کیا دنیا ایک مرتبہ پھر بوسنیا، گجرات جیسی نسل کشی دیکھے گی؟ عمران خان کا عالمی برادری سے سوال

 

اسلام آباد ( وائس آف ایشیا ) وزیراعظم عمران خان نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ کی ڈی پی سیاہ رنگ میں بدل دی۔وزیراعظم عمران خان کا سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مودی گجرات میں مسلم کش فسادات کی تاریخ کشمیر میں دہرا رہا ہے۔کیا دنیا مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی خاموشی سے دیکھتی رہے گی؟۔ عالمی برادری کو خبردار کر رہا ہوں ایسا ہو تو اسلامی دنیا سخت ردِ عمل دے گی۔کشمیریوں کی نسل کشی ہوئی تو تشدد کا ایک نہ رکنے والا سلسلہ شروع ہو جائے گا۔

وزیراعظم نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ بھارت کے زیر تسلط مقبوضہ کشمیر میں 12 روز سے جاری کرفیو, پہلے ہی سے فوجی کثرت والے مقبوضہ علاقے میں مزید فوجوں کی تعیناتی، آر ایس ایس کے غنڈوں کو مقبوضہ وادی میں بھجوانے، اطلاعات و وسائلِ ابلاغ کی مکمل بندش اور گجرات میں مودی کے ہاتھوں مسلمانوں کے قتل عام کی نظیر سامنے رکھتے ہوئے

واضح رہے گذشتہ روز وزیر اعظم عمران خان نے آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ مودی کشمیریوں کو کبھی بھی غلام نہیں بنا سکتا، ہمارے سامنے آر ایس ایس کے بڑی خوفناک آئیڈیالوجی ہے لیکن پاکستانیفوج اور قوم تیار ہے، وقت آگیا ہے کہ بھارت کو سبق سکھایا جائے۔ وزیراعظم عمران خاننے کہا کہ کہ مودی نے کشمیر پر اپنا آخری کارڈ کھیل لیا ہے۔ جو کہ اس کی بہت بڑی سٹریٹجک غلطی ہے۔ اسے یہ کارڈ بہت مہنگا پڑے گا۔عمران خاننے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ ہمارے پاس اطلاعات ہیں کہبھارت نے آزاد کشمیر پر حملے کا پلان بنایا ہوا ہے۔ مودی کو پیغام دیتا ہوں ، جو وہ کرے گا، اس کاجواب دیں گے۔ مودی کو اینٹ کا جواب پتھر سے دیا جائے گا۔




مسلم امہ کی قیادت پر یقین ہے، امید ہے مایوس نہیں کرے گی: شاہ محمود قریشی

لاہور( وائس آف ایشیا ) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل تک پہنچا دیا ہے، اب کشمیر کا مقدمہ سلامتی کونسل ہی میں لڑیں گے، مسلم امہ کی قیادت پر پورا یقین ہے، امید ہے مسلم امہ مایوس نہیں کرے گی۔تفصیلات کے مطابق آج لاہور میں کشمیر کے ساتھ یک جہتی اور بھارتی یوم آزادی پر یوم سیاہ منانے کے لیے ریلی نکالی گئی، جس سے شاہ محمود نے بھی خطاب کیا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ سلامتی کونسل حالات کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے کل غور فرمائے گی، حالات غیر معمولی ہیں اس لیے ہنگامی اجلاس کا مطالبہ کیا ہے۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کشمیر کی تمام قیادت پابند سلاسل ہے، مودی کی 5 اگست کی چال کو پاکستان اور کشمیریوں نے مسترد کر دیا ہے، پوری قوم کو سیسہ پلائی دیوار کی طرح یک جا ہونا ہوگا۔انھوں نے واضح کیا کہ یہ سیاست کا نہیں کشمیر کاز کا وقت ہے، مودی ہٹلر کا کردار پیش کر رہا ہے، سلامتی کونسل کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، مودی سرکار نے کشمیر کی حیثیت تبدیل کرنے کی مذموم کوشش کی۔وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان کی توجہ افغانستان میں امن پر تھی، زلمے خلیل سے کہا تھا پاکستان افغانستان میں امن چاہتا ہے، لگتا ہے کوئی سازش ہو رہی ہے، ہم بھارت کا ہر سطح پر مقابلہ کریں گے، آج پاکستان سمیت دنیا بھر میں تاریخی یوم سیاہ منایا جا رہا ہے، ہم کشمیریوں کا آخری سانس تک ساتھ دیں گے۔شاہ محمود نے کہا کہ ہمیں مسلم امہ کی قیادت پر پورا یقین ہے، امید ہے مسلم امہ مایوس نہیں کرے گی، ہماری حکومت کا اعزاز ہے کہ معاملے کو سلامتی کونسل لے کر گئے، سلامتی کونسل کو لکھے گئے خط میں پاکستان کا مؤقف واضح کیا۔انھوں نے کہا کہ یورپی یونین چاہتی ہے اقوام متحدہ سیکورٹی کونسل کشمیر سے لا تعلق نہ ہو، یورپی یونین نے بھی مسئلہ کشمیر پر سلامتی کونسل کو خط لکھا۔شاہ محمود نے مزید کہا کہ بلاول بھٹو اور مریم نواز سے گزارش ہے مسئلہ کشمیر پر سیاست نہ کریں، کشمیر پر کوئی سودے بازی نہیں ہوئی، 50 سال بعد مسئلہ کشمیر ایک مرتبہ پھر سلامتی کونسل میں زیر بحث آئے گا، مسئلہ کشمیر پر برطانوی پارلیمنٹ میں بھی بے چینی ہے۔




پاکستان کشمیریوں کامقدمہ دنیاکی ہرعدالت میں لڑیگا‘عثمان بزدار

 
لاہور(وائس آ ف ایشیا) وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پاکستان اورکشمیرنہ ٹوٹنے والے بندھن میں جڑے ہوئے ہیں، پاکستان کشمیریوں کامقدمہ دنیاکی ہرعدالت میں لڑیگا،آج نہیں توکل کشمیر آزادہوکررہے گا۔یوم سیاہ کے موقع پر اپنے پیغام میں وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پاکستان اور کشمیر نہ ٹوٹنے والے بندھن میں جڑے ہوئے ہیں،کشمیریوں کو ظلم و ستم کرکے دبانے کی بھارتی سازش بری طرح ناکام ہوگی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان دنیا کی ہر عدالت میں کشمیریوں کا مقدمہ لڑے گا،آج نہیں تو کل کشمیر آزاد ہو کر رہے گا،مودی کو مظلوم کشمیریوں کے لہو کاحساب دینا ہوگا۔
وائس آف ایشیا15اگست 2019 خبر نمبر50




بھارت کا یوم آزادی ایک دن یوم حساب بن جائیگا‘یاسمین راشد

 
لاہور (وائس آ ف ایشیا) صوبائی وزیرصحت پنجاب ڈاکٹریاسمین راشدنے کہا ہے کہ بھارت کا یوم آزادی ایک دن یوم حساب بن جائیگا،پاکستان کشمیریوں پرظلم کے خلاف یوم سیاہ منا یا گیا بھارت کواپنی ہٹ دھرمی چھوڑکرکشمیریوں کاحق خودارادیت بحال کرناہوگا۔ اپنے ایک بیان میں صوبائی وزیر صحت ڈاکٹریاسمین راشد نے کہاکہ بھارت کے ظلم کے خلاف کشمیریوں کی لاززوال قربانیوں کوسلام پیش کرتے ہیں۔ پاکستانیوں کادل کشمیریوں کے ساتھ دھڑکتاہے۔بھارت نیپاکستان کی شہ رگ کشمیرپرحملہ کرکے پاکستانی سالمیت پرحملہ کیاہے۔ اس وقت پوری دنیا کشمیر میں ظلم اوربربریت کی مذمت کر رہی ہے۔ پاکستانی قوم کشمیری بہن بھائیوں پرظلم کے خلاف اپنے موقف سے کبھی پیچھے نہیں ہٹے گی۔
وائس آف ایشیا15اگست 2019 خبر نمبر51




مسئلہ کشمیر کو پچاس سال بعد سلامتی کونسل میں اٹھانا پاکستان کی بڑی کامیابی ہے، شہر یار آفریدی

اسلام آباد(وائس آ ف ایشیا)وزیر سیفران و انسداد منشیات شہریارخان آفریدی نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ سلامتی کونسل کے خصوصی اجلاس میں (آج) جمعہ کو مسئلہ کشمیر پر بحث شروع ہورہی ہے۔ٹوئٹر پر اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ مسئلہ کشمیر کو پچاس سال بعد سلامتی کونسل میں اٹھانا پاکستان کی بڑی سفارتی وسیاسی کامیابی ہے۔ یہ امر ثابت کرتا ہے کہ اگر لگن سچی ہو اور قیادت مخلص ہو تو دشمن کو مشکل محاذ پربھی شکست دی جاسکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ جنگ جیتنے کیلئے ضروری ہے کہ تمام پاکستانی باہمہ اتفاق و اتحاد کامظاہرہ کریں اور وزیر اعظم عمران خان کا ساتھ دیں تاکہ مظلوم کشمیریوں کی آزادی کی جنگ جیتی جاسکے۔
وائس آف ایشیا15اگست 2019 خبر نمبر53




بھارتی سکھ بھی مودی سرکار کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے ہیں: مراد سعید

لاہور( وائس آف ایشیا ) پڑوسی ملک بھارت کے یوم آزادی پر پاکستان سمیت دنیا بھر میں یوم سیاہ منایا گیا، لاہور میں یوم سیاہ کی ایک ریلی سے خطاب میں مراد سعید نے کہا کہ بھارتی سکھ بھی مودی سرکار کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر مراد سعید نے کہا کہ دنیا کو نوٹس لینا چاہیے، مودی دور جدید کا ہٹلر ہے، مودی ہی کی حکومت میں مسلمانوں کا قتل عام کیا گیا تھا۔انھوں نے کہا کہ برہان وانی کی شہادت کے بعد کشمیریوں کو مزید طاقت ملی ہے، کشمیری اپنے حقوق مانگ رہے ہیں، آزادی کا وقت قریب ہے۔مراد سعید کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان کئی مرتبہ کہہ چکے ہیں کہ وہ کشمیر کے سفیر ہیں، ہم کشمیریوں کے ساتھ ہیں کوئی ہمیں جدا نہیں کر سکتا۔وفاقی وزیر نے کہا کہ کشمیر ضرور پاکستان بنے گا، بھارت کشمیریوں کو دبا نہیں سکتا، عالمی برادری بھارتی ہٹ دھرمی کا نوٹس لے، اور یو این قراردادوں پر عمل کرائے۔قبل ازیں ریلی سے خطاب کرتے ہوئے حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک نے کہا کہ آپ کے جوش و جذبے سے کشمیریوں کو طاقت ملی ہے، مجھے یقین ہے پاکستان کے عوام کشمیریوں کا ساتھ دیں گے، پورا یقین ہے کشمیریوں کو آزادی ملے گی۔واضح رہے کہ آج بھارت کے یوم آزادی پر پاکستان بھر میں یوم سیاہ منایا جا رہا ہے اور کشمیری عوام سے اظہار یک جہتی کے لیے سرکاری عمارتوں پر قومی پرچم سرنگوں کیا گیا جب کہ شاہراہ دستور پر سیاہ جھنڈے لہرائے گئے۔




بھارت پر زبردست دباؤ ہے، کشمیریوں کو آزادی مل کر رہے گی، فیصل جاوید

اسلام آباد( وائس آف ایشیا ) تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے کہا ہے کہ بھارت پر زبردست دباؤ ہے، کشمیریوں کو آزادی مل کر رہے گی۔تفصیلات کے مطابق پی ٹی آئی سینیٹر فیصل جاوید نے اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان دنیا کو باور کرارہا ہے کہ بھارت یکطرفہ فیصلے کررہا ہے، دنیا دیکھ رہی ہے مقبوضہ کشمیر میں لوگوں پر ظلم و تشدد کیا جارہا ہے، دنیا سامنے آئے اور مسئلہ کشمیر حل کرے۔سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ مسئلہ کشمیر صرف مسلمانوں کا نہیں انسانی حقوق کا بہت بڑا مسئلہ ہے، بھارت بوکھلاہٹ کا شکار ہے جو صاف نظر آرہا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان نے دنیا کے امن کے لیے قربانیاں دی ہیں، دنیا بھر میں بھارت کے خلاف لوگ نکلے ہیں اور احتجاج کیا جارہا ہے۔فیصل جاوید نے کہا کہ بھارت بوکھلاہٹ کے باعث اس قسم کی حرکتیں کررہا ہے، پاکستان کی جانب سے بھارت کو بھرپور جواب دیا جارہا ہے، پاکستان واضح طور پر کہہ چکا ہے جارحیت کی گئی تو منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ پاک فوج نے ایل او سی پر بھرپور جوابی کارروائی کرتے ہوئے 5 بھارتی فوجی مارے ہیں، بھارت مسئلہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کے لیے بلا اشتعال فائرنگ کررہا ہے۔سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ دنیا بھر میں مسلمان اور دیگر مذاہب کے لوگ بھارت کے خلاف احتجاج کررہے ہیں، دنیا کو احساس ہے دو ایٹمی طاقتیں آمنے سامنے کھڑی ہیں، دنیا کی آنکھیں کھل رہی ہیں، مسئلہ کشمیر عالمی سطح پر اٹھایا جارہا ہے۔




ہم گھبرانے والے نہیں ،نوازشریف ہی ہمارا قائد ہے، مریم اور نگزیب

 
اسلام آباد (وائس آ ف ایشیا) پاکستان مسلم لیگ (ن)کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ ہم گھبرانے والے نہیں ،نوازشریف ہی ہمارا قائد ہے ۔ میڈیا سے با ت چیت کرتے ہوئے مریم اور نگزیب نے لیگی رہنماؤں گرفتاریوں کے حوالے سے کہاکہ کوئی بات نہیں ہم ان باتوں سے نہیں ڈرتے۔ انہوں نے کہاکہ ہم ان باتوں سے بہت آگے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ یہ چھوٹے لوگ ہیں ہمارا قائد نواز شریف ہے،ہم نے اس ملک کی خدمت کی ہے۔ مریم اورنگزیب نے کہاکہ ان کا خیال ہے ہم گھبرا گئے ہیں ،اس طرح کی حرکتوں سے ہم گھبرانے والے نہیں۔
وائس آف ایشیا15اگست 2019 خبر نمبر57




پاکستان امن کے قیام کیلئے برسر پیکار ہے ،فواد چوہدری

 
کوپن ہیگن(وائس آ ف ایشیا)وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ پاکستان امن کے قیام کیلئے برسر پیکار ہے ،اگر بھارت کا کوئی سورما، کوئی سیاستدان یہ سوچ رہا ہے کہ پاکستان کشمیر پر سودابازی کریگا تو وہ احمقوں کی جنت میں رہ رہا ہے،اگر جنگ ہوئی تو پاکستان کا بچہ بچہ پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑا ہوگا۔ پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ بھارت کشمیر پر تسلط قائم کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ کشمیریوں کے دلوں میں پاکستان رہتا ہے۔انہوں نے کہاکہ کشمیریوں کا دل پاکستان کے ساتھ دھڑکتا ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان امن کے قیام کے لئے برسرپیکار ہے۔انہوں نے کہاکہ عمران خان نے حلف لیتے ہی کہا تھا کہ بھارت ایک قدم بڑھائے پاکستان دو بڑھائے گا۔انہوں نے کہاکہ ہم نے افغان طالبان کو امن مزاکرات پر آمادہ کرکے امن پسندی کا ثبوت دیا۔انہوں نے کہاکہ ہم خطے میں امن کے لئے مستحکم افغانستان چاہتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہماری امن کی کوششوں کے باوجود پاکستان میں روز شہادتیں ہورہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہمارے جہلم اور چکوال کا کوئی قبرستان نہیں جہاں شہید مدفون نہ ہوں۔انہوں نے کہاکہ ہمارا کوء گاؤں نہیں جہاں غازی نہ ہوں۔انہوں نے کہاکہ ہم کیسے اس لہو کو رائیگاں جانے دینگے جو ہم نے کشمیر کے لئے بہایا ہے۔انہوں نے کہاکہ اگر بھارت کا کوئی سورما، کوئی سیاستدان یہ سوچ رہا ہے کہ پاکستان کشمیر پر سودابازی کریگا تو وہ احمقوں کی جنت میں رہ رہا ہے۔انہوں نے کہاکہ کشمیر ہمارے لہو سے زندہ ہے،ہم نے کشمیر کے لئے تین جنگیں لڑی ہیں چوتھی جنگ بھی لڑنے کے لئے تیار ہیں۔انہوں نے کہاکہ اگر جنگ ہوئی تو پاکستان کا بچہ بچہ پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑا ہوگا۔فواد چوہدری نے کہاکہ پاک بھارت جنگ کا افغان جنگ سے موازنہ نہ کیا جائے۔انہوں نے کہاکہ اگر پاکستان اور بھارت کی جنگ ہوئی تو شدت کوپن ہیگن سے لیکر لندن تک تک محسوس کی جائیگی۔
وائس آف ایشیا15اگست 2019 خبر نمبر58




موجودہ صورتحال سے توجہ ہٹانے کے لیے بھارت نے ایل او سی پر فائرنگ بڑھا دی

راولپنڈی ( وائس آف ایشیا ) موجودہ صورتحال میں اپنہی ہٹ دھرمیوں اور مقبوضہ کشمیر سے توجہ ہٹانے کے لیے بھارت ایک مرتبہ پھر جارحیت پر اُتر آیا ہے۔ اس حوالے سے پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے مائیکروبلاگنگ ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے پیغام میں بتایا کہ موجودہ صورتحال سے توجہ ہٹانے کے لیےبھارت نے لائن آف کنٹرول پرفائرنگ میں غیر معمولی اضافہ کر دیا ہے۔بھارتی فوج کی فائرنگ سے لائن آف کنٹرول پر پاک فوج کے تین جوان شہید ہو گئے۔ ڈی جی آئی ایس پی آر نےبتایا کہ پاک فوج کی جوابی کارروائی میں بھارتی فوج کے پانچ اہلکار ہلاکہوئے۔ واضح رہے کہ بھارت کی لائن آف کنٹرول پر فائرنگ میں غیر معمولی اضافہ اس وقت سامنے آیا جب مسئلہ کشمیر پر عالمی برادری توجہ دے رہی ہے جبکہ آج ہی اقوام متحدہ نے مسئلہ کشمیر کے معاملے پر سلامتی کونسل کا اجلاس طلب کیا ہے جو کل ہو گا۔اس سے قبل بھارت کی گھناؤنی سازش کی خبریں بھی موصول ہوئی تھیں جن کے مطابق بھارت کی مقبوضہ کشمیر میں ظلم سے عالمی توجہ ہٹانے کی سازش بے نقاب ہو گئی ہے۔ جارحیت پسند بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے اب نئے ڈرامے کی تیاری کر لی ہے۔ جس کے تحت بھارتی فوج نے اپنے ہی علاقے میں جعلی کارروائی کی منصوبہ بندی کر لی۔ اس حوالے سے مقبوضہ علاقے میں پاکستانی جھنڈا لگا کر جعلی جھڑپ کی تیاری کر لی گئی ہے۔بھارت کے گھناؤنی منصوبہ بندی کے مطابق اس جعلی کارروائی کو بعد میں لائن آف کنٹرول کے اُس پار آپریشن قرار دیا جائے گا۔ یہ بھی اطلاع ہے کہ بھارتیفوج لائن آف کنٹرول پر خود ساختہ جھڑپ کی منصوبہ بندی کررہی ہے ۔ خیال رہے کہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں اپنے مظالم جاری رکھے اور کشمیریوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ دئے جس پر پاکستان نے عالمی برادری کی توجہ اس مسئلے کی جانب بارہا مبذول کروائی تھی۔




تنازع کشمیر پرسلامتی کونسل نے اجلاس بھارت پر کاری ضرب لگائی ، فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد(وائس آف ایشیا)وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر بیان دیتے ہوئے کہا ہے کہ نازی حکمران اڈولف ہٹلر نے جس طرح ایک نسل کو اپنے ظلم کی بھینٹ چڑھایا اسی طرح خاکم بدہن بھارتی وزیراعظم نریندر مودی تھی کشمیریوں کی نسل کشی کا خواہش مند ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ نریندر مودی اپنے سیاہ اقدام سے ان عزائم کی تکمیل چاہتا ہے جس کا آغاز اس نے گجرات میں مسلمانوں کے قتل عام سے کیا۔فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ عمران خان کی قیادت میں پاکستان ہر فورم پر مظلوم کشمیریوں کی وکالت کرے گا تا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی امنگوں کے عین مطابق حل کرنے پر بھارت کو مجبور کیا جاسکے۔سلامتی کونسل کے اجلاس کا حوالہ دیتے ہوئے وزیراعظم کی معاون خصوصی نے کہا کہ تنازع کشمیر پر اجلاس طلب کرکے بھارت کے اس دعوے پر کاری ضرب لگائی ہے جس کا وہ دعوی کرتا ہے کہ کشمیر ان کا اندرونی معاملہ ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ پانچ دہائیوں بعد سلامتی کونسل کا مسئلہ کشمیر پر اجلاس بلانا ہماری سفارتی فتح ہے جس کی تائید روس نے بھی کی ہے، مہذب دنیا مودی کے غیر قانونی اور یکطرفہ اقدام کا نوٹس لے رہی ہے۔پاکستان کے مطالبے پر اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کے اجلاس کے دوران مقبوضہ جموں و کشمیر کے تنازع پر غور کیا جائے گا۔خیال رہے کہ ایک روز قبل پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے خط لکھ کر سیکیورٹی کونسل کے صدر سے مطالبہ کیا تھا کہ اجلاس بلا کر مقبوضہ جموں و کشمیر کی صورتحال پر بات کی جائے۔اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے پاکستانی خط کو سیکیورٹی کونسل کے صدر تک پہنچایا۔تاہم ادھر سفارتی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ سیکیورٹی کونسل کا اجلاس آج جمعہ کو منعقد کیا جائے گا جس میں پاکستان اور بھارت کے درمیان تصفیہ طلب معاملے پر مبنی ایجنڈے کے تحت جموں و کشمیر کی صورتحال پر غور کیا جائے گا۔




ایل این جی کیس :شاہد خاقان عباسی کے ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع

اسلام آباد (وائس آف ایشیا ) احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع کردی، انہیں 29 اگست کو دوبارہ عدالت میں پیش کیا جائے گا. سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کی عدالت میں پیش کیا گیا، جج محمد بشیر نے نیب پراسیکیوٹر سے استفسار کیا کہ مزید کتنا ریمانڈ چاہیے.دوران سماعت نیب نے مزید 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کو 29 اگست کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دے دیا.اس موقع پر شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جتنا چاہتے ہیں ریمانڈ دے دیں، یہ دوران تفتیش دستاویزات مانگ لیتے ہیں، جو سوالات پوچھتے ہیں اس کا جواب دے دیتا ہوں‘جج محمد بشیر نے نیب پراسیکیوٹر کو ہدایت کی کہ 14 روز میں تفتیش مکمل کرنے کی کوشش کریں.سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ (ن) کے سینیئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی سے کمرہ عدالت میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ آصف، مریم اورنگزیب اور مصدق ملک نے ملاقات کی. سماعت کے بعد صحافیوں سے غیر رسمی بات کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نیب کے افسر جو سوالات پوچھ لیتے ہیں ان کا جواب دے دیتا ہوں، نیب کو ایل این جی کیس سمجھا رہے ہیں، اس میں ابھی وقت لگے گا، مزید دو ہفتے مل گئے ہیں یہ تعلیم بالغاں کا کورس ہے سمجھانے کی کوشش کریں گے.اس موقع پر شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ جتنا چاہتے ہیں ریمانڈ دے دیں، یہ دوران تفتیش دستاویزات مانگ لیتے ہیں، جو سوالات پوچھتے ہیں اس کا جواب دے دیتا ہوں‘جج محمد بشیر نے نیب پراسیکیوٹر کو ہدایت کی کہ 14 روز میں تفتیش مکمل کرنے کی کوشش کریں. سابق وزیر اعظم اور مسلم لیگ (ن) کے سینیئر نائب صدر شاہد خاقان عباسی سے کمرہ عدالت میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ آصف، مریم اورنگزیب اور مصدق ملک نے ملاقات کی.سماعت کے بعد صحافیوں سے غیر رسمی بات کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نیب کے افسر جو سوالات پوچھ لیتے ہیں ان کا جواب دے دیتا ہوں، نیب کو ایل این جی کیس سمجھا رہے ہیں، اس میں ابھی وقت لگے گا، مزید دو ہفتے مل گئے ہیں یہ تعلیم بالغاں کا کورس ہے سمجھانے کی کوشش کریں گے۔
وائس آف ایشیا15اگست 2019 خبر نمبر13




ہم اختلافات بھلا کر آگے بڑھیں گے تو کشمیر آزادہوگا،خورشید شاہ

سکھر(وائس آ ف ایشیا)پیپلزپارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ ہم اختلافات بھلا کر آگے بڑھیں گے تو کشمیر آزادہوگا،ہمیں ملکرلڑنا پڑے گا،ہمیں کراچی سے کشمیر اور گلگت تک نکلنا پڑے گا،ہمیں د کھاوے کی جنگ نہیں لڑنی ،ہمیں وہ مکادکھا ناہے جو لیاقت علی خان نے دکھایا تھا۔ میڈیا سے گفتگو میں پیپلزپارٹی کے سینئر رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ آج کے نوجوانوں کو آزادی کی اہمیت کا اندازہ ہی نہیں ،ہمارے بزرگ بھی آزادی کیلئے لڑے ، ہم آزادی تک کشمیرکے حقوق کیلئے لڑتے رہیں گے،ہمیں اپنی سیاست سے ہٹ کر آئینی سیاست کرنی چاہئے ،ان کا کہناتھا کہ ہر چیز کو بھلاکرآگے بڑھنے سے کشمیر آزادہوگا،ہماری طاقت کشمیریوں کا جذبہ بنتی ہے عوام کو بتانا چاہتا ہوں کہ ہمیں احساس پیدا کرنے کی ضرورت ہے ،خورشید شاہ نے کہا کہ 80 ہزار کے قریب کشمیری شہید ہو چکے ہیں ،مسلمانوں کا قتل عام چاہے کشمیر میں ہو یا فلسطین میں ہمیں قبول نہیں،بھٹو نے اندرا گاندھی کوکہاتھاکہ کشمیرکی آزادی کیلئے لڑتے رہیں گے،پی پی رہنما نے کہا کہ دنیا کہتی ہے کشمیر پر ثالثی کرینگے مگر بھارت کو تھپکی دیتے ہیں ،اتحاد ختم ہوتا گیا اور ہم ٹوٹتے گئے ،کربلا کے ظالموں کے آگے نہیں جھکے تو تم کیا چیز ہو




ٰٰیوم آزادی: مزار قائد اور مزار اقبال پر گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریب

کراچی( وائس آف ایشیا ) یوم آزادی کی مناسبت سے کراچی میں مزار قائد جبکہ لاہور میں مفکر پاکستان علامہ اقبال کے مزار پر گارڈز تبدیلی کی پروقار تقریب کا انعقاد ہوا۔ تفصیلات کے مطابق کراچی میں مزار قائد پر اعزازی گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریب منعقد ہوئی، پاکستان نیول اکیڈمی کے چاک وچوبند کیڈٹس نے مزار کی سیکیورٹی کے فرائض سنبھال لیے۔ اعزازی گارڈز کا دستہ پاکستان نیول اکیڈمی کے 48 بہترین کیڈٹس پرمشتمل ہے، اعزازی گارڈز کی جانب سے بابائے قوم قائداعظم محمدعلی جناح کو سلامی دی گئی۔ کمانڈنٹ نیول اکیڈمی کموڈور عرفان تاج نے پریڈ کا معائنہ کیا اور مراز قائد پر فاتحہ خوانی کے بعد پھولوں کی چادر بھی چڑھائی، کموڈور عرفان تاج نے مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات بھی درج کیے۔ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور گورنرپنجاب چوہدری محمد سرور نے مزار اقبال پر حاضری دی، مزار پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی کی۔ اس سے قبل شاعر مشرق علامہ اقبال کے مزار پر گارڈز کی تبدیلی کی تقریب ہوئی، جنرل آفیسر کمانڈنگ میجر جنرل محمد یوسف نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ انہوں نے مزار اقبال پر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی، مہمانوں کی کتاب میں اپنے تاثرات بھی قلم بند کیے۔ پاک فوج کے چاق وچوبند دستے نے مزار اقبال اعزازی گارڈز کے فرائض سنبھالے۔ شاعر مشرق کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے سیاسی اور سماجی رہنماؤں اور شہریوں کی بڑی تعداد مزار پر حاضری دے رہی ہے۔ واضح رہے کہ ملک بھر میں یوم آزادی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے طور پر منایا جا رہا ہے۔ یوم آزادی پر دن کا آغاز توپوں کی سلامی سے ہوا۔ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یوم آزادی کے دن کا آغاز 31 توپوں جبکہ صوبائی دارالحکومتوں میں 21،21 توپوں کی سلامی سے ہوا۔ اس موقع پر ملک کی سلامتی اور یکجہتی کے لیے خصوصی دعائیں بھی کی گئیں۔




بھارت نے کوئی مہم جوئی کی تو پاکستان مادروطن کے دفاع کے لئے ہرحد تک جائے گا۔ وزیرخارجہ کا پیغام

اسلا م آباد( وائس آف ایشیا)پاکستان نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بھارتی اقدام کے بعد اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کو جنوبی ایشیا کے امن کو لاحق خطرات سے آگاہ کرتے ہوئے ہنگامہ اجلاس طلب کرنے کا مطالبہ کردیا۔ یکیورٹی کونسل کے اس اجلاس کے دوران خطے میں بڑھتی ہوئی کشیدگی پر بات کی جائے گی۔دفتر خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ انہوں نے اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کے صدر کو خط لکھا ہے جس میں ان سے کونسل کے ہنگامی اجلاس منتعقد کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ سیکیورٹی کونسل کے اجلاس میں بھارت کی جانب سے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے غیر قانونی اقدام پر بات کی جائے گی جو اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کی قراردادوں کی کھلی خلاف ورزی ہے۔شاہ محمود قریشی نے پولینڈ کے اپنے ہم منصب جیک کزاپٹووچ سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ بھی کشمیر کے مسئلے پر اجلاس بلانے پر بات چیت کریں۔پولینڈ کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ دو ممالک کے درمیان مسئلہ بات چیت کے ذریعے حل ہونا چاہیے، جبکہ یورپی یونین نے بھی ملے جلے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے زور دیا کہ بطور یو این ایس سی سربراہ، پولینڈ تمام پیشرفت کا بغور جائزہ لے رہا ہے جبکہ اپنے شراکت داروں سے رابطے میں بھی ہے۔بعد ازاں امریکا میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے جیک کزاپٹووچ کا کہنا تھا کہ پاکستان کے خط پر جلد مشاورت کی جائے گی۔خیال رہے کہ خطہ کشمیر پر اقوام متحدہ کی 11 قراردادیں موجود ہیں جن میں سے 3 قراردادیں مقبوضہ خطے کے خصوصی حیثیت سے متعلق ہیں۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے خط کو سیکیورٹی کونسل کے دیگر رکن ممالک کو ارسال کرنے کی بھی ہدایت کی۔اقوام متحدہ کے اجلاس طلبی سے متعلق قواعد کے مطابق آرٹیکل 35 یا آرٹیکل 11(3) کے تحت کوئی مسئلہ سیکیورٹی کونسل کے صدر کے علم میں لانے، یا جنرل اسمبلی کی جانب سے آرٹیکل 11 (2) کے تحت کسی مسئلے پر سفارشات دینے یا اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کی جانب سے کونسل کو آرٹیل 99 کے تحت متوجہ کرنے کے بعد سیکیورٹی کونسل کا اجلاس طلب کیا جاتا ہے۔ادھر پاکستان نے اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کے صدر کو آرٹیکل 35 کے تحت خط لکھا ہے جو ایسی صورت سے متعلق ہے جس کی وجہ سے کوئی تنازع جنم لے سکتا ہے یا خطے کی سلامتی کو خطرہ لاحق ہوسکتا ہے۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان کو یقین ہے کہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بھارت کے یک طرفہ فیصلے کے بعد نہ صرف خطے بلکہ پوری دنیا کے امن کو خطرات لاحق ہوسکتے ہیں۔یاد رہے کہ نریندر مودی کی حکومت کی جانب سے کشمیر کی خصوصی حیثیت سے متعلق بھارتی آئین کے آرٹیکل 370 کی منسوخی کے بعد سے شاہ محمود قریشی دنیا کو پاکستان کے بیانیے سے آگاہ کرنے میں متحرک نظر آئے۔انہوں نے گزشتہ ہفتے چین کا ہنگامہ دورہ کیا جہاں انہوں نے چینی قیادت سے اقوام متحدہ جانے کے پاکستانی منصوبے پر بات چیت کی۔چینی وزیر خارجہ وانگ زی نے شاہ محمود قریشی کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کروائی تھی۔ علاوہ ازیں پاکستانی وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے ایک ویڈیو پیغام میں کہاہے کہ بھارت کے اقدامات نے علاقائی اورعالمی امن داؤپر لگادیاہے۔پیغام میں انہوں نے واضح کیاکہ اگربھارت نے کوئی مہم جوئی کی تو پاکستان مادروطن کے دفاع کے لئے ہرحد تک جائے گا۔وزیرخارجہ نے کہاکہ بھارت مقبوضہ علاقے میں کشمیریوں کے نئے قتل عام کی منصوبہ بندی کررہاہے اوراگربھارت سمجھتاہے کہ پاکستانی اورکشمیری عوام خاموشی سے یہ سب برداشت کرلیں گے تویہ اس کی بڑی غلطی ہوگی۔انہوں نے کہاکہ یہ بھارت کی غلط فہمی ہے کہ وہ کشمیریوں کے حق خودارادیت کو کچل سکتاہے۔شاہ محمودقریشی نے تشویش ظاہر کی کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے عالمی توجہ ہٹانے کیلئے پلوامہ جیسے واقعہ کاکوئی اورڈرامہ رچاسکتاہے۔
a




کشمیریوں کو کسی موڑ پر تنہا نہیں چھوڑیں گے،، صدر مملکت عارف علوی

اسلام آباد( وائس آف ایشیا ) پاکستان کے صدر مملکت عارف علوی نے کہا ہے کہ کشمیریوں کو کسی موڑ پر تنہا نہیں چھوڑیں گے، بھارت نے نہرو کے وعدوں پر بھی پانی پھیر دیا۔ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کنونشن سینٹر میں پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پوری قوم کو یوم آزادی کی مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ آج کا دن قومی تاریخ میں اہمیت کا حامل ہے۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان آج اپنا یوم آزادی یوم یکجہتی کشمیر کے طور پر منا رہا ہے اور ہم کشمیریوں کے دکھ کو اپنا دکھ سمجھتے ہیں۔صدر ڈاکٹر عارف علوی نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ہم کشمیریوں کے ساتھ تھے، ہیں اور رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ پوری پاکستانی قوم اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے۔صدر عارف علوی نے کہا کہ بھارت کی جانب سے اٹھایا جانے والا حالیہ اقدام سلامتی کونسل میں لے جانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ بھارت نے کشمیر سے متعلق تمام عالمی قرار دادوں کی مخالفت کی اور بھارت نے شملہ معاہدے کی تمام شقوں کی بھی مخالفت کی جبکہ بھارت نے نہرو کے وعدوں پر بھی پانی پھیر دیا۔صدر مملکت نے کہا کہ بھارت یہ بات نہ بھولے کے مسئلہ کشمیر کے 3 فریق ہیں اور کشمیری عوام کو اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا حق ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارتی جنونیت نے اس کی جمہوریت کا بھانڈہ پھوڑ دیا ہے اور بھارت میں اقلیتیوں کے ساتھ روا رکھے جانے والے سلوک نے سیکولر ریاست کا چہرہ بھی واضح کردیا۔صدر مملکت کا کہنا تھا کہ 9 لاکھ فوج کے باعث مقبوضہ کشمیر دنیا کا سب سے بڑا ملٹری زون بن چکا ہے جبکہ بھارت گھنانے جرائم کے ذریعے کشمیریوں کی آواز نہیں دبا سکتا۔انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان امن پسند ملک ہے اور خطے میں امن کا خواہاں ہے جبکہ پاکستان مسئلہ کشمیر کو بات چیت سے حل کرنا چاہتا ہے اور ساتھ ہی بھارت سے مطالبہ کیا کہ بھارت مقبوضہ وادی میں دہشت گردی اور جبر کا راستہ ترک کرے۔ان کا کہنا تھا کہ مسلمان جنگ کی تمنا نہیں کرتا لیکن جنگ مسلط ہوئی تو پیچھے نہیں ہٹیں گے اور خبردار کیا کہ بھارت حالات کو اس نہج پر نہ لے جائے کہ واپسی ممکن نہ ہو۔صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان ہر محاذ پر کشمیر کی حمایت جاری رکھے گا اور مطالبہ کیا کہ او آئی سی و دیگر عالمی تنظیمیں کشمیر میں بھارتی جبر کے خلاف آواز اٹھائیں۔انہوں نے مزید کہا کہ زندہ قومیں اپنے اسلاف کا راستہ یاد رکھتی ہیں۔صدر عارف علوی نے افواج پاکستان کی جانب سے ملک کے دفاع کے لیے پیش کی گئیں قربانیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ افواج پاکستان نے ہر کڑے وقت میں مادر وطن کی حفاظت کی۔ان سے قبل تقریب سے حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میرے شوہر کو ڈتیھ سیل میں قید رکھا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں تاریخی نسل کشی کررہا ہے اور بھارتی فوج نے حریت قیادت کو قید کر رکھا ہے۔صدر عارف علوی نے کنونشن سینٹر میں قومی پرچم لہرایا اور اس موقع پر قومی ترانہ بھی پڑھا گیا۔بعد ازاں تقریب کا باقاعدہ آغاز قرآن پاک کی تلاوت اور نعت رسول مقبول ﷺ سے ہوا۔ چم کشائی کی مرکزی تقریب میں بڑی تعداد میں شہریوں نے شرکت کی۔سرکاری ریڈیو کے مطابق پرچم کشائی کی تقریب میں اعلی سول اور فوجی قیادت سمیت مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔اس کے علاوہ تقریب میں چیئرمین سینیٹ اور اسپیکر قومی اسمبلی، وفاقی کابینہ کے ارکان، غیر ملکی سفارت کار اور ملک کی ممتاز شخصیات بھی موجود تھیں۔خیال رہے کہ کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کے لیے قومی پرچم کے ساتھ کنونشن سینٹر میں کشمیر کا جھنڈا بھی لہرایا گیا، پاکستانی قوم نے اپنے یوم آزادی کو یوم یکجہتی کشیمر کے طور پر منایا تاکہ مقبوضہ جموں اور کشمیر کے لوگوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا مظاہرہ کیا جائے جن کی خصوصی حیثیت کو رواں ماہ کے آغاز میں ایک صدارتی حکم نامے کے ذریعے بھارتی حکومت نے ختم کردیا تھا۔دن کا آغاز مساجد میں نماز فجر کے بعد وطن عزیز کی سلامتی، ترقی اور خوشحالی کے لیے دعاں سے ہوا جبکہ مقبوضہ کشمیر کے عوام کی بھارتی غلامی سے نجات کے لیے بھی خصوصی دعائیں کی گئیں۔اس کے علاوہ حکومت پاکستان نے مقبوضہ کشمیر کے عوام سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے یوم آزادی کے موقع پر خصوصی لوگو جاری کیا جس میں کشمیر بنے گا پاکستان کا نعرہ درج ہے۔یاد رہے کہ بھارتی حکومت نے 5 اگست کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کی منسوخی کا اعلان کیا تھا اور مقبوضہ وادی میں ٹیلی فون، انٹرنیٹ اور ٹیلی ویژن نیٹ ورکس کو معطل کرکے کرفیو نافذ کردیا تھا۔




پاکستان کا سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلانے کا مطالبہ

نیویارک( وائس آف ایشیا) اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا خط سلامتی کونسل کی صدرکو پیش کردیا۔ تفصیلات کے مطابق اے آروائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے اقوام متحدہ میں پاکستان کی سفیر ملیحہ لودھی نے بتایا کہ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا خط سلامتی کونسل کی صدر کو پیش کر دیا گیا۔ انہوں نے اے آروائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ خط میں جموں وکشمیرکی صورت حال پر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلانے کی درخواست کی گئی ہے۔ ملیحہ لودھی نے کہا کہ وزیرخارجہ مختلف ممالک کے وزرائے خارجہ سے رابطے میں ہیں، ابھی ہماری توجہ اقوام متحدہ کی قراردادوں پر ہے۔ پاکستانی سفیر نے کہا کہ بھارت میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا خاتمہ ہونا چاہیے، سیکیورٹی کونسل کی قرارداد پردوبارہ سے بحث ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ چاہتے ہیں بین الاقوامی کمیونٹی اس صورت حال پرتوجہ دے۔ ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر سے متعلق سلامتی کونسل کی گیارہ قراردادیں اب تک زیرالتوا ہیں۔ یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی کا کہنا تھا کہ کشمیر میں بھارت کئی دہائیوں سے عالمی اقدار اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی کررہا ہے۔ پاکستانی سفیر نے مزید کہا تھا کہ انسانی حقوق پر لیکچر دینے والوں کوکشمیری عوام کی بھی پرواہ ہونی چاہیے۔

 




وہ دن دور نہیں جب کشمیری پورے ولولے سے یوم آزادی منائیں گے، فردوس عاشق اعوان

اسلام آباد( وائس آف ایشیا)  معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ کشمیرمیں بہنے والے لہو کے چھینٹے ہمارے دلوں پرگرتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے اپنے پیغام میں کہا کہ پاکستان آج یوم آزادی کشمیریوں سے یکجہتی کے طور پرمنا رہا ہے، کشمیریوں کی سیاستی، سفارتی، اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے۔ فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ کشمیری عوام کو حق خودارادیت ملنے تک تقسیم ہند کا ایجنڈا مکمل نہیں ہوسکتا، کشمیرتقسیم ہند کا نامکمل ایجنڈا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ دن دور نہیں جب کشمیری پورے ولولے سے یوم آزادی منائیں گے۔ معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات نے کہا کہ کشمیرمیں بہنے والے لہوکے چھینٹے ہمارے دلوں پر گرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے مسئلے پر پاکستان کسی قسم کی لچک کا مظاہرہ نہیں کرے گا۔ ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ پوری قوم کوآج بھرپوریکجہتی کا مظاہرہ کرنا ہوگا، آج کوئی سیاسی بیانیہ یا ایجنڈا نہیں ہونا چاہیے۔ واضح رہے کہ ملک بھر میں یوم آزادی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے طور پر منایا جا رہا ہے۔ یوم آزادی پر دن کا آغاز توپوں کی سلامی سے ہوا۔وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یوم آزادی کے دن کا آغاز 31 توپوں جبکہ صوبائی دارالحکومتوں میں 21،21 توپوں کی سلامی سے ہوا۔ اس موقع پر ملک کی سلامتی اور یکجہتی کے لیے خصوصی دعائیں بھی کی گئیں۔




یوم آزادی بطور یوم یکجہتی کشمیر منایا جا رہا ہے

لاہور( وائس آف ایشیا)  ملک بھرمیں یومِ آزادی روایتی جوش وخروش اورجذبے سے منایا جارہاہے۔ ملک بھر میں سرکاری عمارتوں، سڑکوں اور راستوں کو قومی پرچموں سے سجایا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں یوم آزادی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے طور پر منایا جا رہا ہے۔ یوم آزادی پر دن کا آغاز توپوں کی سلامی سے ہوا۔ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یوم آزادی کے دن کا آغاز 31 توپوں جبکہ صوبائی دارالحکومتوں میں 21،21 توپوں کی سلامی سے ہوا۔ اس موقع پر ملک کی سلامتی اور یکجہتی کے لیے خصوصی دعائیں بھی کی گئیں۔ یوم آزادی پر صوبہ پنجاب کے دارلحکومت لاہورمیں دن کا آغاز 21 توپوں کی سلامی سے ہوا، اس موقع پر فضا تکبیر کے نعروں سے گونج اٹھی۔  یوم آزادی کے موقع پر پشاور میں بھی 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ یوم آزادی پرتوپوں کی سلامی کی یہ تقریب کینٹ کے پانڈو اسٹیڈیم میں ہوئی جبکہ کوئٹہ کے آرمی پولوکلب میں بھی پاک فوج کے جوانوں کی جانب سے 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ کراچی میں بھی دن کا آغاز 21 توپوں کی سلامتی سے کیا گیا۔ شہر شہر نمازفجرکی ادائیگی کے بعد مساجد میں ملکی ترقی وسلامتی اور خوشحالی کے لیے خصوصی دعائیں بھی کرائی گئیں۔ صدر ڈاکٹر عارف علوی اور وزیراعظم عمران خان نے یوم آزادی اور یوم یکجہتی کشمیرکے موقع پر کہا کہ ہم کشمیریوں کے ساتھ تھے، ساتھ ہیں اور ہمیشہ ساتھ رہیں گے۔ یوم آزادی کے موقع پر پرچم کشائی کی مرکزی تقریب اسلام آباد میں ہوگی۔ کشمیری عوام سے یکجہتی کے لیے قومی پرچم کے ساتھ کشمیرکا جھنڈا بھی لہرایا جائے گا۔وزیراعظم عمران خان کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفرآباد جائیں گے اور آزاد کشمیر کی قانون ساز اسمبلی سے خطاب بھی کریں گے۔




ملک بھر میں یوم جشن آزادی پر توپوں کی سلامی سے دن کا آغاز

اسلام آباد( وائس آف ایشیا) ملک بھر میں یوم جشن آزادی ملی جوش و جذبے سے منایا جا ر ہا ہے۔ اسلام آباد اور چاروں صوبائی دارالحکومتوں میں توپوں کی سلامی سے دن کا آغاز ہوا۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یوم آزادی کے دن کا آغاز 31 توپوں جبکہ صوبائی دارالحکومتوں میں 21،21 توپوں کی سلامی سے ہوا۔ اس موقع پر ملک کی سلامتی اور یکجہتی کے لیے خصوصی دعائیں بھی کی گئیں۔ یوم آزادی پر صوبہ پنجاب کے دارلحکومت لاہورمیں دن کا آغاز 21 توپوں کی سلامی سے ہوا، اس موقع پر فضا تکبیر کے نعروں سے گونج اٹھی۔ یوم آزادی کے موقع پر پشاور میں بھی 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ یوم آزادی پرتوپوں کی سلامی کی یہ تقریب کینٹ کے پانڈو اسٹیڈیم میں ہوئی جبکہ کوئٹہ کے آرمی پولوکلب میں بھی پاک فوج کے جوانوں کی جانب سے 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ کراچی میں بھی دن کا آغاز 21 توپوں کی سلامتی سے کیا گیا۔ شہر شہر نمازفجرکی ادائیگی کے بعد مساجد میں ملکی ترقی وسلامتی اور خوشحالی کے لیے خصوصی دعائیں بھی کرائی گئیں۔ واضح رہے کہ حکومت پاکستان یوم آزادی کو مقبوضہ جموں کشمیر سے اظہار یکجہتی کے طور پر منا رہی ہے اور اس حوالے سے کشمیر بنے گا پاکستان کا ایک لوگو بھی جاری کیا جا چکا ہے۔