Voice of Asia News

دنیا بھر میں سالانہ بنیاد پر تیرہ لاکھ افراد تپ دق کی وجہ سے ہلاک ہوتے ہیں،اقوام متحدہ

نیویارک( وائس آف ایشیا ) اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاس کے حاشیے میں مہلک مرض تپ دق کے کنٹرول کے حوالے سے بھی ایک سمٹ نیویارک میں ہوئی۔ اس اجلاس میں کئی لیڈروں کے علاوہ طبی سائنسدان اور حیاتیات کے ماہرین بھی شریک ہوئے ،غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ماہرین نے خبردار کیا کہ چھوت کے اس مرض کے پھیلاؤ میں اضافہ ہو رہا ہے اور یہ بھارت،، چین کے علاوہ روس کی آبادیوں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے۔ اس وقت دنیا بھر میں سالانہ بنیاد پر تیرہ لاکھ افراد تپ دق کی وجہ سے لقمہ اجل بن جاتے ہیں۔ امیر ممالک کے مقابلے میں ترقی پذیر اور غریب ممالک میں اس کے مریض مسلسل بڑھ رہے ہیں۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے