Voice of Asia News

کم پیدل چلنا‘ کم پانی پینا اور زیادہ سوچناہائی بلڈپریشر کا سبب بنتا ہے

لاہور(وائس آف ایشیا)80 فیصدہائی بلڈپریشرکے مریض کم پیدل چلنا‘ کم پانی پینا اور زیادہ سوچنے کی بیماری میں مبتلا ہوتے ہیں‘ہائی بلڈپریشر کا مرض انتہائی خطرناک حدتک پہنچ چکاہے جس کی وجہ سے شرح اموات میں بھی اضافہ ہورہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ فاسٹ فوڈ ‘کولامشروبات کی زیادتی سے موٹاپا اوربڑھاپاجلدآتاہے‘ہائی بلڈپریشر کے اکثرمریض کھانوں میں اعتدال نہیں رکھتے‘سادہ اورقدرتی حالت میں غذائیں انسان کے فطری مزاج کے عین مطابق ہوتی ہیں‘ پھلوں ‘سبزیوں کوزیادہ اہمیت دیں‘ ڈبہ پیک کھانے پینے کی نسبت تازہ حالت میں غذائیں استعمال کریں‘ تیل میں تلی بازاری اوربیکری والی چیزوں کوبہت کم استعمال کریں‘ کم کھانا اوردوپہرکھانے میں مولی‘گاجر‘کھیرے کا استعمال ضرورکریں‘زیادہ پیدل چلنے ‘زیادہ پانی پینے اور کم سوچنے سے بھی ہائی بلڈپریشرکنٹرول میں رہتاہے۔خوش اخلاق ‘خوش مزاج لوگ بھی ہائی بلڈپریشر میں کم مبتلاء ہوتے ہیں۔ انہوں نے مزیدبتایاکہ نمازی حضرات میں بلڈپریشرکا مرض بہت کم حدتک ہوتاہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے