Voice of Asia News

پنجاب حکومت نے کل سے 14روز کیلئے لاک ڈاؤن کا فیصلہ کرلیا

لاہور(وائس آف ایشیا) پنجاب حکومت نے کل سے 14روز کیلئے لاک ڈاؤن کا فیصلہ کرلیا ہے، لاک ڈاؤن کے دوران میڈیکل اسٹورز، اشیائے خوردونوش کی دکانیں کھلی رہیں گی، جبکہ شاپنگ مالز بند رہیں گے،  فیصلہ کابینہ کمیٹی کے اجلاس میں کیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلٰی پنجاب عثمان بزدار نے کابینہ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کی جس میں پنجاب میں 14 روز کیلئے لاک ڈاؤن کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔بعد ازاں وزیراعلٰی پنجاب عثمان بزدار نے لاک ڈاؤن کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کل24 مارچ صبح 9بجے سے 6 اپریل تک عوامی مقامات ، بازار اور شاپنگ مالز بند رہیں گے۔ سبزی منڈی اور کریانہ اسٹورز کھلے رہیں گے۔ موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد ہوگی۔تاہم اس کو پنجاب میں کسی قسم کا لاک ڈاؤن یا کرفیو نہ سمجھا جائے۔عوام سے اپیل ہے کہ اس دوران مکمل تعاون کیا جائے۔ اس عرصے کے دوران میڈیکل اسٹورز، پٹرول پمپس اور اشیائے خوردونوش کی دکانیں کھلی رہیں گیپنجاب میں کوروناوائرس کےمریضوں کی تعداد246ہوگئی ہے۔ اسی طرح اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ لاک ڈاؤن کیلئے سندھ ماڈل کو اپنایا جائے گا۔ اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا ہے کہ اگر 14 روز میں کورونا وائرس پر قابو نہ پایا جاسکا ، تو لاک ڈاؤن میں توسیع کردی جائے گی۔وضح رہے گزشتہ روز وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کے اعلان کے بعد سندھ میں مکمل لاک ڈاؤن جاری ہے۔ صوبے بھر میں 15روز کیلئے لاک ڈاؤن کیا گیا ہے۔ لوگوں کو بلا ضرورت گھروں سے نکلنے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ ایک گاڑی میں ڈرائیور کے ساتھ صرف ایک شخص سفر کرسکے گا، اسی طرح اگر کسی نے ہسپتال جانا ہو تو گاڑی میں صرف تین افراد کو جانے کی اجازت ہوگی۔اگر کوئی شخص کسی کام سے باہر نکلے تو شناختی کارڈ اپنے پاس رکھے۔ یاد رہے ملک بھر میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 803 ہوگئی ہے۔ جن میں پنجاب میں 225، بلوچستان میں تعداد108،خیبرپختونخواہ31، اسلام آباد 15، سندھ 352، اور گلگت میں71، کشمیر میں کورونا مریضوں کی تعداد ایک ہے۔ مزید برآں سندھ میں کورونا وائرس کے عدم پھیلاﺅ اور اس سے بچاﺅ کے لیے جاری پہلے دن کے لاک ڈاﺅن میں صوبے بھر کے تمام اضلاع بشمول کراچی، حیدرآباد، سکھر اور جیکب آباد میں پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری گشت کررہی ہے جبکہ ہر طرح کی کاروباری مصروفیات معطل ہیں اور لاک ڈاﺅن کے خلاف ورزی پر صوبے بھرم میں مجموعی طور پر 113 افراد گرفتار ہوچکے ہیں۔

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے