہ عابد، یاسر حمید، زوہیب عاشق ، محمد ریاض نے گولڈ میڈل حاصل کئی.




انشاء اﷲ ہر قیمت پر کشمیر بنے گا پاکستان‘ ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری

اسلام آباد(وائس آف ایشیا) ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری نے کہا ہے کہ انشاء اﷲ ہر قیمت پر کشمیر بنے گا پاکستان‘ جب تک اسرائیل فلسطینیوں کے حقوق غصب کر رہا ہے کسی قیمت پر اسے تسلیم نہیں کر سکتے۔پیر کو قومی اسمبلی میں یوم یکجہتی کشمیر کے حوالے سے جاری بحث کے دوران ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ جس طرح دونوں طرف کے ارکان نے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے اپنے جذبات کا اظہار کیا ہے وہ لائق تحسین ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان دنیا کے 57 اسلامی ممالک میں ایٹمی قوت ہونے کی وجہ سے بے پناہ اہمیت کا حامل ہے اور پاک فوج ہر طرح کی جارحیت کا جواب دینے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے دل کشمیریوں اور فلسطینیوں کے ساتھ دھڑکتے ہیں۔




کوالالمپورسمٹ سے متعلق دوست ممالک کے خدشات دور ہو گئے ، وزیراعظم

ملائشیاء(وائس آف ایشیا) وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ کوالالمپورسمٹ سے متعلق دوست ممالک کے خدشات دور ہو گئے ہیں، اس کا مقصد امت کو تقسیم کرنا نہیں بلکہ امت مسلمہ کو درپیش مسائل کا حل نکالنا ہے۔ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان اور ملائیشیاء کے وزیراعظم مہاتیر محمد نے اہم ملاقات کے بعد ایک مشترکہ پریس کانفرنس کی جس میں دونوں ممالک کے درمیان ہونے والے معاہدوں کی تفصیلات جاری کی گئیں۔بات کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ اب دونوں ممالک کے خدشات ختم ہو گئے ہیں اور اب پاکستان اپنے دیگر فریقین کے ساتھ مل کر ٹی وی چینل سمیت دیگر منصوبوں پر کام کرے گا۔ مزید بات کرتے ہوئے عمران خا ن کا کہنا تھا کہ کوالالمپورسمٹ میں شامل نہ ہونے پر افسوس ہے لیکن میں یہ یقین دلانا چاہتا ہوں کہ پاکستان کے کسی ملک کے ساتھ تعلقات خراب نہیں ہوں گے۔مزید کہنا تھا کہ ہمارے ایک دوست ملک کو لگ رہا تھا کہ شاید اس کا مقصد امت کو تقسیم کرنا ہے،لیکن ہمیں مل کر اسلاموفوبیا اور امت مسلمہ کو درپیش مسائل کے خلاف مل کر جدوجہد کرنی ہے۔اسلام کے حقیقی تشخص اجاگر کرنے کے لئے اب پاکستان اور ملائیشیاء مل کر کام کریں گے اور آنے والے سال میں کوالالمپورسمٹ میں بھی شرکت کریں گے اور ساتھ ہی ساتھ پاکستان کے کسی بھی ملک سے تعلقات خراب نہیں ہوں گے۔عمران خان نے ملائیشیاء کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اگر بھارت مسئلہ کشمیر کی وجہ سے ملائیشیاء سے تجارت ختم کر دے گا تو ہم اس کمی کو پورا کر دیں گے۔اسی موقع ہر ملائیشیاء کے وزیراعظم مہاتیر محمد کی جانب سے بھی بات کی گئی جس میں ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے ملاقات بہت اچھی گئی جس میں دونوں ممالک کے مابین تعلقات میں بہتری لانے کے لئے اقدامات کئے جائیں گے۔مہاتیر محمد کا کہنا تھا کہ عمران خان کا دورہ ملائیشیاء دو طرفہ تعلقا ت کی عکاسی کرتا ہے۔
وائس آف ایشیا4فروری2020 خبر نمبر48




بھارت کے ساتھ پاکستان کا بنیادی تنازعہ کشمیر ہے کوئی سودے بازی نہیں ہو سکتی، دفتر خارجہ کی ترجمان

 
اسلام آباد(وائس آف ایشیا) پاکستان نے واضح کیا ہے کہ بھارت کے ساتھ پاکستان کا بنیادی تنازعہ کشمیر ہے، اس پر کوئی سودے بازی نہیں ہو سکتی، 1971ء کے بعد سکیورٹی کونسل میں کشمیر کا ذکر تک نہیں ہوا تھا لیکن پانچ اگست کے فیصلے کے بعد یہ مسئلہ وہاں زیر بحث آیا‘ وزیراعظم کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں کشمیریوں کا مقدمہ بھرپور انداز میں پیش کرنے کے بعد دنیا بھر کی پارلیمان اور حکومتی سطح پر اس مسئلے پر آواز اٹھائی گئی ہے جوکہ بڑی کامیابی ہے‘ کشمیر کا مسئلہ اب عالمی مسئلہ بن چکا ہے جوکہ بھارت کے اس دعوے کی نفی ہے کہ کشمیر کا مسئلہ دوطرفہ ہے۔پیر کو دفتر خارجہ میں قائم کشمیر سیل میں کشمیر جرنلسٹس فورم اور اے کے این ایس کے نمائندہ وفد کو بریفنگ دیتے ہوئے دفتر خارجہ کی ترجمان ڈاکٹر عائشہ اور سیل کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر محمد فیصل چوہدری نے کہا کہ 1971ء کے بعد سکیورٹی کونسل میں کشمیر کا ذکر تک نہیں ہوا تھا لیکن پانچ اگست کے فیصلے کے بعد یہ مسئلہ وہاں زیر بحث آیا اور بھارت کے اس دعوے کی قلعی کھل گئی کہ کشمیر دو طرفہ مسئلہ ہے بلکہ یہ ثابت ہوا کہ کشمیر عالمی مسئلہ ہے، لائن آف کنٹرول پر گولہ باری کی وجہ سے آزاد کشمیر کے لوگ بھی اس سے براہ راست متاثر ہیں، وزیراعظم کی یہ واضح ہدایت ہے کہ مرکزی سطح پر اس مسئلہ کو ہمیں قومی دھارے میں لانا ہے، سارے مشنز 25 جنوری سے یوم یکجہتی کشمیر کے سلسلے میں بیرون ممالک تقاریب منعقد کر رہے ہیں، پارلیمان کی سطح پر اب کشمیر کا مسئلہ زیر بحث آرہا ہے، 83 امریکی کانگریس ممبران اس مسئلہ پر لب کشائی کر چکے ہیں۔برطانیہ کی پارلیمنٹ ‘ یورپی یونین کی پارلیمنٹ میں یہ مسئلہ آیا۔ بھارت کے نہ چاہتے ہوئے کشمیر کا مسئلہ انٹرنیشنلائز ہو چکا ہے۔ عالمی میڈیا میں ہندوستان کو تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔ وزیراعظم نے ہر عالمی فورم پر بھرپور انداز میں مسئلہ کشمیر اٹھایا۔ کشمیر پاکستان کے لئے کور ایشو ہے۔ کشمیر پر 72 سال میں چھ جنگیں لڑی گئیں۔ یہ سوال آتا ہے کہ کشمیر پر سودے بازی ہو رہی ہے، بھارت سے کشمیر کے علاوہ پاکستان کی اور کیا لڑائی ہے۔انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی اور کشمیریوں نے مسئلہ کشمیر کے سلسلے میں موثر کردار ادا کیا ہے۔ امریکہ میں اس مسئلہ پر بات ہو رہی ہے۔ صدر ٹرمپ نے سات سے آٹھ بار اس مسئلہ کا ذکر کیا ہے۔ اس کے علاوہ دیگر ممالک میں اس پر بات ہوئی ہے۔ یہ سنٹرل ایشو بنتا جارہا ہے۔ دفتر خارجہ کی ترجمان ڈاکٹر عائشہ نے کہا کہ پانچ اگست کے بعد کشمیر ایک تاریخی موڑ پر آکھڑا ہوا ہے۔اس میں سب کا کردار ضروری ہے۔ کشمیر کے حوالے سے ہمارے تارکین وطن بہت فعال ہیں۔ دنیا کی پارلیمان میں ان کی وجہ سے کشمیر کی گونج کا سنائی دینا بہت اہم ہے۔ ان کے ایوانوں میں اٹھائی گئی آواز بہت سنی جاتی ہے۔ تارکین وطن سے رابطوں کے لئے مزید بہتری کی ضرورت ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم نے پانچ اگست کے بعد جس انداز سے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال عالمی سطح پر اٹھائی ہے اس کی مثال نہیں ملتی، اس میں شک کی گنجائش نہیں، ہندوستان کی جعلی فلیگ حملے کی بھرپور مثالیں ہیں ان سے کچھ بعید نہیں یہ دنیا کو ہم باور کراتے ہیں کہ بھارت پھر ایسی حماقت نہ کرے۔ڈاکٹر فیصل نے بتایا کہ 124 سفارتخانوں میں کشمیر ڈیسک قائم ہو چکا ہے۔ بھارت کے دفتر خارجہ نے سات بار اس ڈیسک اور سیل کو بند کرنے کی بات کی۔ انڈین سول سوسائٹی کی لاپتہ بچوں کے حوالے سے آٹھ رپورٹس شائع ہوگئی ہیں وہ ہم نے اپنے مشن کو بھجوائی ہیں۔ ڈاکٹر عائشہ نے کہا کہ پانچ اگست کے بعد تین بار اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں یہ مسئلہ زیر غور آیا۔اس حوالے سے چین کی کشمیر کے مسئلہ پر بھرپور سپورٹ حاصل ہے۔ چین کا کشمیر کی آواز اٹھانے میں سلامتی کونسل میں بھرپور کردا رہا ہے۔ پاکستان کا موقف ہے کہ سلامتی کونسل کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق کشمیر کے تنازعہ کا حل ہونا چاہیے۔ ڈاکٹر فیصل نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ کشمیر پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔ وزیراعظم آزاد کشمیر سے ہماری باقاعدگی سے ملاقاتیں ہوتی ہیں۔لوگوں کے دلوں اور ذہنوں میں ابہام ففتھ جنریشن وار کا حصہ ہے۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی 11 قراردادیں ہی مسئلہ کشمیر کا حل ہیں۔ میڈیا اس ابہام کو دور کرے کہ کشمیر کی قیادت کو حکومت پاکستان اہمیت نہیں دے رہی۔ آزاد کشمیر کو ضم کرنے کے سوالات کی بغیر کسی لیت و لعل کے تردید کرتے ہیں۔ ایسی کوئی تجویز کہیں زیر غور نہیں ہے۔ یہ وسوسے ڈالنا دشمن کا ہتھکنڈا ہو سکتا ہے۔ ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ کشمیر میں عصمت دری کو ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کئے جانے کے مکروہ عزائم کو عالمی سطح پر پاکستان بے نقاب کر رہا ہے۔




چین مسئلہ کشمیر پر سلامتی کونسل میں پاکستان کی مسلسل مدد کر رہا ہے،عائشہ فاروقی

اسلام آباد(وائس آف ایشیا) دفتر خارجہ کی ترجمان عائشہ فاروقی نے کہاہے کہ چین مسئلہ کشمیر پر سلامتی کونسل میں پاکستان کی مسلسل مدد کر رہا ہے،اب بیرون دنیا کی پارلیمنٹ میں بھی کشمیری کی گونج سنائی جارہی ہے،مسئلہ کشمیر سلامتی کونسل کی قراردادو کے مطابق حل ہونا چاہیے۔کشمیر جرنلسٹ فورم کے ممبران کو بریفنگ دیتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ کشمیر ایک قومی کاز ہے، نیشنل کاز کے حوالے سے میڈیا ایک اہم کڑی ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ کشمیری صحافی بھی اس قومی کازی کی ایک کڑی ہیں، کشمیر کاز ایک تاریخی موڑ پر آکھڑا ہوا ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ پاکستانی اور کشمیری ڈائسپورہ پوری دنیا میں متحرک ہو چکا ہے،اب بیرون دنیا کی پارلیمنٹ میں بھی کشمیری کی گونج سنائی جارہی ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ وزیراعظم نے اپنی ہر تقریر میں مسئلہ کشمیر کو اجاگر کیا، وزیراعظم نے پوری دنیا میں مقبوضہ کشمیر کی عوام پر ہونے والے ظلم کو بے نقاب کیا، وزیراعظم بار بار آزاد کشمیر پر حملے کا خدشہ اس لیے ظاہر کرتے کہ بھارت سے کچھ بھی بعید نہیں۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ ہندوستان کی تاریخ جعلی حملوں سے بھری پڑی ہے، ہم ہندوستانی تاریخ کے تناظر میں دنیا کو باور کراتے ہیں، تمام سفارتخانوں اور قونصلیٹ میں کشمیری ڈیسک قائم کردیئے گئے ہیں، 5 اگست کے سکیورٹی کونسل میں 3 مرتبہ معاملہ اٹھا۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال پر گہرائی سے جائزہ لیا گیا، پاکستان سلامتی کونسل کا رکن نہیں ہے،چین سلامتی کونسل کامستقل رکن ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ چین مسئلہ کشمیر پر سلامتی کونسل میں پاکستان کی مسلسل مدد کر رہا ہے، مسئلہ کشمیر کے حوالے سے سکیورٹی کونسل میں چین کا اہم کردار ہے، مسئلہ کشمیر سلامتی کونسل کی قراردادو کے مطابق حل ہونا چاہیے۔




پاکستان کے شعبہ سیاحت میں بے پناہ اور انتہائی متنوع مواقع موجود ہیں، سفیر اسد مجید خان

نیویارک(وائس آف ایشیا ) پاکستان کے نیویارک کیلئے سفیر اسد مجید خان نے کہا ہے کہ پاکستان کے شعبہ سیاحت میں بے پناہ اور انتہائی متنوع مواقع موجود ہیں،حکومت پاکستان سیاحت کے فروغ کے انفرادی اقدامات اٹھا رہی ہے،انہوں نے ان خیالات کا اظہار نیویارک میں گلگت بلتستان کی ثقافت سے متعلق منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تقریب جس کا اہتمام تنظیم سوھنی وطن گلگت بلتستان یو ایس اے ، نے کیا تھا میں گلگت بلتستان کے روایتی رقص اور موسیقی پیش کرنے کے ساتھ ساتھ وہاں کی دستکاری،زیورات اور قیمتی پتھروں کی بھی نمائش کی گئی۔اس موقع پر امریکہ میں متعین پاکستانی سفیر نے مزید کہا کہ پاکستان کی حکومت نے سیاحت کے فروغ کے لئے بہت سے اقدامات کیئے ہیں جن میں سیاحوں کے لئے ویزوں کے اجراء میں لچک کے ساتھ نئے انفرا سڑکچر اور ای کامرس میں سرمایہ کاری شامل ہے۔انہوں نے کہا کہ سیاحوں کے لئے سیکورٹی انفراسڑکچر کو بھی بہتر بنایا گیا ہے جس نے نہ صرف غیر ملکی میڈیا اور عالمی بلاگرز یا وی لاگرز کو اپنی طرف متوجہ کیا ہے بلکہ اس کے نتیجے میں متعدد ممالک نے پاکستان کے لئے اپنی ٹریول ایڈوائزری بھی بہتر کی ہے۔انہوں نے حوالہ دیتے ہوئے کہا امریکہ کے محکمہ خارجہ نے گزشتہ ہفتے ہی پاکستان کے لئے اپنی ٹریول ایڈوائزری کو بھی ری وائز کیا ہے جس میں بالخصوص اسلام آباد سمیت بڑے پاکستانی شہروں میں سیکورٹی صورتحال میں بہتری آنے کے ساتھ انفراسڑکچر کی ترقی کا بھی اظہار کیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ امریکہ کے علاوہ برطانیہ،کینیڈا،فرانس ،پْرتگال، ناروے اور دوسرے ممالک نے بھی اپنی ٹریول ایڈوائزریز کو ریوائز کیا ہے۔سفیر نے اپنے خطاب میں تقریب کے شرکاء کی توجہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت اور بربریت کی طرف بھی دلائی اور 5فروری کو یوم یک جہتی کشمیر منانے کی اہمیت کو اجاگر کیا۔انہوں نے کہا کہ عالمی برادری ظلم و جبر کی زد میں آئے کشمیریوں کی آواز سنیں۔تقریب کے اختتام پر انہوں نے پاکستانی سیاحت کے فروغ کے لئے سوھنی وطن گلگت بلتستان یو ایس اے کی کوششوں کی تعریف کی اورکہاکہ وہ امریکہ میں پاکستان کے سافٹ امیج کو اجاگر کرنے میں ان کی ہمیشہ حوصلہ افزائی کریں گے۔تقریب میں پاکستان کی نیویارک میں قونصل جنرل عائشہ علی سمیت بڑی تعداد میں افراد نے شرکت کی جن میں مقامی حکومت کے نمائندے،پاکستانی امریکی کمیونٹی کے ارکان، فیڈریشن آف ایسوسی ایٹڈ لیکونین سوسائیٹیزاور میڈیا کے نمائندے شامل ہیں۔




کورونا وائرس، ہر قسم کی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کیلئے تیار ہیں، ڈاکٹر ظفر مرزا

اسلام آباد(وائس آف ایشیا ) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے کہ حکومت کورونا وائرس کے پھیلا کو روکنے کے لیے ہر ممکنہ ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے تیار ہے۔ڈاکٹر ظفر مرزا نے اسلام آباد ائیر پورٹ کا دورہ کیا اور چین سے آنے والی پرواز کے مسافروں کی پاکستان آمد پر کورونا وائرس کی اسکریننگ کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کا جائزہ لیا۔انہوں نے کہا کہ تمام ہوائی اڈوں پر کورونا وائرس کی اسکریننگ کا جامع نظام موجود ہے لہذا انٹرنیشنل ہیلتھ ریگولیشن کی سفارشات کے مطابق قواعد پر سختی سے عمل درآمد کیا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ قومی ادارہ صحت میں ممکنہ کورونا وائرس کیسز کی تشخیص کی سہولت موجود ہے اور حکومت پاکستان ہر ممکنہ ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے تیار ہے۔دوسری جانب وزارتِ صحت نے بندرگاہوں میں آنے والے جہازوں کی فیومگیشن کے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ انٹرنیشنل ہیلتھ ریگولیشنز کے تحت کوئی اضافی ہدایات جاری نہیں کی گئیں۔اس حوالے سے وزیراعظم کے معاون خصوصی نے کہا کہ نوول کورونا وائرس کمیٹی نے چین اور دیگر ممبر ممالک کے ساتھ تجارت یا سفر پر پابندی عائد نہیں کی، بندرگاہ پر تعینات عملہ مال بردار جہازوں سے متعلق قواعد پر عمل درآمد کو سختی سے یقینی بنائے۔
وائس آف ایشیا3فروری2020 خبر نمبر80




خورشید شاہ کے جوڈیشل ریمانڈ میں18فروری تک توسیع

سکھر(وائس آف ایشیا ) پاکستان پیپلزپارٹی کے سینئررہنما سید خورشید احمدشاہ نے کہاہے کہ اﷲ سے امید ہے کہ میرے ساتھ انصاف ہوگا، موجودہ حکومت کے باعث مہنگائی کی سونامی آئی ہے، سندھ میں آئی جی تبدیل نہ ہونا، پنجاب اور خیبرپختون خوا میں چار چار آئی جی تبدیل ہونا انتہائی خطرناک بات ہے،حکومت اپنی آئینی ذمہ داری پوری نہیں کررہی۔پیرکواحتساب عدالت سکھر میں آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس کی سماعت ہوئی۔خورشید شاہ کو این آئی سی وی ڈی اسپتال سے ایمبولینس کے ذریعے عدالت لایا گیا۔اس موقع پر صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ سید اویس شاہ اور دیگربھی موجود تھے۔احتساب عدالت کے جج امیرمہیسر نے سید خورشیدشاہ کے جوڈیشنل ریمانڈ میں 15دن کی توسیع کرتے ہوئے انہیں دوبارہ18فروری کو پیش کرنے کا حکم دیا۔۔احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے غیررسمی گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہموجودہ حکومت کے باعث مہنگائی کی سونامی آئی ہے ، سونامی تباہی کا نام ہوتا ہے اور یہ تباہی موجودہ حکمران لائے ہیں۔ انھوں نے سوال اٹھایا کہ عمران خان کہتے تھے کہ روزانہ 12 ارب روپے کی کرپشن ہو رہی ہے تو اب یہ 12 ارب روپے بچ رہے ہیں، وہ کہاں جا رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ چینی، آٹا یا اور کوئی چیز ان کے دام اچانک بڑھ جاتے ہیں،چیزوں کے دام بڑھانے والا کون ہے، حکمران بتائیں،ڈالرکا بڑھنا اور روپے کی قدر گرنے کا ذمہ دار کون ہے۔خورشید شاہ نے کہا کہ سندھ میں آئی جی تبدیل نہ ہونا، پنجاب اور خیبرپختون خوا میں چار چار آئی جی تبدیل ہونا انتہائی خطرناک بات ہے،ایک ملک میں دو الگ قانون ملک اور حکمرانوں کے لئے خطر ناک بات ہے۔ پیپلزپارٹی کے رہنما کا کہنا تھا کہ حکومت اپنی آئینی ذمہ داری پوری نہیں کررہی۔
وائس آف ایشیا3فروری2020 خبر نمبر85




وزیر اعظم عمران خان2روزہ دورے پر ملائیشیا روانہ ہوگئے

اسلام آباد(وائس آف ایشیا) وزیر اعظم عمران خان ملائیشین ہم منصب مہاتیرمحمد کی دعوت پر 2 دن کے دورے پر کوالالمپور روانہ ہو گے ہیں. وزیراعظم ہاؤس کے ترجمان کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کے ہمراہ اعلیٰ سطح کے وفد میں کابینہ کے اراکین سمیت دیگر عہدیداران بھی شامل ہیں.بیان کے مطابق دونوں ممالک کے وزرائے اعظم دوبدو ملاقات میں دوطرفہ دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کریں گے علاوہ ازیں دونوں ممالک کے وزراعظم کی موجودگی میں وفود کی سطح پر اہم معاہدے اور مفاہمتی یاداشت پر دستخط ہوں گے.ترجمان کے مطابق وزرا اعظم عمران خان اور مہاتیر محمد مشترکہ پریس کانفرنس بھی کریں گے وزیر اعظم عمران خان اپنے دورے میں ملائشیا کے انسٹی ٹیوٹ آف اسٹریٹجک اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز (آئی ایس آئی ایس) کے زیر اہتمام تھنک ٹینک سے بھی خطاب کریں گے.اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ وزیر اعظم کا یہ دورہ پاکستان اور ملائیشیا کے مابین مضبوط تعلقات اور دونوں ممالک کے درمیان اسٹریٹجک شراکت داری کو مزید تقویت دینے کے تناظر میں مشترکہ عزم کی علامت ہے واضح رہے کہ اگست 2018 میں وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے بعد وزیر اعظم عمران خان کا ملائیشیا کا یہ دوسرا دورہ ہوگا. اس سے قبل وزیر اعظم 20 اور21 نومبر 2018 کو ملائیشیا کا دورہ کرچکے ہیں خیال رہے کہ وزیراعظم مہاتیر محمد نے21 مارچ سے 23 مارچ 2019 تک پاکستان کا دورہ کیا تھا اور یوم پاکستان پریڈ میں مہمان خصوصی تھے.دونوں وزرائے اعظم نے ستمبر 2019 میں نیویارک میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے دوران بھی ملاقات کی تھی وزیراعظم ہا?س سے جاری اعلامیے میں کہا گیا پاکستان اور ملائیشیا عقیدے اور ثقافت کے اعتبار سے قریبی اور دوستانہ تعلقات رکھتے ہیں اور اس میں باہمی اعتماد اور مفاہمت کے خواہش مند ہیں. وزیراعظم عمران خان مختلف ملاقاتوں کے دوران علاقائی اور بین الاقوامی امن وسلامتی کے حوالے سے پاکستان کے مثبت کردار پر بھی بات کریں گے علاوہ ازیں عمران خان مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور بھارت کے جارحانہ رویے کی وجہ سے علاقائی امن وسلامتی کو درپیش خطرات سے متعلق بھی گفتگو کریں گے.یاد رہے وزیراعظم نے ملائیشیا کے دورے پرجاتے ہوئے بھارت کے بجائے چین کی فضائی حدود استعمال کرنے کا فیصلہ کیاتھا ، بھارت کی فضائی حدود استعمال نہ کرنے سے سفرکا دورانیہ4سے 5 گھنٹے بڑھے گا، مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی مظالم کے باعث بھارت کی حدود استعمال نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے.گذشتہ سال دسمبر میں ملائیشین وزیراعظم نے عمران خان کیلئے پروٹون 70 گاڑی کا تحفہ بھیجا تھا، جسے مشیر تجارت عبدالرزاق دا?د وزیراعظم کی جانب سے وصول کیا.مارچ 2019 میں ملائیشین وزیراعظم مہاتیر محمد تین روزہ دورے پر پاکستان پہنچے تھے ، جہاں ان کا نور خان ایئربیس پر وزیراعظم عمران خان نے شانداراستقبال کیا اور مہمان کے اعزاز میں اکیس توپوں کی سلامی دی گئی. ملائیشین وزیراعظم نے ایک روز بعد پروٹون گاڑیوں کا پلانٹ پاکستان میں لگانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس کا مقصد دونوں ممالک کی تجارتی شراکت داری کو قائم کرنا ہے۔
وائس آف ایشیا3فروری2020 خبر نمبر42




کشمیریوں کے لبوں پر وزیراعظم کے لیے تحسین کے نغمے ہیں، فیاض الحسن چوہان

لاہور(وائس آف ایشیا) پنجاب کے وزیراطلاعات فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے اور مظلوم کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کی ہر فورم پر سیاسی و سفارتی حمایت پر عزم انداز میں جاری رکھنے پر آج کشمیریوں کے لبوں پر وزیراعظم عمران خان کے لیے تحسین کے نغمے ہیں جبکہ سابقہ حکمرانوں نے کشمیر کا نام لینا گوارہ نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ سابق حکمران اپنے خاندانوں کے لیے دھیاڑیاں لگاتے رہے اور مودی کے خاندان کے لیے ساڑھیاں بھیجتے رہے اور انھوں نے قائداعظم کے فرمان ’’کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے‘‘ کا احترام بھی نہیں کیا۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی کے زیر اہتمام گورنمنٹ مسلم ہائر سیکنڈری سکول نمبر 1راولپنڈی میں منعقدہ یکجہتی کشمیر سیمینار سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ڈپٹی کمشنر راولپنڈی کیپٹن (ر) انوار الحق،سی ای او ایجوکیشن اعظم کاشف ودیگر افسران تعلیم،سکولوں کے اساتذہ،سول سوسائٹی کے سرکردہ افراد اور طلباء و طالبات کی بڑی تعداد بھی موجود تھے۔وزیراطلاعات فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ و زیر اعظم عمران خان نے کشمیر ی عوام کی جدوجہد آزادی کو جس انداز سے اجاگر کیا ہے اس کو دنیا مانتی ہے اور اب سفاک بھارت کشمیر پر اپنا غاصبانہ قبضہ زیادہ دیر برقرار نہیں رکھ سکے گا۔انہوں نے کہا کہ مظلوم کشمیریوں کی آزادی کا سورج بہت جلد طلوع ہونے والا ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے کشمیریوں کا سفیر بن کر بین الاقوامی برادری میں کشمیریوں کی حقیقی نمائند گی کا حق ادا کیا ہے یہی وجہ ہے کہ آج کشمیریوں کے لبوں پر پاکستان اور وزیراعظم عمران خان کے نغمے ہیں۔ فیاض الحسن چوہان نے کشمیریوں کے جذبہ آزادی اور ان کی لازوال قربانیوں کو سلام پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ دن زیادہ دور نہیں جب ہمارے کشمیری بھائی آزادی کی عظیم نعمت سے ہمکنار ہونگے۔سیمینار سے سی ای او ایجوکیشن اور دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا۔انہوں نے کہا کہ ظلم جب حد سے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے اور کشمیر میں بھارت کے ظلم و تشدد کی سیاہ رات ختم ہونے کے قریب ہے اور کشمیر ی عوام بہت جلد صبح آزادی کا پرنو رطلوع دیکھیں گے۔سیمینار میں طالبات کی طرف سے پیش کردہ ٹیبلو’’اب تو آزادہے دنیا‘پھر میں کیوں آزاد نہیں‘‘ پر شرکائے سیمینار نے بھر پور داد دی اور اس کو کشمیری عوام سے حقیقی محبت و ہمدردی کا مظہر قرار دیا۔قبل ازیں وزیر اطلاعات نے گورنمنٹ حشمت علی اسلامیہ ڈگری کالج راولپنڈی میں یکجہتی کشمیر کے حوالے سے منعقدہ سیمینار سے بھی خصوصی خطاب کیا اور سکول انتظامیہ, طلباء کی طرف سے منعقدہ یکجہتی کشمیر واک کی قیادت کی۔سکول کے پرنسپل پروفیسر مستحسن قریشی, اساتذہ اور طلباء کی بڑی تعداد موجود تھی -وزیر اطلاعات نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کشمیر ی عوام کے بے مثال جذبہ حریت کو سلام پیش کیا۔




راجہ پرویز اشرف 4سال بعد جعلی بھرتیوں کے کیس سے بری

لاہور(وائس آف ایشیا) پ احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کو جعلی بھرتیوں کے کیس میں چار سال بعد بری کر دیا ہے. عدالت نے راجہ پرویز اشرف کی بریت کی درخواست پر محفوظ فیصلہ سنا دیا اور اس موقع پر درخواست گزار بھی عدالت میں موجود تھے احتساب عدالت کے جج امجد نزیر چوہدری نے فیصلہ پڑھ کر سنایا سابق وزیراعظم کی جانب سے نیب کے قوانین میں ترمیم کے بعد بریت کی درخواست دائر کی گئی تھی.قومی احتساب بیورو(نیب) نیب نے گیپکو میں غیر قانونی بھرتیوں کےکرپشن ریفرنس میں راجہ پرویزاشرف سمیت 8 ملزمان کو نامزد کر رکھا تھا نیب کا الزام تھا کہ سابق وزیراعظم نے ایسے افراد کو نوکریاں فراہم کیں جنہوں نے درخواستیں ہی نہیں دی تھیں، میرٹ کی دھجیاں بکھیر کر نا اہل افرادکو سیاسی طور پر نوازا گیا. نیب پراسیکیوٹر نے موقف اپنایا تھا کہ بھرتیوں میں تحریری امتحان اور ڈومیسائل کی پالیسی کی خلاف ورزی کی گئی نیب نے ریفرنس میں سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف اورسابق ایم ڈی پیپکو طاہربشارت چیمہ کو نامزدکیا تھا.دیگر ملزمان میں سابق سیکرٹری وزارت پانی و بجلی شاہد رفیع، سابق ڈائریکٹرز بورڈ آف گورنرز محمد سلیم عارف، ملک محمد رضی عباس اور وزیرعلی بھائیو شامل تھے سابق سی ای اومحمد ابراہیم مجوکہ اور سابق ڈائریکٹر ایچ آرحشمت علی کاظمی کو بھی کرپشن ریفرنس میں بطور ملزم نامزد کیا گیا تھا. قومی احتساب بیورو کا الزام تھا کہ راجہ پرویز اشرف نے 437 افراد کو غیرقانونی طور پر بھرتی کیا نیب نے سابق وزیراعظم کے خلاف احتساب عدالت میں 2016 میں ریفرنس دائر کیا تھا.احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کو چار سال بعد غیر قانونی بھرتیوں کے کیس میں بری کر دیا ہے.




بھارتی آرٹیکل 370اور 35الف کو ختم کر کے کشمیر یوں کو شناخت سے محروم کیا ہے، اسد قیصر

اسلام آبا (وائس آف ایشیا) اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصرنے کہا ہے کہ قوانین عوام کی فلاح و بہبود کے لیے وضع کیے جاتے ہیں جب کہ بھارتی حکومت نے اس کے برعکس بھارتی آئین سے آرٹیکل 370اور 35الف کو ختم کر کے کشمیری عوام کو اُن کے شناخت محروم کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوری معاشروں میں ایسے قوانین جن سے عوام کو اُن کے جائز حقوق سے محروم کیا جائے کی سختی سے نفی کی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ وادی کے عوام 5اگست 2019کے بھارتی حکومت کے اقدام جس سے اُن کی شناخت سے محروم کیا گیا ہے کے خلاف سراپا احتجاج ہیں ،پوری وادی میں گزشتہ 182دنوں سیتاریخ کا بدترین لاک ڈاؤن جاری ہے ،پوری کشمیری قیادت پابند سلاسل ہے اور کشمیری عوام کے آواز کو دبانے کے لیے ذرائع ابلاغ پر بھی سخت پابندی عائد ہے۔انہوں نے ان خیالات کا اظہارپرائیوٹ اسکولز ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام یوم یکجہتی کشمیر کی مناسبت سے اسلام ابادایوان قائد ایف نائن پارک میں میں منعقد ہونے والی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اسپیکر نے کہا کہ پاکستان کے عوام اور پارلیمنٹ کشمیری عوام کے ساتھ کھڑے ہیں اور پاکستان مسئلہ کشمیر کے منطقی انجام تک کشمیری عوام کی اخلاقی ،سفارتی اور سیاسی حمایت جاری رکھے گااور علاقائی وہ عالمی فورمز پر کشمیری عوام پر ڈھائے جانیوالے مظالم کو اُجاگر کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام نے حق خود ارادیت کے حصول کے لیے جو قربانیاں دی ہیں اور جس عزم و استقلال سے گزشتہ73سالوں سے بھارتی ظلم و استبداد کا مقابلہ کر رہے ہیں کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی۔انہوں نے کہا کہ 5اگست 2019سے مقبوضہ کشمیر میں جاری لاک ڈاؤن سے کشمیری عوام انتہائی کسمپرسی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں اور اس سخت سردی کیموسم میں مقبوضہ وادی کے عوام خوراک ، ادویات ، ایندھن سمیت زندگی کی تمام بنیادی ضروریات سے محروم ہیں۔ انہوں نے اقوم عالم کو مقبوضہ کشمیر میں جاری صورتحال کا فوری نوٹس لینے اور وادی میں جاری لاک ڈاؤن کے فوری خاتمے کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالنے کی ضرورت پر زور دیا۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا واحد حل اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق مقبوضہ وادی میں استصواب رائے ہے اس کے بغیر مقبوضہ کشمیر کی عوام کو مطمین کرنا اور حالات کو معمول پر لانا ممکن نہیں۔اسپیکر اسدقیصر نے کہا کہ پاکستان کی پارلیمان ہمیشہ کشمیری عوام کے ساتھ کھڑی رہی ہے تمام پارلیمانی فورمز پر مسئلہ کشمیر کو بھرپور انداز میں اُجاگر کیا ہے۔قومی اسمبلی کے رواں اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی تازہ صورتحال پر دو دن سیرحاصل بحث کرنے کے لیے مختص کیے گے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی میں ہونے والی بحث کی روشنی میں کشمیرکی حق خودارادیت کے حق اور کشمیرمیں جاری کرفیو کے خلاف متفقہ قرارداد منظور کی جائے گی۔ انہوں نیپوری پاکستانی قوم اور میڈیا کو یوم یکجہتی کشمیر میں بھرپور یکجہتی حصہ لے کر کشمیر ی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کرنے کے لیے کہا۔قبل ازیں اسپیکر نے کشمیر ی عوام کے یکجہتی کے اظہار کے لیے منعقدہ واک میں بھی شرکت کی ، اس موقع پر وفاقی وزیر برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان علی امین خان گنڈا پور بھی اُن کے ہمراہ تھے۔ واک میں اسلام آباد کے پرائیویٹ اسکولوں کے بچوں ، اساتذہ ، سول سوسائٹی ، میڈیا کے نمائندوں اور ا?زاد ریاست کے جموں کشمیر کی سیاسی قیادت نے شرکت کی۔ بعد ازاں اسپیکر نے ایوان قائد ایف نائن پارک میں کشمیری عوام پر ڈھائے جانے والے بھارتی مظالم پر بنائی گئی تصویرں کی نمائش کا افتتاح بھی کیا۔




بغاوت کا الزام،گرفتار 23 افراد کی ضمانت منظور، اسلام آباد ہائی کورٹ

 
اسلام آباد(وائس آف ایشیا ) اسلام آباد ہائی کورٹ نے پشتون تحفظ موومنٹ(پی ٹی ایم)کے سربراہ منظور پشتین کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کرنے پر گرفتار کیے گئے کارکنان کو ضمانت بعد از گرفتاری دے دی۔پیر کواسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اﷲ نے پشتون تحفظ موومنٹ اور عوامی عوامی ورکرز پارٹی (اے ڈبلیو پی) سے تعلق رکھنے والے 23 کارکنان کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔دوران سماعت عدالت عالیہ کے چیف جسٹس نے اسلام آباد پولیس کے سربراہ کی عدالت میں غیرحاضری پر برہمی کا اظہار کیا۔چیف جسٹس نے پوچھا کہ آئی جی کہاں ہیں انہیں بلایا تھا، جس پر ڈی آئی جی نے عدالت کو بتایا کہ وہ چھٹی پر ہیں۔چیف جسٹس اطہر من اﷲ نے ڈپٹی کمشنر کو مخاطب کرتے ہوئے ریمارکس دیے کہ ہمیں آپ سے اور موجودہ حکومت سے یہ توقع نہیں تھی، کیا آپ نے ایف آئی آر پڑھی ہے، دہشت گردی کی دفعات کس قانون کے تحت لگائی گئی۔انہوں نے ریمارکس دیے کہ عدالت عظمی کا فیصلہ موجود ہے جس میں دہشت گردی کی تعریف بیان کی گئی ہے۔چیف جسٹس اطہر من اﷲ نے کہا کہ آپ ریاست کی نمائندگی کر رہے ہیں اور ریاست کا کام لوگوں کی حفاظت کرنا ہے، آپ کسی کے محب وطن ہونے پر کیسے شک کر سکتے ہیں؟۔سماعت کے دوران ان کا مزید کہنا تھا کہ آپ کو کیا لگتا ہے کہ آئینی عدالتیں اس معاملے پر آنکھیں بند کردیں گی، اس مقدمے کی تہہ تک جائیں گئے، اگر حکومت نے کچھ غلط کیا ہے تو اسے مانیں۔بعد ازاں چیف جسٹس نے کہا کہ ڈی سی صاحب آپ اور آئی جی ایک ساتھ بیٹھ کر اس معاملے کو دیکھیں، ایک ہفتے کا وقت دے رہا ہوں اس معاملے کو دیکھ کر رپورٹ جمع کروائیں۔جس کے ساتھ ہی عدالت نے تمام ملزمان کی ضمانت بعداز گرفتاری کی درخواست منظور کرتے ہوئے تمام افراد کو رہا کرنے کا حکم دے دیا اور کیس کی سماعت ایک ہفتے کے لیے ملتوی کردی۔اس سے قبل ہفتے کو چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ نے ان مظاہرین کے خلاف بغاوت کے مقدمے میں کیپیٹل پولیس اور ضلعی انتظامیہ سے وضاحت طلب کرلی تھی۔عدالت عالیہ نے اسلام آباد کے ڈپٹی کمشنر اور پولس سربراہ کو پیش ہونے کا کہتے ہوئے 3 فروری یعنی آج گرفتار افراد سے متعلق تمام ریکارڈ طلب کرلیا تھا۔درخواست گزاروں کے وکیل عمار راشد اور دیگر نے چیف جسٹس کے سامنے دعوی کیا تھا کہ ‘درخواست گزاروں کے خلاف بدنیتی پر مبنی مقدمہ دائر کیا گیا’۔یاد رہے کہ 30 جنوری کو اسلام آباد کے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد سہیل نے زیر حراست کارکنوں کو ضمانت دینے سے انکار کرتے ہوئے کہا تھا کہ بادی النظر میں یہ دہشت گردی کا مقدمہ ہے کیونکہ دوران احتجاج مظاہرین نے حکومت اور فوج مخالف نعرے بازی کی۔واضح رہے کہ منگل 28 جنوری کو کو اسلام آباد پولیس نے پی ٹی ایم رہنما اور رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ سمیت پی ٹی ایم اور اے ڈبلیو پی کے متعدد کارکنان کو نیشنل پریس کلب کے باہر سے اس وقت گرفتار کیا تھا جب وہ اپنے گروپ کے سربراہ منظور پشتین کی گرفتاری کے خلاف مظاہرہ کر رہے تھے۔یہاں یہ یاد رہے کہ منظور پشتین کو 27 جنوری کی علی الصبح پشاور کے شاہین ٹان سے گرفتار کیا گیا تھا اور انہیں 14 دن کے جوڈیشل ریمانڈ پر شہر کی سینٹرل جیل بھیج دیا تھا۔
وائس آف ایشیا3فروری2020 خبر نمبر128




وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید کی زیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ سے ملاقات

کراچی(وائس آف ایشیا ) وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشیداحمد نے محکمہ ریلوے کے اعلیٰ حکام کے ہمرہ پیرکی صبح وزیراعلی ہاؤس کراچی میں وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ سے ملاقات کی،ملاقات میں ایم ایل ون اور کراچی سرکلر ریلوے کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔اس موقع پر وزیراعلیٰ سندے نے کہاکہ سی پیک کے یو ٹی سی سندھ حکومت، سوویریگن گارنٹی، آر او ڈبلیو کو کے یو ٹی سی کے حوالے کریں۔انہوں نے کہاکہ میں 29 دسمبر 2016 کو چین گیا تھا، چین نے چاروں صوبوں کے ہیڈکوارٹرزمیں سرکلر ریلویزدے گی۔مئی 2017 میں چین میں بتایا گیا کہ سی ڈی ڈبلیو پی سے منظور کیا اور پھر نومبر2017 میں ایکنک سے منظور کیا۔وزیراعلی سندھ نے کہاکہ پھر الیکشن کا ماحول بن گیا، 2018 میں الیکشن ہوا، نئی حکومت آگئی تو سی پیک کی رفتار کم ہو گئی۔وزیراعلی سندھ نے کہاکہ کے یو ٹی سی اب سندھ کو ٹرانسفر کیا جائے،اس کے شیئرز 60 فیصد وفاقی حکومت اور 40 فیصد سندھ حکومت کے پاس ہیں۔انہوں نے کہاکہ چین کا وفد مئی میں آرہا ہے،اپریل میں جے سی سی بیجنگ میں ہوگی۔وزیراعلی سندھ نے کہاکہ سرکلر ریلوے کیلئے سندھ حکومت کی طرف سے کوئی رکاوٹ نہیں،، وفاقی حکومت کو کے سی آر کیلئے موثر اقدامات کرنا ہونگے۔انہوں نے کہاکہ تجاوزات 40 کلو میٹر تھی، 38 کلو میٹر خالی کرا لیا گیا، متاثرین کو متبادل جگہ فراہم کرنی ہے۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ ایس ای سی پی سے درخواست دے کر اس کی ایڈمنسٹریشن سندھ کو دینی ہے۔انہوں نے کہاکہ اپریل میں سی پیک کے جے سی سی اجلاس سے پہلے معاملات طے کرنے ہیں۔اس موقع پر وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہاکہ کے یو ٹی سی فارملٹیز پوری کرکر کے سندھ حکومت کو دینے کیلئے تیار ہیں۔انہوں نے کہاکہ متاثر لوگوں کو ریلوے کی کسی زمین پر گھر بنا کر دینگے۔ترجمان وزیراعلیٰ ہاؤس کے مطابق اجلاس میں ایک کمیٹی قائم کی گئی۔کمیٹی میں کمشنر کراچی اور ڈی ایس ریلویز شامل ہیں۔چیف سیکریٹری اور سیکریٹری ریلویز پہلے اپنے وفد کے ساتھ اجلاس کرینگے۔ یہ چیف سیکریٹری کمیٹی تمام ماڈیلٹیز طے کریں گے۔ دونوں کمیٹیز ایک مہینے میں تمام مسائل حل کریں گی۔ملاقات میں چیف سیکریٹری سندھ سید ممتازعلی شاہ، مشیر قانون مرتضی وہاب، چیئرمین پی اینڈ ڈی، کمشنر کراچیافتخار شلوانی، سیکرٹری ٹرانسپورٹ،حبیب الرحمان گیلانی، سیکرٹری/ چیئرمین ریلویزدوست علی لغاری، سی ای او/ سینئر جی ایم ریلویز، ناصر میمن، ڈی ایس ریلویز، سید مظہر علی، ڈی جی پلاننگ، منسٹری آف ریلویز، فرخ تیمور، ایڈیشنل جنرل مینجر، منسٹری آف ریلویز اور دیگربھی شامل تھے۔بعد ازاں ترجمان حکومت سندھ مرتضی وہاب نے میڈیا سے گفتگو کے دوران بتایا کہ وفاقی وزیرریلوے وزیراعلی ہاؤس آئے تھے، سرکلرریلوے کے حوالے سب ایک صفحے پرہیں کہ شہریوں کو سفری سہولت ملنی چاہئے۔انہوں نے بتایا کہ وزیراعلی سندھ اور وزیر ریلوے کے درمیان ملاقات میں کراچی اربن ٹرانسپورٹ کے معاملے پر بات ہوئی ہے۔انہوں نے بتایا کہ اپریل میں چین میں جو میٹنگ ہونے جا رہی ہے اس میں سندھ حکومت اوروفاق ساتھ ہوں گے۔
وائس آف ایشیا3فروری2020 خبر نمبر86




جہانگیر ترین مافیا شبر زیدی کے پیچھے بھی پڑ گیا، مریم اورنگزیب

لاہور(وائس آف ایشیا )مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ عمران خان کو حوریں اورعوام کو موت کے فرشتے نظرآرہے ہیں، جہانگیر ترین مافیا شبر زیدی کے پیچھے بھی پڑ گیا، نوازشریف کی قیادت میں ترقیاتی بجٹ دوگنا اور مہنگائی کو نصف کیا گیا، لیکن عمران کے غرور، تکبر، جھوٹ اور کرپشن نیملک کو بریک لگا دی۔انہوں نے ٹویٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ جہانگیر ترین مافیا شبر زیدی کے پیچھے بھی پڑ گیا۔ عمران کو حوریں اور عوام کو موت کے فرشتے نظرآرہے ہیں۔ آپ کے ستائے ہوئے عوام نے فیکٹریوں اور صنعتوں کو تالے لگا کر چابیاں نالائقوں کے حوالے کردی ہیں۔ جھوٹے افسانے اور سبزباغ دکھا کر عوام کو دھوکہ دینے والوں کو معاشی حقیقتوں نے بینقاب کردیا ہے۔نوازشریف کی قیادت میں مسلم لیگ (ن) نے بدترین حالات میں بہترین کارکردگی دکھائی۔ عمران صاحب آپ نے بہترین حالات میں بدترین کارکردگی اور کرپشن سے ہر کامیابی کو ناکامی میں بدل دیا۔ مسلم لیگ (ن) نے عوام کو نہ صرف ریلیف دیا اورنہ صرف اربوں کھربوں کے منصوبے لگائے بلکہ ملک کی ترقی کی رفتار بھی تیز کی۔ عمران صاحب! نے اپنے غرور، تکبر، جھوٹ، ہٹ دھرمی اور کرپشن سے ترقی کرتے ملک کو بریک لگا دی۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) نے ملک کی تاریخ میں سب سے بڑا ایک ہزار ارب کا عوامی ترقیاتی منصوبہ دیا۔ اسحاق ڈار نے 2013ء میں ذمہ داری سنبھالی تو 8.8 فیصد خسارہ تھا۔ تین سال کی محنت سے وہ اسے 4.6 فیصد پر لائے تھے۔ اسحاق ڈار کی محنت سے ایف بی آر کی ٹیکس وصولیوں میں 60 فیصد اضافہ ہوا۔ مسلم لیگ (ن) نے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں 250 فیصد اضافہ کیا۔نوازشریف کی قیادت میں ترقیاتی بجٹ دوگنا کیا گیا اور مہنگائی کو نصف کیا گیا۔ نوازشریف کی قیادت میں اسحاق ڈار کی محنت کا ثمر روپے کی قدر کے استحکام کی صورت میں قوم کو ملا۔ انہوں نے کہا کہ نیب نیازی گٹھ جوڑ نے پاکستان کی معاشی بنیاد مضبوط کرنے والوں کے خلاف جھوٹے اور سیاسی انتقام پر مبنی مقدمات قائم کئے۔ اسحاق ڈار کو ملک وقوم کی خدمت کی سزا ان پر بے بنیاد الزامات کا کیچڑ اچھال کر دی گئی۔
وائس آف ایشیا3فروری2020 خبر نمبر130




ق لیگی قیادت کا شفقت محمود سے اتحاد کے معاملات پربات چیت سے گریز

لاہور(وائس آف ایشیا)مسلم لیگ ق کی قیادت نے وفاقی وزیر شفقت محمود سے اتحاد کے معاملات پر بات کرنے سے گریز کیا، شفقت محمود نے اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی سے ذاتی حیثیت میں ملاقات کی، ق لیگی قیادت کا مؤقف ہے کہ نئی کمیٹی سے تب بات ہوگی جب جہانگیر ترین والی کمیٹی کے معاملات پر عملدرآمد کیا جائے گا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق وفاقی وزیر شفقت محمود نے آج اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی سے ملاقات کی، جس میں سیاسی صورتحال اور اتحاد کے معاملات پر بات چیت ی گئی۔ بتایا گیا ہے کہ ق لیگی قیادت نے شفقت محمود سے اتحاد کے معاملات پر بات کرنے سے گریز کیا۔ شفقت محمود نے ملاقات کے بعد اکیلے میڈیا سے بات چیت کی، کوئی ق لیگی رہنماء ان کے ہمراہ موجود نہیں تھا۔وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ چودھری پرویزالٰہی سے خوشگوار ماحول میں ملاقات ہوئی، پی ٹی آئی اورق لیگ کی سوچ ایک دوسرے سے ملتی ہے۔ اتحادیوں کا کوئی ایسا مسئلہ نہیں جوحل نہیں ہوسکتا۔ انہوں نے کہا کہ انشااﷲ چودھری برادران سے تعلق آئندہ بھی رہے گا۔ تحریک انصاف اورق لیگ اتحادی ہیں اوررہیں گے۔ تاثردیا گیا پی ٹی آئی اور ق لیگ میں اختلافات ہیں۔جبکہ ہمارے درمیان کوئی اختلافات نہیں، اتحادیوں کے مسائل حل کیے جائیں گے۔ واضح رہے گزشتہ روز ق لیگ کے سربراہ چودھری شجاعت کی صدارت میں پارٹی کا اجلاس ہوا، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اگر حکومت نے مسائل حل نہ کیے تو وفاق اور پنجاب سے وزارتوں سے استعفیٰ دے دیں گے، چودھری پرویز الٰہی بھی اسپیکر سے مستعفی ہوجائیں گے۔ ق لیگ بلدیاتی الیکشن میں حصہ الگ پوزیشن میں لے گی۔