Voice of Asia News

عجلت میں کھانا کھانے والے افراد موٹاپے کا آسانی سے شکار بن جاتے ہیں، ماہرین

ٹوکیو (وائس آف ایشیا) جاپان کے ماہرین صحت نے کہا ہے کہ آہستہ آہستہ اور اطمینان سے کھانا کھانے والے افراد موٹاپے سے دور رہتے ہیں جبکہ عجلت میں کھانا کھانے والے افراد موٹاپے کا آسانی سے شکار بن جاتے ہیں۔ ٹوکیو یونیورسٹی کے شعبہ صحت کے ماہرین کی پانچ برسوں پر مشتمل تحقیق میں 59 ہزار 7 سو افرادکے معمولات زندگی کا جائزہ لیا، جس کا مقصد کھانا کھانے کے انداز و عادات کا موٹاپے پر ہونے والے اثرات کا مشاہدہ کرنا تھا۔تحقیق میں مریضوں کوتین گروپوں میں تقسیم دیا گیا ۔ پہلے گروپ میں جلدی جلدی کھانا کھانے والے، دوسرے گروپ میں معمول کے انداز میں اور تیسرے گروپ میں آہستہ آہستہ کھانا کھانے والے مریضوں کو رکھا گیا تھا۔تحقیق کے دوران ماہرین نے مریضوں کے طرز زندگی، کھانے پینے کی عادات، دلچسپی کے امور، موسم اور دیگر بنیادی معلومات سے متعلق سات سوالات پوچھے، مریضوں کے جوابات سے موصول ہونے نتائج کو مرتب کرنے کے دوران حیران کن بات سامنے آئی کہ جلدی جلدی کھانا کھانے اور درست طریقے سے نوالے نہ چبانے والے مریضوں میں سے 45 فیصد افراد موٹاپے کا شکار ہوگئے جب کہ آہستہ آہستہ کھانا کھانے والے افراد کے وزن میں کوئی اضافہ نہیں ہوا اور وہ نسبتاً چاق و چوبند بھی رہے۔ماہرین نے کہا ہے کہ ذیابیطس کے مرض میں مبتلا فربہ افراد بلند فشار خون کا شکار ہو جاتے ہیں جس کے باعث دل اور گردے کی کارکردگی بھی متاثر ہوسکتی ہے تاہم کھانے کی عادات اور طریقے میں مثبت تبدیلی کے ساتھ ساتھ ورزش، وقت پر دوائیں لینا، ڈپریشن سے دور رہنا اور اپنے معالج سے باقاعدہ چیک اپ کراتے رہنا بھی ضروری ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے