Breaking News
Voice of Asia News

ختم، غزہ میں گردوں کے 400 مریضوں کی زندگی خطرے میں

غزہ (وائس آف ایشیا )فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں گردوں کے 400 مریضوں کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہوچکی ہیں۔ مقامی حکام کا کہنا ہے کہ گردوں کے مریضوں کی ضروری ادویات ختم ہیں اور سیکڑوں مریضوں کی زندگی داؤ پر لگی ہوئی ہے۔غزہ وزارت صحت کے ترجمان اشرف القدرہ نے بتایا کہ غزہ کے اسپتالوں میں ایسے 400 مریض ہیں جن کے گردوں کی پیوند کاری کی گئی ہے۔ اگر ان کے علاج کے لیے درکار ادویات نہیں ملتیں تو ایسے تمام مریض ڈائیلائسز پر منتقل ہوسکتے ہیں۔ادھر غزہ میں الشفا میڈیکل کمپلیکس کے مصنوعی گردوں کے شعبے کے انچارج عبداللہ نے بتایا کہ اسپتال میں گردوں کے مریضوں کی ادویہ ختم ہوچکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گردوں کی پیوند کاری کے عمل سے گزرنے والے مریضوں کو Mycophenolate اور Valganciclovir نامی دوائی کی فوری ضرورت ہے، مگر اسپتال میں ان دونوں ناگزیر ادویات کا اسٹاک ختم ہوچکا ہے۔القیشاوی نے بھی خبردار کیا کہ اگر گردوں کے مریضوں کو درکار ادویات نہ مل سکیں تو وہ ڈائیلائسز پر منتقل ہوسکتے ہیں اوران کی زندگیوں کو مزید خطرات لاحق ہوسکتے ہیں۔خیال رہے کہ غزہ کی پٹی پر اسرائیل اور فلسطینی اتھارٹی نے دوہری پابندیاں عاید کررکھی ہیں جس کے نتیجے میں علاقے میں صحت کا بدترین بحران جاری ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •