Breaking News
Voice of Asia News

امریکہ ،ْرونے کی آواز بری لگنے پر ماں نے بچے کو مار دیا

واشنگٹن (وائس آف ایشیا) ایک امریکی خاتون نے اپنے شیر خوار بچے کو صرف اس لئے قتل کر دیا کیونکہ وہ اس کے رونے کی آواز سننا نہیں چاہتی تھی۔ایک غیر ملکی رپورٹ کے مطابق19 سالہ جینا نامی امریکی خاتون نے اپنے ایک ماہ کے بچے کو باتھ ٹب میں ڈبو کر قتل کر دیا ۔حیرت انگیز بات یہ ہے کہ خاتون نے بچے کو مارنے کے طریقے بھی انٹرنیٹ سے سرچ کر رکھے تھے۔پولیس کے مطابق خاتون کے موبائل سے سرچ لاگ کے سو سے زائد شواہد ملے ہیں جس میں بچے کو مارنے کے مختلف طریقے ڈھونڈے گئے تھے جن میں’ فوری طور پر مرنے کے طریقے‘،’بچے کو ڈوبنے میں کتنا وقت لگتا ہے‘ ’پانچ قسم کے والدین جو قتل کرتے ہیں‘ ’والدین بچوں کو کیوں مارتے ہیں‘لاپتہ بچوں کے مقدمات‘ جیسے عنوانات شامل ہیں۔تحقیقاتی ٹیم کے مطابق خاتون کا کہنا ہے کہ وہ اپنے ایک مہینے کے بچے کو باتھ ٹب میں ڈبو کر پر سکون ہے کیونکہ وہ اپنے بچے کی رونے آواز سننا نہیں چاہتی تھی۔پولیس کے مطابق بچے کو مارنے کے بعد خاتون نے بچے کی لاش ایک بیگ میں چھپا دی اور پولیس کو اس کے اغوا کی خبر دیدی۔بعد ازاں پولیس نے تحقیق کر کے بیگ ڈھونڈ نکالا جس کے بعد خاتون کوحراست میں لے کر پوچھ گچھ کی گئی۔عدالت میں پیشی کے موقع پر خاتون نے سب کچھ سچ بیان کر دیا ، بچے کے باپ نے عدالت میں اکہا کہ میرا بچہ بہت پر سکون اور پیارا تھا،میں نے بھی اس کے ساتھ وقت گزارا، وہ بہت زیادہ تو نہیں روتا تھا۔انہوں نے جذباتی ہوکر کہا کہ اب میں اپنے بچے کو کبھی گود میں نہیں لے پائوں گا ،ْنہ بات کر سکوں گا ، نہ کھیل سکوں گا، نہ اسے اسکول لے جا سکوں گا۔اس عورت نے میری زندگی چھین لی، اس کو میری زندگی اور میرے خاندان سے دور چلے جانا چاہیے۔انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ ان کی بیوی کو زندہ چھوڑ دیا جائے تاکہ وہ ہر دن یہ سوچ کر تڑپے کہ اس نے معصوم بچے کے ساتھ کیا کیا۔اس عورت نے مجھے جو درد دیا ہے ،وہ نا قابل بیان ہے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •